کولگام میں برادر کشی کا واقعہ

۔ 9سال بعدسی آر پی اہلکار کو عمر قید کی سزا

تاریخ    1 جولائی 2020 (00 : 03 AM)   


خالد جاوید
کولگام // کولگام کی ایک عدالت نے برادر کشی کے ایک معاملے میں ملوث  ایک فورسز اہلکار کو 9سال بعد عمر قید کی سزا سنائی ہے۔پرنسپل اینڈ ڈسڑکٹ سیشن جج کولگام محمد اشرف ملک نے 9 سال بعد  اپنے 3 ساتھیوں کو ہلاک کرنے اور ایک کو زخمی کرنے کے الزام میں سی آر پی اہلکار کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔24دسمبر 2011 کو کولگام قصبے میں 18 بٹالین سی آر پی  کیمپ میں برادرکشی کا واقعہ پیش آیا تھا۔فائرنگ کے اس واقعہ میں 3 اہلکاروں ایم سومن، پی شھبو اور جاوید احمد کی موت جبکہ ایس ڈی مورلی زخمی ہوا تھا۔پولیس کے مطابق زخمی اہلکار ایس ڈی مورلی اور ملزم سنجے کمار رائے ساکن اعظم گڈھ یوپی کے درمیان کسی بات پر جھگڑا ہوا جس کے بعد فائرنگ کا واقعہ پیش آیا، جس میں 3 جوانوں کی ہلاکت ہوئی۔ اس حوالے سے پولیس اسٹیشن کولگام میں کیس زیر نمبر271/2011 درج کیا گیا تھا۔پولیس نے اس واقعہ کے ضمن میں سی آر پی ایف کے 6 اہلکاروں کو گرفتار کیا تھا۔سیشن کورٹ کولگام نے 9 سال کے بعد  اس کیس میںفیصلہ سنایا اور ملزم کانسٹیبل سنجے کمار کو عمر قید کی سزا سنائی۔ملزم ان تمام برسوں تک پولیس تحویل میں تھا۔
 

تازہ ترین