لاک ڈائون کا دوسرا مرحلہ

شہر میں جابجا سڑکیں سیل، تجارتی ادارے مقفل

تاریخ    15 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// وادی کے بیشتر علاقوں میں سر نو لاک ڈائون کے دوسرے مرحلے میں منگل کو تجارتی و کاروباری مراکز ہنوز مقفل رہے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی نقل و حمل بھی بند رہی۔شہر سرینگر میںجابجا سڑکوں کو سیل کردیا گیا تھا اور پولیس اور سی آر پی ایف کے اضافی دستوں کو تعینات کیا گیا تھا جس دوران پبلک ٹرانسپورٹ کو چلنے کی اجازت نہیں دی گئی۔شہر میں دکانیں اور دیگرتجارتی اور کاروباری سرگرمیاں ٹھپ رہیں۔شہر کے سول لائنز ،پائین شہر اور دیگر علاقوں میں پولیس اور فورسز نے سڑکوں اور چوراہوں پر خار دار تار نصب کی تھی اور گاڑیوں کو روکا جارہا تھا۔شہر میں دن بھر بازار بندرہے اور سڑکیں بھی سنسان نظر آرہی تھیں۔ سیول لائنز میں تاریخی لالچوک سمیت تمام بازار مکمل طور پر بند رہے ۔کئی مقامات پر پولیس اہلکاروں کو لائوڈ اسپیکر کے ذریعے شہریوں کو اپنے گھروں تک ہی محدود رہنے کی گذارش کرتے ہوئے دیکھا گیا۔پائین شہر میں بھی لاک ڈائون کے نتیجے میں عام زندگی کی رفتار پٹری سے نیچے اتر گئی اور ہر سو ہو کا عالم دیکھنے کو ملا۔ سیاحتی مقامات کھلنے کے بعد اگرچہ گزشتہ کئی روز کے دوران وہاں پر لوگوں کا غیر معمولی جمائو دیکھنے کو ملا تھا تاہم منگل کو سرینگر کے یہ باغات اور پارکیں بھی سنسان نظر آئیں۔ادھرجنوبی اور شمالی کشمیر کے اضلاع میںبھی یہی صورتحال دیکھنے کو ملی۔ انتظامیہ نے سماجی دوری اور ایس او پیز کی پاسداری نہ کرنے پر قانونی کاروائی کرنے کا انتباہ دیا ہے۔

تازہ ترین