تازہ ترین

کورونا وائرس؛ مزید 8 اموات، مہلوکین کی تعداد 196

۔ 3ڈاکٹروں اور ہائی کورٹ کے 4ملازمین سمیت مزید 346مثبت، مجموعی تعداد11173ہوگئی

تاریخ    15 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


پرویز احمد
 سرینگر // 14جولائی منگل کو جموں و کشمیر میں سی آر پی ایف اہلکار اور ایگریکلچر آفیسر سمیت 8افراد کے فوت ہونے کے بعد مرنے والوں کی تعداد 196ہوگئی ۔ ان میں18جموں جبکہ178وادی سے ہیں۔3ڈاکٹروں، ہائی کورٹ کے 4ملازمین اورسینٹر ل جیل اننت ناگ کے 44نظربندوں سمیت مزید 346کی رپورٹیںمثبت آئیں اور اس طرح متاثرین کی مجموعی تعداد11ہزار کا ہندسہ پار کرکے 11173ہوگئی، ان میں 2388جموں جبکہ 8785افراد کا تعلق کشمیر صوبے سے ہے۔ منگل کے 346متاثرین میں سے 127سرینگر، 11بارہمولہ، 7کولگام، 58اننت ناگ، 3کپوارہ، 39پلوامہ، 14بڈگام، 16بانڈی پورہ، 4گاندربل، 11جموں، 10کٹھوعہ، ایک رام بن، 10راجوری، ایک سانبہ، ایک پونچھ،14ڈوڈہ،3ریاسی اور 5کشتواڑ سے تعلق رکھتے ہیں۔    

مزید 8اموات

 جموں و کشمیر میں منگل کو کورونا وائرس کی وجہ سے مزید 8 افراد فوت ہوگئے۔ فوت ہونے والے افراد میں ایک سپرسپیشلٹی اسپتال، ایک صدر اسپتال، 2جی ایم سی اننت ناگ اور 2سکمز صورہ میں فوت ہوگئے ہیں۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’ منگل کو اموات کا سلسلہ صبح 4بجے نادی ہل بارہمولہ سے تعلق رکھنے والے ایک 60سالہ شخص کی موت سے شروع ہوا ۔ڈاکٹر جان نے بتایا’’ مریض 5جولائی کو اسپتال  میںداخل ہوا اور 14جولائی کو فوت ہوگیا ‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ٹنگمرگ سے تعلق رکھنے والا ایک 60 سالہ شخص13جولائی کو اسپتال میں داخل ہوا اور 14جولائی کو شام 4بجے فوت ہوگیا ‘‘۔صدر اسپتال سرینگر کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر نذیر احمد چودھری نے بتایا ’’13جولائی کو اسپتال میں داخل ہونے والے 66بٹالین بارہمولہ کا ایک 35سالہ سی آر پی ایف اہلکار فوت ہوگیا ‘‘۔ڈاکٹر نذیر چودھری نے بتایا ’’ سی آر پی ایف اہلکار نوشہرہ راجوری سے تعلق رکھنے والا تھا ‘‘۔جے وی سی اسپتال بمنہ کی میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر شفا دیوا نے بتایا ’’ شوپیان سے تعلق رکھنے والا ایک65سالہ شخص صبح 9بجکر 45منٹ پر فوت ہوگیا ‘‘۔ڈاکٹر شفا نے بتایا ’’ مریض 10جولائی کو اسپتال میں داخل ہوا اور 14جولائی کو فوت ہوگیا ‘‘۔ادھر جی ایم سی اننت ناگ میں چند روز قبل فوت ہونے والی 2خواتین کی رپورٹیں بھی مثبت آئیں ۔ جی ایم سی اننت ناگ کے پرنسپل ڈاکٹر شوکت جیلا  نی نے بتایا ’’ سن تھن بجہاڑہ اور کے پی روڑ اننت ناگ  سے تعلق رکھنے والی 2خواتین  10اور 11جولائی کو فوت ہوگئیں ‘‘۔ڈاکٹر شوکت جیلانی نے بتایا ’’ دونوں خواتین کی رپورٹ پیر کو رات دیر گئے مثبت آئیں لیکن دونوں خواتین کی تدفین قوائد و ضوابط کے تحت ہوئی ہے‘‘۔تالاب تلو جموں سے تعلق کھنے والا ایک 47سالہ ایگریکلچر آفیسر بھی فوت ہوگیا ۔جی ایم سی جموںکے پرنسپل ڈاکٹر نصیب چند ڈوگرہ نے بتایا ’’ مذکورہ مریض کو12جولائی کے روز داخل کرایا گیا اور منگلوار کی صبح7بجکر40منٹ پر اْس کی موت واقع ہوگئی۔سپرسپیشلٹی اسپتال شیرین باغ کے میڈیکل سپرانٹنڈنٹ ڈاکٹر شبیراحمدڈانے کہاکہ بارہ مولہ کی ایک 50برس کی خاتون پیرکی شام کووِڈ - 19سے فوت ہوگئی ۔ڈاکٹر شبیرنے بتایاکہ خاتون کوامراض قلب کی وجہ سے صدراسپتال میں داخل کیاگیاتھا لیکن بعد میں اُس کی کووڈرپورٹ مثبت آئی ۔

