سرینگر میں مذہبی مقامات کو کھولنے کا معاملہ

انتظامیہ سے مذہبی قائدین کی میٹنگ آج

تاریخ    5 جون 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// سرینگر میں کورونا وائرس کے بیچ زندگی گزارنے کیلئے لوگوں کو تیار کرنے کیلئے ضلع انتظامیہ نے آج یعنی جمعہ کو مذہبی لیڈروں کے ساتھ میٹنگ طلب کی ہے جس کے دوران سرینگر میں لاک ڈائون کھولنے کیلئے مذہبی لیڈروں کی طرف سے لوگوں کو جانکاری دینے میں تعاون کرنے اور ان کے تاثرات پر تبادلہ خیال ہوگا۔ وادی میں گزشتہ2ماہ سے مذہبی مقامات کورونا لاک ڈائون کے نتیجے میں بندہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ مذہبی لیڈروں کے ساتھ میٹنگ میں2اہم نقاط پر بات ہوگی جن میں مذہبی مقامات کو کھولنے پر مذہبی لیڈروں سے تاثرات حاصل کئے جائے گے جبکہ وبائی بیماری سے متعلق احتیاط کرنے پر مذہبی لیڈر کیا رول ادا کرسکتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ضلع انتظامیہ نے اس حوالے سے مذہبی  لیڈروں بشمول،مندروں،مساجدوں اور گردواروں کے سربراہان کو مدعو کئے گئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گزشتہ15روز کے اندر ضلع انتظامیہ نے مختلف فریقین،جن میں تاجر وںکی انجمن،بیکری انجمنیں اور سپورٹس کونسل بھی شامل ہیں، سے قریب70 میٹنگیں کی ہیں۔ ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر ڈاکٹر شاہد چودھری کا کہنا ہے کہ لاک ڈائون کا نفاذ کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے کیا گیا تھاجبکہ اس دوران کورونا کی جانچ کی اہلیت بھی بڑھانی تھی اور ان تمام چیزوں میں ضلع انتظامیہ کامیاب ہوئی۔ان کا کہنا تھا کہ آج کی تاریخ میں جو مریض مثبت نکلتے ہیں،انکی تعداد60فیصد ہے۔ان کا کہنا تھا’’ دنیا میں اب لاک ڈائون ختم ہورہا ہے،اور ہمیں سرینگر کے لوگوں کو نئی حقیقت کورونا وائرس کے سائے میں جینے کیلئے تیار کرنا ہے،اور سر نو بحالی کے دور میں عوام پر کافی ذمہ داری ہے کہ وہ کس طرح کا احتیاط کرتی ہے‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ مذہبی رہنمائوں کا ایک اہم رول ہے کیونکہ لوگ انکی بات اچھی خاصی تعداد میں سنتے ہیں۔ڈاکٹر شاہد چودھری نے کہا کہ انہیں چاہے کہ وہ لوگوں کو سماجی فاصلہ بنائے رکھنے اور صفائی و ستھرائی کے علاوہ ماسکیں پہننے کیلئے رضامند کریں۔انہوں نے کہا کہ اس قبل تاجروں،ریستوراں مالکان اور دیگر لوگوں سے بھی میٹنگیں کی گئی، جنہیں تاکید کی گئی کہ وہ کرونا  گائڈ لائنز  کا احترام کریں۔
 

تازہ ترین