تازہ ترین

لداخ میں آمنے سامنے افواج کو جستہ جستہ ہٹانے پر اتفاق

سرحدی میکانزم ، طے شدہ سمجھوتوںاورتاریخی شواہد کو فوقیت دی جائیگی

تاریخ    2 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
بیجنگ //چین اور بھارت نے لداخ میں حقیقی کنٹرول لائن سرحد پر آمنے سامنے افواج کو ٹکڑیوں میں ہٹانے پر اتفاق کیا ہے۔ دونوں ملک سرحدی علاقوں میں تنائو کی صورتحال کم کرنے کے لئے موثر اقدامات اٹھانے پر بھی متفق ہوگئے ہیں۔منگل کو دونوں ملکوں کے لداخ میں تعینات کور کمانڈروں کی سطح پر ہونے والی تیسرے دور کی بات چیت کے بارے میں چینی وزارت خارجہ ترجمان جیائو لی جیان نے ہفتہ وار پریس بریفنگ میں کہا’’چین اور بھارت نے سرحد پر آمنے سامنے والی افواج کو ہٹانے کیلئے موثر پیشرفت کی ہے‘‘۔ ترجمان نے کہا کہ منگل کو تیسرے دور کی بات چیت میں یہ فیصلہ ہو اہے۔ترجمان نے کہا ’’ چین نے اس پیش رفت کا خیر مقدم کیا ہے اورامید ہے کہ بھارت باہمی اتفاق کے اقدامات کو عملانے کیلئے موثر اقدامات اٹھائے گا اور چین کیساتھ فوجی اور سفارتی سطح پر قریبی رابطہ رکھے گا تاکہ سرحدی کشیدگی کا خاتمہ کیا جاسکے‘‘۔چینی سرکار کے ترجمان اخبار گلوبل ٹائمز نے ذرائع کا حوالہ دیکر کہا ہے کہ فوجی کمانڈروں کی تیسرے دور کی بات چیت میں طرفین نے سبھی معاملات پر کھل کر بحث کی۔انہوں نے موجودہ اختلافات اور پرانی صورتحال کے درمیان توازن کی کمی پر بھی بات کی۔فیصلہ ہوا کہ اگلے مورچوں پر آمنے سامنے افواج کو ٹکڑیوں میں واپس بلایا جائیگا اورکشیدگی کو کم کیا جائیگا۔بات چیت میں یہ بھی طے پایا کہ پہلے سے موجود سرحدی میکانزم کو استعمال کیا جائیگا،پہلے سے طے شدہ سمجھوتوں کی پاسداری کی جائیگی،تاریخی شواہد کا احترام کیا جائیگا،دونوں ملکوں کے کلیدی تشویش کو دور کیا جائیگااور بات چیت کے دوران طے شدہ معاملات کو عملایا جائیگا۔
 

وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کالداخ دورہ پر جانے کا امکان

یو این آئی
 
نئی دہلی //مشرقی لداخ میں حقیقی کنٹرول لائن پر گذشتہ تقریباً دوماہ سے چین کے ساتھ جاری فوجی تعطل کے درمیان وزیردفاع راج ناتھ سنگھ  جمعہ کو سیکورٹی صورت حال کا جائزہ لینے کے لئے لداخ کے دورہ پر جانے کا امکان ہے۔وزیردفاع کے ساتھ آرمی چیف جنرل منوج مکند نرونے بھی جائیں گے،دونوں ممالک کے درمیان فوجی تعطل پیدا ہونے کے بعد سنگھ کا یہ پہلا لداخ دورہ ہے۔ سنگھ وہاں فوج کے سینئرافسران کے ساتھ اعلیٰ سطحی میٹنگ کریں گے اور سیکورٹی سمیت مختلف پہلووں کی نظر سے صورت حال کا جائزہ لیں گے۔وزیردفاع کے لیہہ واقع اسپتال جانے کا بھی پروگرام ہے جہاں چینی فوجیوں کے ساتھ پرتشدد جھڑپ میں جوانوں کا علاج چل رہا ہے۔اس سے قبل جنرل نرونے بھی لداخ کے دو روز کے دورے پر گئے تھے،انہوں نے فوج کی تیاریوں کا جائزہ لینے کے ساتھ ساتھ فوجیوں کے ساتھ بھی تمام امور پر بات کرکے ان کی حوصلہ افزائی کی تھی۔
 

تازہ ترین