سول سیکریٹریٹ کے سامنے ایجیک کا احتجاج

۔2دہائیوں سے کام کررہے عارضی ملازمین کی مستقلی کا مطالبہ

تاریخ    15 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// ملازمین کے مشترکہ اتحادی پلیٹ فارم ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے لیڈروںنے عارضی ملازمین کی مستقلی کے حق میں سیکریٹریٹ کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ دہائیوں سے روزانہ اجرتوں پر کام کرنے والے ملازمین کی فریاد صدا بہ صحرا ثابت ہورہی ہے۔ سیول سیکریٹریٹ کے سامنے منگل کو ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے صدر فیاض شبنم کی قیادت میںایک احتجاجی جلوس نکالا گیا۔احتجاج میں شامل شرکاء نے ہاتھوں میں پلے کارڑ اٹھا کر نعرہ بازی کرتے ہوئے پیش قدمی کی۔ کتبوں پر’’ عارضی ملازمین کو انصاف دو،ظلم و جبر کو بند کرئو،ڈیلی ویجروں کو مستقل کرئو اور گورنر تیری سرکار میں ڈیلی ویجرز بھوکے مر رہے ہیں‘‘ کی تحریر درج تھی۔مظاہرین نے جب سیکریٹریٹ کی جانب پیش قدمی کی تو سیکریٹریٹ کے مین گیٹ پر موجود پولیس نے انکی پیش قدمی کو روکتے ہوئے آگے جانے کی جازت نہیں دی،جس کے بعد مظاہرین نے کچھ دیر تک وہاں احتجاج کیا۔ فیاض شبنم نے بتایا کہ کورونا وائرس کے پیش نظر محدود لیڈرشپ نے عارضی ملازمین کی مستقلی کے حق میں احتجاج کیا۔انہوںنے کہا کہ مختلف محکموں میں کام کرنے والے ملازمین گزشتہ25برسوں سے مستقل نہیں ہوئے۔ان کا کہنا تھا کہ وہ ہر قدرتی آفات اور نامساعد حالات کے دوران صف اول پر کام کرتے ہیں۔ اس کے باوجود انہیں معمولی تنخواہ دی جاتی ہے جس سے وہ اپنے کنبوں کی کفالت کو پورا نہیں کر پاتے اور وہ بھی فاقہ کشی کے دہانے پر پہنچ چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ روزانہ اجرتوں پر کام کرنے والے ملازمین کو باقاعدہ بنانے کے حوالے سے مختلف معاہدے کیے ہیں لیکن اب تک اس سلسلے میں کوئی مثبت نتیجہ سامنے نہیں آیا۔انہوں نے کہاکہ عارضی ملازمین کی مستقلی کا جواز بھی بنتا ہے کیونکہ انہوں نے دہائیوں سے عوامی خدمات کو انجام دیا ہے۔ان کا کہنا تھا’’حال ہی میں انتظامیہ نے جو دس ہزار ملازموں کی بھرتی کی پالیسی مرتب کی ہے اس سے قبل یہاں بیس پچیس برسوں سے مختلف محکموں میں کام کرنے والے عارضی ملازمین کی نوکریوں کو مستقل کرنے کے لئے ایک پالیسی بنائی جانی چاہئے‘‘۔انہوں نے کہا کہ ایجیک سرکار کی اس پالیسی کے خلاف نہیں ہے ،یہاں بے روزگاری ہے، لہٰذا بھرتی پالیسیاں مرتب ہونی چاہئے لیکن یہ پالیسیاں عارضی ملازمین کے کاندھوں پر گولی چلا کے نہیں بننی چاہئے۔احتجاج میں فاروق احمد خان،بشیر احمد ٹھوکر،اطہر مظفر، اشفاق احمد اور طارق صوفی سمیت دیگر لوگ موجود تھے۔
 

تازہ ترین