عیدہ گاہ اور حبہ کدل میں پینے کے پانی کی عدم دستیابی

علی جان روڑ پرخالی برتن اور مٹکے لئے مردو زن کا احتجاجی دھرنا

تاریخ    3 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


ارشاد احمد
سرینگر// پانی کی عدم دستیابی پربرہم شہر خاص کے عید گاہ علاقے کے شہریوں نے سڑکوں پر نکل محکمہ آب رسانی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ۔فردوس کالونی عید گاہ کے باشندگان جمعرات کو علی جان روڑ پر نمودار ہوئے اور احتجاج کرتے ہوئے ٹریفک کی نقل وحرکت روک دی تاکہ اعلیٰ حکام کی توجہ اُنکے مسائل کی طرف مبذ ول ہوسکے ۔احتجاجی مظاہرین میں زیادہ خواتین تھیں ،نے بتایا کہ گرمیوں کے ایام میں پانی کی عدم دستیابی کے سبب اُنہیں مشکلات کا سامنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ وہ پانی کی عدم دستیابی کے سبب گھریلو کام کاج انجام نہیں دے پا رہی ہیں ،حتیٰ بچوں کیلئے کھانا بھی نہیں پکا پاتی ہیں ۔مظاہرین نے محکمہ آب رسانی کے خلاف نعرہ بازی کی ۔مظاہرین نے علی جان روڑ پر ٹریفک کی نقل حرکت کئی گھنٹوں تک مسدود کرکے رکھ دی جسکی وجہ سے علاقے میں ٹریفک جام کیساتھ ساتھ گاڑیوں کو متبادل روٹ اختیار کرنے پڑے ۔ بعض خواتین نے اپنے ہاتھوں خالی برتن اور مٹکے اٹھا رکھے تھے ۔ان کا کہناتھا ’ہم پانی کا ایک گلاس بھی نہیں پی سکتے نہانے کی بات دور ہے ‘۔انہوں نے کہا ’ہمارے گھروں کو پانی کی سپلائی نہیں ہورہی ہے ،ہمیں ذہنی کوفت کا سامنا ہے اور محکمہ آب رسانی خواب غفلت میں محو ہے ‘۔صفا کدل پولیس تھانے کی ایک ٹیم احتجاجی مظاہرین کے پاس گئی اور پولیس نے محکمہ آب رسانی کے حکام کو طلب کیا ،جسکے بعد یہاں سے مظاہرین پر امن طور منتشر ہوئے۔ محکمہ آب رسانی کے ذمہ داراں نے اُنہیں یہ یقین دہانی کرائی کی پانی کی سپلائی کو ترجیحی بنیا دوں پر بحال کیا جائیگا ۔دریں اثناء حبہ کدل کے لوگوں نے بھی محکمہ جل شکتی کے خلاف کیاحتجاجی مظاہرے کرتے ہوئے پینے کے صاف پانی کی فراہمی کا مطالبہ کیا۔ (مشمولات کے این ایس)
 

تازہ ترین