تازہ ترین

دویندر سنگھ اور 5دیگران کیخلاف این آئی اے چارچ شیٹ پیش

تاریخ    7 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
جموں//دلی پولیس کی جانب سے چارج شیٹ پیش نہ کرنے کے نتیجے میں ضمانت پر رہا ہونے والے ڈی ایس پی دویندر سنگھ اور حزب کمانڈر نوید بابو اور اسکے بھائی سمیت 6ملزمان کیخلاف  این آئی اے نے جموں کی ایک عدالت میں چارج شیٹ داخل کردیا ہے۔ قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) چارج شیٹ کے مطابق سابق پولیس ڈی ایس پی دیویندر سنگھ نئی دلی میں مقیم پاکستانی ہائی کمیشن میں بعض عہدیداروں کے ساتھ بھی رابطے میں تھاجبکہ سرحد پار سے اسلحہ اور دیگر گولہ بارود بھی لاکر اسے جنگجوئوں کو فراہم بھی کرتا تھا ۔ جموں میں پیش کئے گئے چارج شیٹ میں حزب المجاہدین جنگجو سید نوید مشتاق عرف نوید بابو،عرفان شفیع میر عرف ایڈوکیٹ، سابق ڈی ایس پی دیوندر سنگھ، حزب جنگجورفیع احمد راتھر،سابق ایل او سی ٹریڈر تنویر احمد وانی اور نوید بابو کا بھائی سید عرفان احمد شامل ہیں۔یاد رہے کہ بنیادی طور پر اس کیس کے سلسلے میں قاضی گنڈ پولیس تھانے میں کیس درج تھا جہاں دیوندر سنگھ کو حزب جنگجوئوں کو وادی سے باہر لیجانے کی کوشش کے دوران ایک گاڑی سے گرفتار کیا گیا تھا۔دیوندر کی گرفتاری کا واقعہ 11 جنوری2020کو قاضی گنڈ کے  الہ سٹاف میر بازار علاقے میں پیش آیا۔ بعد ازاں این آئی اے نے17جنوری کو کیس کی تحقیقات کا کام ہاتھ میں لیکر کیس کو جموں منتقل کیا۔کیس کی تحقیقات کے دوران وادی کشمیر میں15مقامات پر چھاپے مارے گئے اور دیگر ملزمان کی گرفتاریاں عمل میں لائی گئیں۔چارج شیٹ کے مطابق دیوندر سنگھ نئی دلی میں مقیم پاکستانی ہائی کمشنر کے ساتھ بھی رابطے میں تھا اور اس کیلئے انہوں نے محفوظ سوشل میڈیا اکاٗونٹ کھول رکھے تھے۔ وکیل عرفان احمد بھی پاکستان کے ساتھ مسلسل رابطے میں تھا جبکہ پاکستان میں عرفان نے نہ صرف حزب قیادت سے ملاقات کی تھیں بلکہ اس کے علاوہ بھی کئی دیگر عسکریت پسندوں سے بھی ان کا رابطہ تھا اور ان کے ذریعے وہ فنڈس او ر دیگر ہدایت موصول کرتے تھے جبکہ عرفان نے درجنوں کشمیر یوں کیلئے ویزا کا بند وبست کرکے انہیں پاکستان بھیج دیا تھا ۔ 
 
 

کولگام میں چھاپے، 6 افراد گرفتار

کولگام // فورسز نے جنوبی کشمیر کے بوگام گائوں میں شبانہ چھاپو ں کے دوران 6 افراد کو گرفتار کر لیا ۔ فورسز نے اتوار اور سوموار کی درمیانی شب بوگام کولگام میں  چھاپے ڈالے اور نصف درجن افراد کو حراست میں لیا۔ مذکورہ نوجوانوں کو پتھر بازی کے الزامات میں گرفتار کیا گیا ہے جنہوں نے حال ہی میں فورسز اور جنگجوئوں کے مابین معرکہ ارائی کے دوران فورسز پر پتھراو کیا تھا۔خیال رہے4 جولائی کو بوگام کے مضافاتی علاقے آرہ میں فورسز اور جنگجوئوں کے مابین معرکہ آرائی ہوئی جس میں2جنگجو جاں بحق ہوگئے۔اس معرکہ کے دوران آرہ کولگام میں فورسز و مظاہرین کے مابین جھڑپیں بھی ہوئی تھیں۔ادھر طاہر احمد ساکن بڈگام کو کرالہ ہار بارہمولہ میںپولیس نے گرفتار کیا۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ اسکے قبضے سے ایک گرینیڈ اور دیگر اسلحہ بر آمد کیا گیا۔