دبئی میں در ماندہ کشمیریوں کا از خود پروازوں کا انتظام

حکومت ہند سے اجازت طلب،سنیچر کو 19 پروازیں اتریں

تاریخ    7 جون 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
 جموں// دبئی میںدرماندہ 800 کشمیریوں نے حکومت ہند سے مطالبہ کیا ہے کہ انہوں نے از خود 2چارٹرڈ پرازوں کیلئے رقوم کا انتظام کیا ہے ، انہیں سرینگر میں لینڈ کرنے کی اجازت دی جائے۔انہوں نے کہا کہ 11جون کو وندے بھارت مشن کے تحت ایک پرواز کا انتطٓم کیا گیا تھا جس میں 150کشمیری سوار تھے۔انکا کہنا ہے کہ دبئی میں مقیم کشمیریوں نے از خود رقوم کا انتظام کیا اور دو پرازوں کیلئے پیسہ اکٹھا کیا لیکن سرینگر جانے کیلئے اب حکومت ہند کی اجازت کا انتظار ہے۔ادھرجموں اور سرینگر ہوائی اڈوں پر سنیچر کو 2,097 مسافروں کو لیکر 19 گھریلو پروازیں اتریں ۔گھریلوپروازوں کی دوبارہ آمدورفت شروع ہونے کاکل 13 واں دن تھا ۔ جموں ہوائی اڈے پر516 مسافروں کو لیکر 7  جبکہ سرینگر ہوائی اڈے پر 1,581 مسافروں کے ساتھ 12 پروازوں اتریں۔ ہوائی اڈوں پر ہی تمام مسافروں کا کووڈ 19 ٹیسٹ کیا گیا اور انہیں اپنے منازل کی طرف تمام احتیاطی پروٹوکول پر سختی عملے کرتے ہوئے بھیج دیا گیا ۔ادھرتقریباً 1,12,513 جموں کشمیر کے لوگوں کو حکومت نے براستہ لکھن پور اور خصوصی ٹرینوں کے ذریعے اب تک واپس لایا ہے ۔متعلق سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اب تک مختلف ریاستوں اور یو ٹیز سے درماندہ مسافروں کو لیکر آئی45 کووڈ خصوصی ریل گاڑیاں جموں اور اودھمپور ریلوے سٹیشنوں تک پہنچی  ۔ اس طرح45 کووڈ خصوصی ریل گاڑیوں ، پروازوں اور درجنوں گاڑیوں میں تقریباً1,12,513 درماندہ لوگوں کو اب تک یو ٹی واپس لایا گیا ۔  
 

تازہ ترین