تازہ ترین

احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد ہو تو

لاک ڈائون کی ضرورت نہیں: ڈی سی سرینگر

تاریخ    14 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر//ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر ڈاکٹر شاہد اقبال چودھری نے کہا کہ اگر معیاری عملیاتی طریقہ کار اور ضوابط پر عمل درآمد کیا جائے تو لاک ڈائون کی ضرورت ہی نہیں ہے،جبکہ ممکنہ طور پر اتوار سے50فیصد بازار بھی کھلنے کا امکان ہے۔نامہ نگاروں سے گفتگو کر تے ہوئے ضلع مجسٹریٹ سرینگر نے کہا کہ اگر لوگ کورونا وائرس کے حوالے سے ضوابط پر عمل در آمد کرینگے تو لاک ڈائون کی ضرورت نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ سرینگر نے مذہبی شخصیات اور تاجروں سے ملاقاتیں کیں اور اگر انتظامیہ رواں ماہ کی 16 تاریخ سے50فیصد بازاروں کو کھول دے گی تو معیاری عملیاتی طریقہ کار و ضوابط کی تعمیل کرنا ہوگی۔انہوں نے کہا ’’اگر ہم سب ایس او پیز کی مناسب طریقے سے پیروی کریں تو ، میں نہیں سمجھتا کہ لاک ڈاؤن میں توسیع کی کوئی ضرورت پیدا ہوسکتی ہے‘‘ ۔ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر شاہد اقبال  نے کہا کہ کورونا وائرس کے معاملات میں تیز رفتار اضافے نے انتظامیہ کو لاک ڈاؤن نافذ کرنے پر مجبور کردیا۔ ڈاکٹر چودھری نے کہا"ماہرین کا ماننا ہیں کہ سری نگر میں مزید کورونا کے کیس سامنے آسکتے ہیں اور آنے والے دنوں میں ان معاملات میں کمی آنے کے روشن امکانات نظر نہیں آتے ہیں،اس لئے یہ بہت ضروری ہے کہ ہم سب حکام کی جانب سے جاری معیاری عملیاتی طریقہ کارکی پیروی کریں ، ماسک کا استعمال کریں ، جسمانی فاصلہ برقرار رکھیں اور دیگر احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے کہا کہ گزشتہ بار جب لاک ڈائون کی بندشوں میں نرمی دی گئی تو اکثر لوگوں نے معیاری عملیاتی طریقہ کار کی خلاف ورزی کی۔انہوں نے بتایا کہ سری نگر انتظامیہ نے3ہزارسے زیادہ مذہبی سربراہان سے بات چیت کی اور’’ہمیں یقین ہے کہ جب یہ مذہبی مقامات لوگوں کے لئے کھولے جائیں گے تو یہ مذہبی لیڈراں معیاری عملیاتی طریقہ کار کی پیروی کرائیں گے‘‘۔ڈاکٹر چودھری نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے بارے میں آئندہ کی معلومات کو عام کیا جائے گا اور اس سلسلے میں ایک علیحدہ نوٹیفکیشن بھی جاری کی جائے گی ۔