سلامتی کونسل کے انتخابات 17 جون کو عارضی رکنیت کیلئے بھارت نے ترجیحات طے کیں

تاریخ    6 جون 2020 (00 : 03 AM)   


یو این آئی
نئی دہلی// اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے عارضی ارکان کے طور پر انتخاب میں اترنے سے قبل ہندوستان نے کل اپنے چار نکاتی ایجنڈے کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ ترقی کے نئے مواقع، بین الاقوامی دہشت گردی پر اثر انگیز کارروائی اور کثیر جہتی نظام میں اصلاح، اس کی اہم ترجیحات ہیں۔وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے کل یہاں سلامتی کونسل کے لئے ہندوستان کی ترجیحات کا ایک بروچر جاری کیا۔ اس میں مذکورہ چار موضوعات کے علاوہ بین الاقوامی امن و سلامتی  پر ایک وسیع نقطہ نظر اور تصفیہ کے آلہ کار کے طور پر انسانیت پر مبنی ٹکنالوجی کو فروغ  کے ساتھ ترجیح دینے کی بات کہی گئی ہے۔سلامتی کونسل کی عارضی رکنیت کے لئے 17 جون کو انتخابات ہونے ہیں۔ عارضی رکنیت دو برس کے لئے ہوتی ہے اور ہندوستان 10 برس بعد اس کے لئے انتخاب میں اترا ہے۔ ایشیا پیسیفک گروپ سے واحد امیدوار ہونے کی وجہ سے ہندوستان کی کامیابی یقینی سمجھی جارہی ہے۔اس موقع پر ڈاکٹر جے شنکر نے کہا کہ موجودہ وقت میں ہم بین الاقوامی امن و سلامتی کے لئے چار مختلف طرح کے چیلنجوں کا سامنا کررہے ہیں۔ پہلے بین الاقوامی حکمرانی کے عمومی عمل پر  دباؤ بڑھ رہا ہے۔
 

تازہ ترین