چیلنجوں کا مقابلہ کرکے جیتناہماری تاریخ :وزیراعظم

تاریخ    29 جون 2020 (30 : 02 AM)   


یو این آئی
نئی دہلی// وزیراعظم نریندر مودی نے کہا کہ ہندوستان کی تاریخ آفات اور چیلنجوں پر جیت حاصل کرنے اور زیادہ نکھر کر نکلنے کی رہی ہے ۔ مودی نے اتوار کے روز اپنے ماہانہ پروگرام ’من کی بات‘ میں کہا’’ جو عالمی وبا آئی، انسانیت پر جو بحران آیا، اس پر ہماری بات چیت کچھ زیادہ ہی رہی لیکن ان دنوں میں دیکھ رہا ہوں، لگاتار لوگوں میں، ایک موضوع پر بحث ہور ہی ہے کہ آخر یہ سال کب گزرے گا۔ کوئی کسی کو فون بھی کر رہا ہے تو بات چیت اسی موضوع سے شروع ہورہی ہے کہ یہ سال جلد کیوں نہیں گزر رہا ہے ۔ کوئی لکھ رہا ہے ، دوستوں سے بات کررہا ہے کہ یہ سال اچھا نہیں ہے ، کوئی کہہ رہا ہے کہ 2020 شبھ نہیں ہے ۔ بس لوگ یہی چاہتے ہیں کہ کسی بھی طرح یہ سال جلد سے جلد گزر جائے‘‘۔انہوں نے کہا کہ 6۔7 مہینے پہلے ہم کہاں جانتے تھے کہ کورونا جیسا بحران آئے گا اور ا س کے خلاف یہ لڑائی اتنی طویل ہوگی۔ یہ بحران تو برقرار ہے اور ملک میں نئے نئے چیلنج سامنے آتے جارہے ہیں۔ ابھی کچھ دن پہلے ملک میں مشرقی کنارے پر امفان طوفان آیا تو مغربی کنارے پرنرسرگ طوفان آیا۔ کئی ریاستوں میں ہمارے کسان بھائی بہن ٹڈیوں کے حملے سے پریشان ہیں اور کچھ نہیں، تو ملک کے کئی حصوں میں چھوٹے چھوٹے زلزلے رکنے کا نام نہیں لے رہے ہیں اور ان سب کے درمیان ہمارے کچھ پڑوسیوں کی جانب سے جو ہورہا ہے ملک ان چیلنجوں سے بھی نمٹ رہا ہے ۔ واقعی ایک ساتھ اتنی آفات، اس سطح کی آفات بہت کم ہی دیکھنے سننے کو ملتی ہیں۔ حالت تو یہ ہوگئی ہے کہ کوئی چھوٹا واقعہ رونما ہورہا ہو تو لوگ انہیں بھی چیلنج کے ساتھ جوڑ کر دیکھ رہے ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ مشکلیں آتی ہیں، لیکن سوال یہی ہے کہ کیا ان آفات کی وجہ سے ہمیں سال 2020 کو خراب مان لینا چاہئے ۔ کیا پچھلے چھ مہینے جیسے گزارے ان کی وجہ سے یہ مان لینا کہ پورا سال ہی ایسا ہے ، کیا یہ سوچنا صحیح ہے ؟ جی نہیں۔ بالکل نہیں۔ ایک سال میں ایک چیلنج آئے یا پچاس، نمبر کم زیادہ ہونے سے وہ سال خراب نہیںہوتا۔ہندوستان کی تاریخ ہی آفات اور چیلنجوں پر جیت حاصل کرکے اور زیادہ نکھرکر نکلنے کی رہی ہے ۔ سینکڑوں برسوں تک مختلف حملہ آوروں نے ہندوستان پر حملے کئے ، اسے بحران میں ڈالا، لوگوں کو لگتا تھا کہ بھارت کی وجود ہی ختم ہوجائے گا، ہندوستان کی ثقافت ہی مٹ جائے گی، لیکن ان بحران سے ہندوستان اور بھی عظیم ہوکر سامنے آیا۔ 
 

تازہ ترین