تازہ ترین

سرینگرکے 88ریڈ زونوں میں سر نو لاک ڈائون کا نفاذ | بیشتر علاقوں کی سڑکیں بند،شہرمیں گاڑیوں کے داخلے پر بھی پابندی،خاردار تاریںنصب

تاریخ    13 جولائی 2020 (30 : 01 AM)   
(عکاسی: حبیب نقاش)

بلال فرقانی
سرینگر//مہلک بیماری کرونا وائرس کیسوں میں اضافے کے ساتھ ساتھ اموات کی شرح میں بھی اضافہ ہونے کے بعد ، ضلع انتظامیہ سرینگر نے پیر سے ضلع میں سر نو لاک ڈاؤن نافذ کرنے کا فیصلہ کیا جس کے بعد انتظامیہ نے دوپہر کے وقت ہی لالچو ک سمیت بیشتر علاقوں کی سڑکوں کی ناکہ بندی کی اور جگہ جگہ خار دار تاریں نصب کرکے مسافر بردار ٹریفک کی نقل و حمل کو بندکردیا ۔ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر ڈاکٹر شاہد چودھری نے کہا کہ ضلع میں بیماری کے مزید پھیلاؤ پر قابو پانے کے لئے جامع منصوبہ مرتب کیا گیا ہے جبکہ خلاف ورزی پر سخت جرما نہ اور قانونی کارروائی کا حکم بھی دیا گیا۔

سر نو لاک ڈائون

 کرونا وائرس کے معاملات میں ضافے کے سلسلے میں سنیچر رات گئے میٹنگ میں یہ فیصلہ لیا گیا کہ پیر سے ضلع کے مختلف علاقوں میں لاک ڈاؤن دوبارہ نافذ کردیا جائے گا ۔نئے لاک ڈاون کی جانکاری ضلع مجسٹریٹ سرینگر ڈاکٹر شاہد اقبال چودھری نے سماجی رابطہ گاہ  پراپنے ایک ٹویٹ کے ذریعے دیتے ہوئے کہا’’کووِڈ میں بڑے پیمانے پر اضافے کے پیش نظر ، سری نگر کے مختلف علاقوں میں موثر پابندیوں کے لئے ہمیں کنٹین منٹ زون بنانے پڑیں گے، مقامی تعاون عوامی صحت کے بہترین مفاد میں ہوگا‘‘۔ انہوں نے کہا’’ پچھلے دو ہفتوں میں ضلع میں مثبت واقعات میں تیزی سے اضافے کے بعد سری نگر میں کووڈ 19 ریڈ زون کے طور پر 88 علاقوں میں عوامی نقل و حرکت اور سرگرمیوں پر پابندیاں عائد کی جارہی ہیں۔‘‘ شاہد اقبال چودھری نے احکامات جاری کرتے ہوئے عوامی نقل و حمل اور ہر طرح کی سرگرمیوں پر پابندی کے سخت نفاذ کے ساتھ ان تمام 88 ریڈ زونوں کو سیل کرنے کی ہدایت کی ہے۔ان احکامات کے تحت ان تمام علاقوں میں داخلی اور خارجی راستوں کو سیل کردیا جارہا ہے۔ متعلقہ حکام کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ان علاقوں میں ہر قسم کی نقل و حرکت اور سرگرمیوں سے لوگوں کو باز رکھے،اور اتوار شام کے بعد کسی کو بھی ان علاقوں میں آنے یا باہر جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ انتظامیہ نے ان میں سے ہر ایک ریڈ زون کے نقشے تیار کیے ہیں اور ان نقشوں کے مطابق ہی ان علاقوں کو سیل کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ہر ریڈ زون کو ان جگہوں سے 300-500 میٹر پر سیل کیا جائے گا جہاں کرونا وائرس کے مثبت واقعات پائے گئے ہیں۔ فیس ماسک کی خلاف ورزی پر جرمانہ بڑھا کر 1000 روپے کردیا گیا ہے ۔