سکمز صورہ 

 میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران 2424نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 117مثبت جبکہ2307کی رپورٹیں منفی آئیں ‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ 117متاثرین میں سے 34سرینگر، 18اننت ناگ، 16پلوامہ، 10بڈگام، 9بارہمولہ، 8سی آر پی ایف ، 8کولگام، 7بانڈی پورہ، 2کپوارہ، 2گاندربل، ایک شوپیان، ایک کرگل اور ایک بانہال سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ 2صورہ، ایک شہید گنج، ایک بٹہ کدل، ایک رعناواری، ایک حیدرپورہ،  ایک رنگہ پورہ، ایک عالی کدل،  ایک نور باغ،  ایک ڈلگیٹ،  ایک الہی باغ، ایک علمگری بازار، ایک لال بازار، ایک ملہ باغ،  فتح کدل،  ایک نوشہر،  2 سکمز صورہ، ایک صنعت نگر سرینگر، ایک راج باغ، ایک نسیم باغ،  ایک بژہ پورہ، ایک زکورہ،ایک خانیار، ایک بہوری کدل اور ایس ایس بی ( ایس آئی سی سی)  کے 7اہلکار شامل ہیں‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا کہ اننت ناگ ضلع کے 18متاثرین میں سے 2 انچہ ڈورہ، 2چتر پورہ،نانل ، ایک سلی گام، ایک فتح پورہ،  ایک ویری ناگ،  ایک نسو، ایک سالار، اشاجی پورہ، ایک سری گفوارہ اور ایک کھنہ بل اننت ناگ سے تعلق رکھتا ہے۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ پلوامہ کے 16متاثرین میں سے سڈکو پلوامہ کے 5،4راجپورہ پلوامہ، ایک ناہرہ ، ایک مین ٹائون پلوامہ اور ایک ڈانگر پورہ پلوامہ سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا کہ بڈگام کے 10متاثرین میں سے  ایک ماگام، ایک کانی ہامہ، ایک بل پورہ، ایک اُومپورہ اور 43بٹالین ڈی پی ایل بڈگام کے دو پولیس اہلکار شامل ہیں۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ بارہمولہ کے 9متاثرین ایک مین ٹائون بارہمولہ،  ایک کھاندار،2سوپور، ایک رنگہ پورہ،  ایک خواجہ باغ  بارہمولہ اور ایک تھنڈی پورہ بارہمولہ سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ کولگام کے 8متاثرین میں سے  ایک چیک وانگڈ،  ایک برنل، ایک لامڑ، ایک ایچ سی گام، ایک سلیولہ ،  ایک چیوگام  اور ایک وائے کے پورہ کولگام سے تعلق رکھتا ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا کہ کپوارہ کے 2متاثرین میں سے ایک میں ٹائون کپوارہ اور ایک 109بٹالین ترہگام کپوارہ سے تعلق رکھتا ہے۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ اس کے علاوہ ایک وانگڈ برنل سے تعلق رکھنے والا شخص بھی مثبت آیا ہے‘‘۔  سکمز میڈیکل کالج بمنہ کے پرنسپل ڈاکٹر ریاض احمد انتو نے بتایا ’’ پچھلے24گھنٹوں کے دوران 540نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 48مثبت جبکہ 492کی رپورٹیں منفی آئیں ہیں‘‘۔ڈاکٹر ریاض انتو نے بتایا ’’48متاثرین میں سے 44سرینگر اور 4کا تعلق بڈگام سے ہے‘‘۔ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ سرینگر کے 44 متاثرین میں سے 5لال بازار، 2علمگری بازار،2جڈی بل،ہائی کورٹ سرینگر کے 4ملازمین،2کاٹھی دروازہ، 18بٹالین سی آر پی ایف کے 3اہلکار،8بٹہ مالو ،5ٹنکی پورہ،5شاہ کدل،  ایک حضرت بل، ایک وانہ بل، ایک بسنت باغ، ایک شالیماراور  ایک گلاب باغ سے تعلق رکھتا ہے۔ ڈاکٹر ریاض انتو نے بتایا ’’ بڈگام کے 4متاثرین میں سے ایک چاڈورہ، ایک چرار شریف ، ایک سوئی بگ اور ایک بڈگام سے تعلق رکھتا ہے۔  

 سی ڈی اسپتال

س ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں پچھلے24گھنٹوں کے دوران 622نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں سے 130کی رپورٹیں مثبت آئیں ۔سی ڈی اسپتال میں موجودذرائع نے بتایا ’’130 متاثرین میں سے 7ضلع اسپتال شوپیان،6ضلع اسپتال بانڈی پورہ،45جی ایم سی اننت ناگ جن میں اننت ناگ سینٹر جیل کے 44نظر بند ، صدر اسپتال سرینگر کے 40، ضلع اسپتال پلوامہ کا ایک،18 سب ضلع اسپتال پانپور اور 3لل دید اسپتال میں کے نمونوں میں سے مثبت آئے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ متاثرین میں سے 3ڈاکٹر اور ایک حاملہ خاتون بھی شامل ہے۔

