ڈی جی پولیس کا دعویٰ

۔504علیحدگی پسندوں کو’اچھے برتائو ‘کے مچلکہ پر رہا کیاگیا

تاریخ    7 اگست 2020 (00 : 02 AM)   


 سرینگر// جموں کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا ہے کہ علیحدگی پسند لیڈروں نے جیل خانہ جات سے رہائی سے قبل’’اچھے برتائو کے مچلکہ‘‘ پر دستخط کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دفعہ370کی تنسیخ کے بعد ایک سال قبل قریب504 علیحدگی پسند لیڈروں کو حراست میں لیا گیا تھا ، مچلکہ پر دستخط کرنے کے بعد انکی رہائی عمل میں لائی گئی۔دلباغ سنگھ نے کہا’’ مجموعی طور پر حریت کانفرنس اور جماعت اسلامی کے علاوہ دیگر جماعتوں کے504 علیحدگی پسندوں کو تاہم اچھے برتائو کے مچلکہ پر دستخط کرنے کے بعد رہا کیا گیا‘‘ ۔دلباغ سنگھ نے کہا کہ350علیحدگی پسند لیڈراں اور سنگبازوں کو بیرون ریاستوں کی جیلوں میں منتقل کیا گیا تھا،جن میں سے50سے60افراد ابھی نظر بند ہیں جبکہ باقی لوگوں کو رہا کیا گیا۔انہوں نے کہا جن لوگوں نے اچھے برتائو کے مچلکہ پر دستخط کئے، پر لازم ہے جیلوں اور خانہ نظر بندی سے رہائی کے بعد وہ امن قائم کریں اور کسی بھی تشدد اور علیحدگی پسند سرگرمیوں میں شرکت نہ کریں۔پولیس سربراہ نے کہا کہ دفعہ370کی تنسیخ کے بعد5500نوجوانوں کو حراست میں لیا گیا،اور انہیں کونسلنگ کرنے کے تین،چار دنوں بعد رہا کیا گیااور وہ کسی بھی متشدادانہ سرگرمی یا سنگبازی میں ملوث نہیں ہوئے۔دلباغ سنگھ نے تاہم کہا کہ تشددانہ عمل کے خلاف1200دیگر نوجوانوں کے خلاف کیس درج کئے گئے،جبکہ انہوں نے اس بات کا اعتراف کیا کہ گزشتہ برس18سال کی عمر سے کم144نوجوانوں کو تشددانہ سرگرمیوں کے تناظر میں گرفتار کیا گیااور فی الوقت 17نوجوان جوئنائل ہوموں میں نظربند ہیں۔انہوں نے کہا کہ پولیس نے16نوجوانوں کو واپس لایا جنہوں نے جنگجوئوں کی صفوں میں شمولیت اختیار کی تھی۔
 

تازہ ترین