تعمیراتی پروجیکٹوں کا تخمینہ | 10فیصد اضافہ کیا جائے

ٹھیکہ داروں کی حکام سے اپیل

تاریخ    4 جون 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// کرونا وائرس کے بعد پیداشدہ صورتحال کے بیچ تفویض شدہ تعمیراتی پروجیکٹوں کے تخمینہ اور الاٹمنٹ میں10فیصد اضافہ کرنے کی وکالت کرتے ہوئے ٹھیکیداروں نے کہا کہ بازاروں میں تعمیراتی مواد کی قیمتوں میں اضافہ ہواہے۔سرینگر میں اپنے دفتر پر ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سینٹرل کنٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی کے جنرل سیکریٹری فاروق احمد ڈار نے کہا کہ تعمیراتی مواد میں اس قدر اضافہ ہواکہ مجوزہ کاموں کو مکمل کرنا اُن کیلئے انتہائی مشکل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے ہی سال 2012کا تعمیراتی شیڈول رائج ہے اور8سال گزرنے کے باوجود اس میں اضافہ نہیں ہواحالانکہ گزشتہ8برسوں کے دوران قیمتیں آسمان کو چھورہی ہیں۔ ڈار نے کہا کہ اب 5اگست کے بعد پیدہ شدہ حالات اور کرونا وائرس کی وجہ سے اس میں مزید اضافہ ہوا،جو عام لوگوں کی قوت برداشت سے باہر ہے۔  کمیٹی کے جنرل سیکریٹری نے واجب الادا رقومات کو بھی التوا میں ڈالنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ500کروڑ روپے واگزار نہ کرنے کے باوجود ٹھیکیداروں کو پروجیکٹ مکمل کرنے کیلئے دبائو ڈالا جا رہا ہے۔انہوں نے سوالیہ انداز میں پوچھا کہ جب سرکار واجب الادا رقومات کو ہی واگزار نہیں کر رہی ہے تو ٹھیکیدار پروجیکٹوں کو مکمل کرنے کیلئے سرمایہ کاری کہاں سے کریں گے۔ وادی میں’’ ریت مافیہ‘‘ کی سرگرمیوں کو حکومت کیلئے ایک چلینج قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایک طرف سے جہاں ریت ،باجری اور پتھروں کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے،وہیں دوسری جانب اس کاروبار سے منسلک لوگوں کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔
 

تازہ ترین