تازہ ترین

دفعہ370کی تنسیخ کے فوائد عوام تک پہنچ رہے ہیں: اشوک کول

شیاماپرسادمکھرجی کے یوم پیدائش پر بھاجپا ہیڈکوارٹر پر تقریب

تاریخ    7 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// بی جے پی کے جموں وکشمیر یونٹ کے  جنرل سیکریٹری (آرگنائزیشنز)اشوک کول نے دفعہ370کی تنسیخ کو وادی میں سنگ بازی کے خاتمے اور فورسز و جنگجوئوںکے درمیان جھڑپوں کے مقامات پر شہری ہلاکتوں پر روک سے جوڑتے ہوئے کہا ’’ اگرسید علی گیلانی نے پہلے ہی علیحدگی پسند کو الوداع کیا ہوتا،تو وادی میں کشت و خون نہیں دیکھنا پڑتا‘۔بھارتیہ جن سنگھ، جو بعدازاں بی جے پی میں تبدیل ہوئی، کے بانی ڈاکٹر شیاماپرساد مکھر جی کے یوم پیدائش کے موقعہ پر بی جے پی کے سرینگر ہیڈکوارٹر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے اشوک کول نے کہا کہ جموں کشمیر میں دفعہ370مستقل نہیں تھااور اس کی تنسیخ کے بعد لوگوں کو اس کے فائدے ملنے لگے،جن میں سنگبازی کے مکمل خاتمے کے علاوہ معرکہ آرائیوں میں شہری ہلاکتوں پر روک اور امن و قانون قائم رہا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو نے بھی کہا تھا کہ دفعہ 370 عارضی ہے۔کول کا کہنا تھا’’اُس وقت کے ہندوستان کے وزیر قانون بی آر امبیڈکر نے بھی دفعہ 370 کو شامل نہیں کیا تھا ،جس کا مطلب ہے کہ یہ ایک عارضی دفعہ ہی رہی اور پھر دفعہ35 اے ،یہ کہاں سے آیا؟،اس کو صداتی نوٹیفکیشن کے تحت لاگو کیا گیا ،جو غلط تھاــ‘‘۔انہوں نے کہا کہ یہ سوال باقی ہے کہ دفعہ370 سے لوگوں نے کیا حاصل کیا؟ اور میرا جواب ہوگاکچھ بھی نہیں۔ اشوک کول نے کہا کہ تمام علاقائی جماعتوں پی ڈی پی اور نیشنل کانفرنس سے تعلق رکھنے والوں نے دفعہ370 اور 35اے پر سیاست کی تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ وہ اقتدار میں رہیں۔انہوں نے کہا ’’کشمیر یا جموں میں عام لوگوں کو اس سے کچھ نہیں ملااور اسکے بجائے علاقائی سیاسی جماعتوں نے ایک یا دوسرے بہانے پر ان کو بیوقوف بنایا۔‘‘انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے لوگوں کو پچھلے 70برسوں سے اندھیرے میں رکھا گیا تھاکہ رکھ آرتھ میں موجود متعلقہ سب ڈویژن کے عملے نے 5سے6غیر قانونی تجاوزات کو منہدم کر دیا ہے اور قبرستان کیلئے مقامی لوگوں کے ذریعہ غیرقانونی طور پر لگائے گئے بورڈ کو بھی ہٹا دیا گیا۔بیان میں پولیس کی تعریف کرتے ہوئے کہا گیا ہے اس مہم میں ایس ڈی پی او ایس ایچ او کے علاوہ دیگر پولیس کے عملہ نے کافی مدد کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ دو جگہوں پر زمین کی بھرائی کی گئی ہے جہاں پر خلاف ورزی کرنے والوں نے غیر قانونی طور پر پلاٹ تیار کرنے شروع کئے تھے ۔انہوں نے کہا کہ ایل ڈی اے کے دائرہ اختیار میں رہنے والے تمام عوام کو ایک بار پھر ہدایت دی گئی ہے کہ وہ کسی بھی طرح کی غیر قانونی تعمیرات / تجاوزات کے لئے کام نہ کریں ۔کیونکہ ایسے افراد کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی ۔

تازہ ترین