علاقے

ضلع انتظامیہ کی طرف سے جن علاقوں میں  پیر سے بندشیں عائد رہیں گی ان میں احمد نگر ، لال بازار ، بادام واری ، حول ، نوشہرہ ، الہٰی باغ ، دو،گلاب باغ،کھمبر،شری بھٹ،جڈی بل،صورہ،علمگری بازار ، کاٹھی دروازہ ، بژھ پورہ ، ہارون ، زبرون کالونی ، خیام ،، منور آباد ، خانیار ، رعناوری جوگی لنکر ، سیدہ کدل ، بربر شاہ ، بشمبرنگر ، نہرو پارک  ، نائد کدال بہور کدال ، کلاش پورہ ، عالی کدال ، دلال محلہ ، عیدگاہ ، ایس آر گنج ، گوری پورہ ، نواکدل ، ، باغوان پورہ لال بازار ، فتح کدال ، نوا بازار ، زونی مر، سعد پورہ اچھن ، کاک سرائے ، صفا کدل ، نوہٹہ ، راجوری کدل ، چھتہ بل ، بالگارڈن ، ،صنعت نگر، تلسی باغ ، اندرا نگر ، حیدر پورہ ، گلوان پورہ ،،باغ، مہتاب ، مہجور نگر ، پادشاہی باغ ،پارمپورہ ، ایم آئی جی کالونی ، اقبال آباد بمنہ، ، بوائز ہاسٹل بمنہ ، حمزہ کالونی ، ہمدانیہ کالونی بمنہ، ، وزیر باغ ، جواہر نگر ، ،چھانہ پورہ، رام باغ ، نٹی پورہ ، برزلہ ، سوئٹنگ ، کھنومہ ، نوگام ، نائک باغ ، ایچ ایم ٹی ، مجگنڈ ، لاوے پورہ ، ناربل ، قمروری ، راج باغ ، مائسمہ،بٹہ مالو، آلوچی باغ ، مندر باغ ،،پانتھ چوک،بٹوارہ، راولپورہ ، ہمہامہ ، زعفران کالونی ،زیروبرج،سونہ وار ، سرائے بالا ، نسیم باغ اور حضرتبل شامل ہیں۔انتظامات کے تحت ہر ایک علاقے میں میڈیکل ٹیمیں بھی تعینات کی جارہی ہیں۔ متعلقہ بلاک اور زونل میڈیکل آفیسرز نے اپنے اپنے دائرہ اختیار میں آنے والے ہر علاقے کے لئے ٹیمیں تشکیل دی ہیں۔ان ٹیموں کو رابطہ کیسوں کا سراغ لگانا اور مثبت معاملات کی جانچ کرنا  انکی ذمہ داریوں کا ایک حصہ ہوگا۔ چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر جہانگیر بخشی کو صحت سے متعلق معاملات میں مجموعی انتظام کے لئے ذمہ دار بنایا گیا ہے۔ سری نگر میونسپل کارپوریشن ان علاقوں میں سینی ٹائزیشن کیلئے ضرورت پڑنے پر محکمہ صحت کے ساتھ رابطہ کرے گی۔ کرونا لاک ڈاؤن کے دوران اس سے قبل بنائی گئی 25 زونل کمیٹیوں کو دوبارہ سے فعال کردیا گیا ہے اور اس ضمن میں متعلقہ زونل افسران کو ذمہ داریاں تفویض کی گئی ہے۔سری نگر انتظامیہ نے نافذ کئے جانے والے منصوبے کو تقویت دینے کے لئے مجسٹریٹوں کی ایک بڑی تعداد بھی تعینات کی ہے۔ادھر آر ٹی او سرینگر نے ایک حکم جاری کیا جس کے تحت سبھی پبلک ٹرانسپورٹ تا حکم ثانی بند رہے گا۔ آرڈر میں کہا گیا ہے کہ جنوبی، شمالی اور وسطی کشمیر سے کسی بھی گاڑی کو شہر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی ۔