معیشت اوراقتصادی سرگرمیوں کی بحالی

جموں وکشمیربینک چیئرمین کا کاروباری انجمنوں کے نمائندوں سے تبادلہ خیال

تاریخ    7 جون 2020 (00 : 03 AM)   


سرینگر// کووڈ۔19 وباء سے پیدا شد ہ مشکلات پر قابو پانے اور متاثر معیشت کو دوبارہ سے استوار کر نے کی غرض سے جہاں عالمی پیمانے پر کوششیں جاری ہیں وہیں جموں، کشمیر اور لداخ خطوں میں جموں وکشمیر بینک مختلف تعلق داروں کے ساتھ ملاقاتیں کرکے ایک وسیع حکمتِ عملی مرتب دینے میں سر گرم عمل ہے۔ اس ضمن میں پچھلے کئی مہینوں سے مختلف کاروباری انجمنوں کے ساتھ تبادلہ خیالات جاری ہے اور اسی طرز کی ایک اور میٹنگ بینک کے کارپوریٹ آفس میں  بینک کے چیئرمین و منیجنگ ڈائریکٹر راجیش کمار چھبر کی صدارت میں منعقد ہوئی جس میں مختلف کاروباری شعبوں سے وابستہ نمائندوں نے شرکت کی۔ان نمائندوں نے اُن تمام چھوٹے کاروباریوں کیلئے مالی معاونت کی درخواست کی جنہیں حالیہ کورونا وائرس  لاک ڈائون کی وجہ سے بھاری خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔وفد نے بینک کی دست کار فائنانس اسکیم  کے تحت قرضے کی رقم کو بڑھانے کی تجویز بھی پیش کی۔ وفد نے بینک سرپرست سے یہ درخواست بھی کی کہ وہ اپنے اثر و رسوخ سے ٹورازم اور ٹرانسپورٹ شعبے کی بدحالی کو دور کرنے کیلئے موثر اقدام اٹھائیں تاکہ اس خطے کی کاروباری سرگرمیاں دوبارہ سے پٹری پر لائی جاسکیں۔ دیگر نمائندوں نے ایک عارضی فائنانس سہولیت کے امکان کو بھی بینک کی اعلیٰ قیادت کے سامنے رکھا۔میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے جے کے بینک چیئرمین و منیجنگ ڈایئریکٹر نے کہا کہ ہم نے تمام MSMEاور چھوٹے تاجروں کیلئے اضافی10فی صد ورکنگ کپیٹل کا اعلان پہلے ہی کر رکھا ہے اور اسکے علاوہ مر کزی سرکار کی’’ آتم نربھر‘‘ سکیم کے تناظر میں ہم گارنٹیڈ ایمر جنسی کریڈٹ لائن  (GECL) کے تحت بغیر کسی ضمانت کے اضافی فنڈنگ کر رہے ہیں اور یہ اسکیم اکتوبر2020تک جاری رہے گی جسکے تحت سرکار نے پورے ملک کیلئے تین لاکھ کروڑ روپے کی رقم مختص رکھی ہے۔چیئرمین نے کہا کہ میں جموں ، کشمیر اور لداخ خطوں سے وابستہ تاجروں سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ ہماری بینک شاخوں سے فوراً رابطہ کریں اور اس اسکیم کا بھر پور فائدہ اٹھائیں۔

تازہ ترین