تازہ ترین

ہائی کورٹ کے جج سنجے گپتا انتقال کرگئے

لیفٹیننٹ گورنر کا اِظہار تعزیت

تاریخ    29 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


نیوزڈیسک
جموں//جموں و کشمیر ہائی کورٹ کے جج سنجے گپتا انتقال کرگئے ہیں۔ان کا انتقال گزشتہ شام کوعلالت کی وجہ سے ہوا۔ جموں کشمیر کے لیفٹینٹ گورنر نے جسٹس گپتا کے فوت ہونے پر دکھ کااظہار کیا ۔جسٹس گپتا کی اچانک موت سے وکلابرادری کو صدمہ پہنچا ہے۔59 سالہ جسٹس سنجے گپتا کے پسماندگان میں ان کی اہلیہ اور ایک بیٹا اور ایک بیٹی رہ گئی ہیں۔جسٹس سنجے کمار گپتا 24-11-1961 کو پیدا ہوئے۔انہوں نے 1976 میں اورینٹل اکیڈمی جموں سے دسویں کا امتحان پاس کیا اورپھر 1982 میں جی جی ایم سائنس کالج جموں سے سائنس کے شعبے میں بی ایس سی کی تعلیم مکمل کی اور پھرجموں یونیورسٹی سے ایل ایل بی کیا۔ 1986 میں دہلی کی بار کونسل میں ایڈووکیٹ کے طور پر اندراج ہوا اور ایس ایس لہر (سینئر ایڈووکیٹ) کے چیمبر میں جموں بار میں شامل ہوئے۔ 22-01-2004 کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی حیثیت سے اعلیٰ عدالتی خدمات پر فائز ہوئے اورانہیں براہ راست بھرتی کے طور پر منتخب کیا گیا۔انہیں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ڈوڈہ کے طور پر تعینات کیا گیا۔ وہ جموں کی مختلف عدالتوں میں ڈسٹرکٹ اور سیشن جج کی حیثیت سے خدمات انجام دیتے رہے۔ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج اور پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج جموں، ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سرینگر ، جوڈیشل ممبر خصوصی ٹریبونل جیسے عہدوں پر بھی وہ تعینات رہے۔انہوں نے بطور پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لیہہ ، پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج راجوری اور جموں کے پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج بھی کام کیاجہاں سے ان کی ترقی جموں وکشمیر کی ہائی کورٹ کے جج کی حیثیت سے ہوئی۔انہوں نے 06-06-2017 کو ہائی کورٹ کے جج کی حیثیت سے حلف لیا۔ لیفٹیننٹ گورنر گریش چندر مرمو نے جموں وکشمیر ہائی کورٹ کے ممتاز جج جسٹس سنجے گپتا کے اِنتقال پر گہرے دُکھ کا اِظہار کیا ہے۔اپنے پیغام میں لیفٹیننٹ گورنر نے اُنہیں ایک ماہر قانون دان قرار دیا جنہوں نے اِنتہائی لگن کے ساتھ بینچ اور قانون کے شعبے میں بے مثال خدمات انجام دئیے ۔ اُنہوں نے کہا کہ اُن کی وفات عدلیہ اور قانونی برادری کے لئے بہت بڑا نقصان ہے۔لیفٹیننٹ گورنر نے آنجہانی کی روح کے دائمی سکون کے لئے دعا کی اورسوگوارکنبے کے ساتھ دِلی ہمدردی اور یکجہتی کا اِظہار کیا۔

تازہ ترین