تازہ ترین

مسئلہ کشمیر پر بنددروازہ غیر رسمی اجلاس منعقد

معاملہ کو دو طرفہ مذاکرات سے حل کیاجائے: سلامتی کونسل

تاریخ    7 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


سرینگر//اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اراکین نے مسئلہ کشمیر کو دو طرفہ مذاکرات سے حل کرنے پر زور دیا ہے ۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی جانب سے مسئلہ کشمیر پر ایک بند دروازہ غیر رسمی اجلاس منعقد کیا گیاجس میں واضح کیا گیا کہ یہ بھارت اور پاکستان باہمی مسئلہ ہے ۔ اجلاس میں پانچ مستقل اراکین میں سے 4امریکہ، برطانیہ، فرانس اور روس نے بھارت کی حمایت کی۔اقوام متحدہ میں بھارت کے مستقل نمائندے ٹی ایس تیرمورتی نے ٹویٹ میں لکھا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں، جو بند دروازہ، غیر رسمی اور جسے ریکارڈ نہیں کیا گیا ,میں تقریبا تمام ممالک نے اس بات پر زور دیا کہ جموں و کشمیر دو طرفہ مسئلہ ہے اور وہ کونسل کے وقت اور توجہ کا مستحق نہیں ہے۔واضح رہے کہ پاکستان نے گذشتہ برس اگست کے بعد سے تیسری مرتبہ کشمیر کے بارے میں کونسل کو ایک خط میں بات چیت کا مطالبہ کیا تھا۔اقوام متحدہ کے ایک اور سفارتکار نے کہا کہ 'اس بار پاکستان اور چین کو انڈونیشیا کی بھی حمایت حاصل تھی جو اگست کے لئے یو این ایس سی کے ممبر ہیں۔ اگرچہ انڈونیشیا ان چند ممالک میں شامل ہے جو ترکی سمیت عوامی سطح پر کشمیر پر پاکستان کا ساتھ دیتے ہیں لیکن اس وقت اس کا کوئی انتخاب نہیں ہوسکتا ہے ۔ایک بار اقوام متحدہ کے مستقل رکن چین نے اے او بی کے تحت کشمیر پر تبادلہ خیال کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ یہاں تک کہ چین بطور مستقل رکن مئی میں ہانگ کانگ کے بارے میں اے او بی کے تحت ہوئی بحث کو نہیں روک سکے۔ (سی این آئی )
 

تازہ ترین