تازہ ترین

مظاہرین کے سامنے جھکی لبنان کی حکومت، سرکار کا استعفیٰ

تاریخ    12 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


یو این آئی
بیروت// لبنانی دارالحکومت بیروت میں گذشتہ ہفتے ہونے والے خوفناک دھماکوں کے بعد ملک میں بڑے پیمانے پر حکومت مخا لف مظاہروں کے درمیان پیر کو لبنانی حکومت نے استعفیٰ دے دیا۔بیروت میں دھماکے کے بعد حکومت کے خلاف سڑکوں پر ہونے والے احتجاج کے سامنے جھکتے ہوئے وزیر اعظم حسن دیاب نے پیر کو استعفیٰ دینے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ گذشتہ حکومتوں کے اختیار کردہ بدعنوانیوں کیلئے جوابدہ ہونے سے انکار کرتے ہیں۔ دیاب نے کہا ’’ہماری حکومت کی تشکیل کے چند ہفتوں کے بعد کچھ اپوزیشن پارٹیوں نے ملک میں بدعنوانی ، عوامی قرضوں اور اقتصادی زوال کیلئے ہمیں ذمہ دار ٹھہرانے کی کوشش کی۔‘‘انہوں نے کہا کہ ان کی کابینہ میں شامل ہر وزیر نے ملک کو بچانے کے لئے روڈ میپ میں کردار ادا کرنے کی بھرپور کوششیں کی ہیں۔ دیاب نے کہا’’ہمیں اس ملک ، ملک اور بچوں کے مستقبل کے بارے میں بہت تشویش ہے اور ہمارا کوئی ذاتی مقصد نہیں ہے ۔ ہم اس ملک کے لئے اچھا کرنا چاہتے ہیں لیکن ہم بیکار کی باتوں میں گھسیٹا نہیں جانا چاہتے ہیں۔ بدقسمتی سے کچھ سیاسی جماعتوں کوہم اپنے خلاف لوگوں کو اکسانے سے نہیں روک سکے ‘‘۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے استعفیٰ دیکر ان لوگوں کے ساتھ کھڑا ہونے کا فیصلہ کیا ہے جو حقیقت میں تبدیلی کی مانگ کررہے ہیں ۔
 

تازہ ترین