۔1994سے لیکر2015تک تعینات عارضی ملازمین | ملازمتوں کو مستقل کیا جائے،ایجیک (جی) کا مطالبہ

تاریخ    7 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کے حق میں ملازمین انجمنوں اور پلیٹ فارموں کی جانب سے مسلسل مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ عرصہ دراز سے سرکاری محکموں میں کام کر رہے ڈیلی ویجروں اور کیجول ورکروں کو باقاعدہ بنایا جائے۔ سرینگر کے ایوان صحافت میں ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ایک اور دھڑے نے سبکدوش اور عارضی ملازمین کے مسائل کا ازالہ کرنے کا مطالبہ کیا۔ ایجیک(جی) کے جنرل سیکریٹری  سید غلام رسول گیلانی نے سرکار پر زور دیا کہ1994سے لیکر2015تک کے تمام عارضی ملازمین کو مستقل کیا جائے اور ایس آر ائو520کو کالعدم قرار دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ان عارضی ملازمین میں ڈیلی ویجر،کیجول لیبر،مشروط ادائیگی و معاہدوں پر کام کرنے والے ملازمین کے علاوہ مختلف مرکزی و مقامی اسکیموں  کے تحت کام کرنے والے ملازمین کے علاوہ وہ لوگ بھی شامل ہیں،جنہوں نے سرکاری پروجیکٹوں کیلئے اپنی اراضی وقف کی ہے۔ غلام رسول گیلانی نے ان عارضی ملازمین کی واجب الادا تنخواہوں کو واگزار کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے  کہاکہ کم از کم تنخواہ قانون کے تحت  عارضی ملازمین کی تنخواہوں کو  واگزار کیا جانا چاہے۔ انہوں نے کہا کہ اس مہنگائی کے دور میں عارضی ملازمین کو  گزر بسر کرنے کیلئے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے محکمہ جنگلات کے مختلف شعبہ جات میں کام کرنے والے ملازمین کی تنخواہوں میں تفاوت دور کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ پانچویں تنخواہ کمیشن کے بعد یہ تفاوت دور نہیں کی گئی۔سید غلام رسول گیلانی نے محکمہ سماجی بہبود،پھول بانی،جنگلات کے بھرتی قواعد میں بھی ترامیم کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ چند برسوں سے ان محکمہ جات میں ملازمین کی رکی پڑی ترقیوں میں پیش رفت کی جانی چاہیے۔ ایجیک(جی) کے جنرل سیکریٹری نے سبکدوش ملازمین کے رُکے پڑے پنشن کیسوں کے معاملے کو حل کرنے کا لیفٹنٹ گورنر سے مطالبہ کیا اورکہاکہ وہ اکاونٹنٹ جنرل اور ان کے دفاتر کو اس سلسلے میں ہدایت دے۔ گیلانی نے ملازمین کے مسائل کو حل کرنے کیلئے مشترکہ مشاورتی کمیٹی کے قیام کو ناگریز قرار دیتے ہوئے کہا کہ ماضی میں جس طرح اس مشترکہ پلیٹ فارم کے بینر تلے ملازمین کے کئی پیچیدہ مسائل کا ازالہ ہوا،ایک بار پھر تمام انجمنوں کو اس کمیٹی کو پھر زندہ کرنا چاہے تاکہ ملازمین کے مشترکہ مسائل کو مشترکہ طور پر حل کیا جاسکیں۔
 

تازہ ترین