جموں 

جموں  میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران56افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں جن میں سے مارڈرن لیبارٹری جموں کے 20، 13جی ایم سی جموں،9کرشنا لیبارٹری،11پیتھ لیب اور 3کی رپورٹیں سکمز صورہ سے مثبت آئیں ہیں۔

حکومتی بیان

حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے11,173 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے4,755سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک6,223اَفراد شفایاب ہوئے ہیں ۔جموں وکشمیر میں کوروناوائرس سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد195تک پہنچ گئی ،جن میں سے 177کا تعلق کشمیر صوبہ سے اور18کاتعلق جموں صوبہ سے ہیں۔اِس دوران منگل کومزید128مریض صحتیاب ہوئے ہیںجن میںجموں صوبے کے28اور کشمیر صوبے کے 100اَفراد شامل ہیں ، جن کو جموں و کشمیر کے مختلف ہسپتالوں سے رخصت کیا گیا۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اب تک 4,66,333ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  14جولائی2020ء کی شام تک 4,55,160نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک3,17,904افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ ان میں 38,211اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ24 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔4,755کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ45,537 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق2,29,182اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔
 
 
 

جموں میں محکمہ زراعت کے ملازم کی کورونا سے موت 

سید امجد شاہ 
 
جموں //جموں میں محکمہ زراعت کا ایک 47سالہ ملازم کورونا وائرس کا شکار ہوکر وفات پاگیا۔وہ گورنمنٹ میڈیکل کالج و ہسپتال کے آئیسو لیشن وارڈ میں زیر علاج تھا جہاں اس نے آخری سانس لی ۔دریں اثناء منگلوار کو ایک سرجری ڈاکٹر، نیم طبی عملے کے ارکان اور سی آئی ایس ایف کے10اہلکار کورونا متاثر پائے گئے۔ایس ڈی ایم اور نوڈل افسر ستیش شرما نے سرکاری ملازم کی موت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا’’جی ہاں، ہم نے دوروز قبل محکمہ زراعت کے ایک ملازم کے نمونے لئے تھے جن میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی اور وہ آج کووڈ ہسپتال میں وفات پاگیا‘‘۔وہ ڈائریکٹوریٹ ایگریکلچرگول پلی تالاب تلو میں تعینات تھا ۔تالاب تلو میں پچھلے چند روز میں یہ دوسری ایسی موت ہوئی ہے ۔قبل ازیں نیشنل کانفرنس کا یوتھ لیڈر کورونا سے وفا ت پاگیاتھا۔محکمہ صحت کے ایک افسر نے بتایاکہ سینی محلہ سے تعلق رکھنے والے سرکاری ملازم کو ہسپتال میں زیر علاج رکھاگیاتھااور 12جولائی کو اس کے نمونے لئے گئے جس کی رپورٹ مثبت آئی ہے ۔انہوں نے بتایا’’متوفی کو تیز بخارتھا اور کھانسی بھی تھی ‘‘۔اب حکام نے متوفی کے گھر کے 5افراد کے نمونے حاصل کئے ہیں جن کی رپورٹ آنا باقی ہے۔تالاب تلو میں کورونا کے تازہ معاملا ت سامنے کے بعد انتظامیہ نے علاقے میں بندشیں عائد کردی ہیں اور نقل و حرکت پر پابندی عائد کی گئی ہے ۔دریں اثناء گورنمنٹ میڈیکل کالج وہسپتال کا ایک سرجری ڈاکٹر کورونا میں مبتلاپایاگیاجسے کالج کے پرنسپل ڈاکٹر نصیب چند کے مطابق آئیسو لیشن کردیاگیاہے ۔انہوں نے بتایاکہ مذکورہ ڈاکٹر پی جی بوائز ہوسٹل بخشی نگر میں تھا اور اب اس کے رابطہ میں آئے افراد کی شناخت شروع کردی گئی ہے ۔وہیں کٹھوعہ میں سی آئی ایس ایف (سنٹرل انڈسٹریل سیکورٹی فورس ) کے 10اہلکاروں میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جو سرینگر ٹرانزٹ کیمپ سے واپس آئے تھے ۔ڈپٹی کمشنر کٹھوعہ اوپی بھگت نے بتایاکہ یہ اہلکار پولیس ٹریننگ سکول کٹھوعہ میں قرنطینہ میں ہیں ۔ضلع سانبہ میں ایک حاملہ خاتون کے متاثر پائے جانے کے بعد بہریاں علاقے کو ریڈ زون قر ار دیاگیاہے ۔اس بات کی جانکاری چیف میڈیکل افسر سانبہ راجندر سنگھ سمبیال نے دی ۔
 

 

تازہ ترین