تازہ ترین

فاروق خان نے پلوامہ میں ضروری اشیاء کی دستیابی کا جائزہ لیا | تیل خاکی کے غیر قانونی کاروبار پراظہار برہمی،کارروائی کی ہدایت

تاریخ    25 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


نیوز ڈیسک
پلوامہ//پلوامہ میں تیل خاکی کی بھاری مقدار ضبط کرنے کو مد نظر رکھتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے پلوامہ کا دورہ کر کے وہاں اشیائے ضروریہ کی دستیابی کا جائزہ لیا۔اِس موقعہ پر ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ ڈاکٹر راگھو لنکر ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنروںپلوامہ ، ترال اور اونتی پورہ ، پلوامہ اور اونتی پورہ کے ایس ایس پی کے علاوہ دیگر متعلقہ اَفسران موجود تھے۔ضلع میں اشیائے ضروریہ کی دستیابی کا موقعہ پر جائزہ لیتے ہوئے اُنہوں نے تیل خاکی کی غیر قانونی خرید و فروخت اور ذخیرہ اندوزی کے خلاف ضلع انتظامیہ کی کارروائی کو سراہا۔ اُنہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کی اِنتظامیہ شفاف حکمرانی کے لئے پُرعزم ہے اورتیل خاکی کی غیر قانونی فروخت میں ملوث لوگوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔اُنہوں نے ڈپٹی کمشنر پلوامہ کو اِس معاملے کی جانچ پڑتال شروع کر کے سرکاری ملازمین کے اِس معاملے میں ملوث ہونے سے متعلق حقائق معلوم کرنے اور ان کے ساتھ قانونی کارروائی شروع کرنے کے کہا۔ اُنہوں نے محکمہ خوراک ، شہری رسدات اور امور صارفین کے حکام کو اَز سر نو جانچ پڑتال کی عمل میں سرعت لانے کے لئے کہا تاکہ صرف اہل مستحقین کو ہی اِس ضمن میں فوری سکیموں کے دائرئے میں لایا جاسکے۔مشیر خا ن نے کہا کہ حکومت بد دیانت عناصر کے خلاف کارروائی عمل میں لارہی ہے اور اِس سلسلے میں اس نوعیت کے چوری چکاری کے واقعات پر قدغن لگائی جائے گی۔ اُنہوں نے ضلع اِنتظامیہ کو ایک فعال اِنتظامیہ فراہم کرنے کے لئے اہم اِقدامات اُٹھانے کے لئے سراہا ۔مشیر موصوف نے ضلع اِنتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے پلوامہ میںخوراک ، شہری رسدات اور عوامی تقسیم کاری سرگرمیوں کا جائزہ لیا۔ اُنہوں نے اس عمل میں شفافیت لانے اور اشیائے ضروریہ کی تقسیم کاری نظام کی باقاعدہ نگرانی اور جانچ پڑتال کرنے کے لئے کہا۔واضح رہے ڈپٹی کمشنر نے خوراک ، شہری رسدات او رامور صارفین کے ہمراہ ضلع میں کئی مقامات پر چھاپے ڈالے اور 1.5لاکھ لیٹر غیر قانونی طور پر تیل خاکی ضبط کیا جن علاقوں سے یہ ضبط کیا گیا ان میں سامبورہ ، کھچ کوٹ ، لیتہ پورہ ،پانپور وغیرہ شامل ہیں اور ضبط کئے گئے تیل خاکی مالیت 75لاکھ روپے ہے۔
 
 

کامگاروں میں رواں مالی سال کے دوران 68 کروڑ واگزار 

سرینگر //لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے جموں و کشمیر عماراتی و دیگر تعمیراتی کامگاروں کیلئے بہبودی بورڈ ( جے کے بی او سی ڈبلیو ڈبلیوبی)17 ویں بورڈ میٹنگ کی صدارت کی ۔ کمشنر سیکرٹری محنت و روز گار ، ڈائریکٹر جنرل بجٹ ، سی ای او بی او سی ڈبلیو ڈبلیو بی ، خزانہ ، قانون ، انصاف ، پارلیمانی امور ، جل شکتی ، تعمیراتِ عامہ ، مکانات و شہری ترقی ، بجلی کے کامگاروں کے نمائندگان اور مزدور انجمنیں میٹنگ میں موجود تھے جبکہ لیبر کمشنر جموں اور صوبہ جموں کے دیگر مزدور انجمنوں نے میٹنگ میں بذریعہ ویڈیو کانفرنس شرکت کی ۔ مشیر خان نے کہا کہ بہبودی سکیموں کی کامیابی یقینی بنانے ، کامگاروں میں مختلف سکیموں اور بہبودی پروگراموں سے متعلق جانکاری عام کرنا ایک اہم قدم ہے اور کامگار معاشرے کا ایک باعزت حصہ ہے جو اپنی روزی روٹی دیانتداری اور محنت سے کماتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اس سماج کے پسماندہ طبقے سرکار کی جانب سے چلائی جا رہی سکیموں کا خیال رکھنا ہو گا اور کامگاروں کو بہبودی سکیموں سے استفادہ کرنے کے عمل کو آسان بنانا ہو گا ۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ زاید از 68 کروڑ روپے بشمول 13.12 کروڑ روپے رواں مالی سال 2019-20 کے دوران تعمیراتی کامگاروں کے بنک کھاتوں میں موجودہ کووڈ 19 بحران کے دوران جمع کئے گئے ۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ اپریل 2020 سے فی فعال عمارتی اور تعمیراتی کامگار کے حق میں ایک ہزار روپے فی کس کے حساب سے چار اقساط میں ڈی بی ٹی طریقہ کار کے تحت واگذار کئے گئے ۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ مشیر خان کی صدارت میں عمارتی و تعمیراتی کامگاروں کے حق میں امدادی رقومات کی منظوری ریکارڈ تعداد میں کی ہے جو کہ دہائیوں سے التوا میں پڑے تھے ۔ اس موقعہ پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے مشیر نے بی سی او ڈبلیو ڈبلیو بی کو کامگاروں کو کووڈ وباء کے دوران امداد فراہم کرنے کیلئے انتھک کوششوں کو سراہا ۔ اس موقعہ پر مشیر نے اُن محکموں کو  جہاں بھاری تعداد میں کامگار کام کر رہے ہیں کو ان کامگاروں کی رجسٹریشن کرنے کی ہدایت دی تا کہ وہ ان سکیموں سے استفادہ کر سکیں اور تمام نجی کمپنیوں اور مالکان جہاں یہ کامگار کام کر رہے ہوں ان کی رجسٹریشن نہ کرنے کیلئے ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا ۔ بورڈ کے تحت مختلف بہبودی سکیموں کا جائیزہ لیتے ہوئے مشیر نے سکیموں کیلئے رجسٹریشن کے عمل کو منظم اور آسان بنانے کیلئے کہا ۔