تازہ ترین

جموں وکشمیر کے 400شہری پاکستان میں درماندہ | واہگہ کے راستے واپسی کے انتظامات ،2افسرتعینات

تاریخ    23 جون 2020 (00 : 03 AM)   
(فائل فوٹو)

سید امجد شاہ
جموں //حکومت نے جموں وکشمیر کے پاکستان میں درماندہ 400شہریوں کی واپسی کیلئے انتظامات کرلئے ہیں اور اس سلسلے میں محکمہ ہسپٹلٹی و پروٹوکول کی طرف سے اسسٹنٹ ڈائریکٹروں کو واہگہ سرحد پر تعینات کیاگیاہے ۔جموں و کشمیر کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے یہ 400افراد امسال فروری اور مارچ کے مہینوں میں ویزاپر پاکستان گئے تھے جو کورونا وائرس کی وجہ سے اچانک سے لاک ڈائون نافذ ہوجانے سے وہیں درماندہ ہوکر رہ گئے، تاہم اب ان کی واپسی کا بندوبست کیاگیاہے ۔اس سلسلے میں محکمہ ہسپٹلٹی و پروٹوکول کے سیکریٹری ایم راجو کی طرف سے ایک حکم جاری کرکے دو اسسٹنٹ ڈائریکٹروں عامر چوہدری اور منیب عمر کو 24جون سے واہگہ سرحد پر تعینات کیاگیاہے جو 25جون کو بذریعہ سڑک واپس آنے والے شہریوں کو موصول کریں گے ۔یہ افسران منیجر جموں وکشمیر ہائوس امرتسر میںرہیں گے اور مقامی انتظامیہ کے ساتھ تعاون کرکے درماندہ افراد کی واپسی کاانتظام کریں گے۔ایک سینئر افسر نے بتایاکہ جموں وکشمیر کے لگ بھگ 400افراد پاکستان میں درماندہ ہوکر رہ گئے ہیں جن کو واہگہ سے واپس لایاجارہاہے ۔انہوں نے بتایاکہ 25جون کو پہلے روز250افراد پر مشتمل قافلہ واہگہ پہنچے گا جبکہ اس کے اگلے روز150لوگ واپس آئیں گے ۔انہوں نے بتایاکہ ان کیلئے ایس آر ٹی سی بسیں بھی واہگہ سرحد پر بھیجی جارہی ہیں جن پر سوارکرکے انہیں واپس لایاجائے گالیکن یہاں پہنچنے پر انہیں لازمی طور پر قرنطینہ کیاجائے گا۔انہوں نے بتایاکہ جن مسافروں کے پاس پچیس اور چھبیس جون کی ہوائی ٹکٹیں ہوں گی ،وہ بذریعہ دہلی امرتسر سے سرینگر آسکیں گے۔
 

تازہ ترین