مغل شاہراہ کھولنے کیلئے سرکاری احکامات کا انتظار

برف ہٹانے کا کام ادھورا چھوڑ دیا گیا :ایگزیکٹو انجینئر

تاریخ    3 جون 2020 (00 : 03 AM)   


بختیار حسین
سرنکوٹ //اگرچہ ملک بھر میں لاک ڈائون میں نرمی کرکے بین ضلع اور بین الریاستی ٹرانسپورٹ کو چلنے کی اجازت دی جارہی ہے تاہم خطہ پیر پنچال کو وادی کشمیر سے ملانے والی مغل شاہراہ کو کھولنے کیئے ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں لیاگیاہے۔پچھلے لگ بھگ سات ماہ سے بند پڑی اس شاہراہ پر ٹریفک کی بحالی کیلئے حکام کی سطح پر تذبذب پایاجارہاہے اور برف ہٹانے کاکام دوبارہ شروع کئے جانے کے باوجود متعلقہ ایگزیکٹو انجینئرسے کہاگیاہے کہ وہ ایک دن کاکام چھوڑ کر بقیہ برف ہٹادیں۔شاہراہ کی بحالی پر جب ایگزیکٹو انجینئر مغل روڈ لیاقت چوہدری سے رابطہ کیاگیاتو انہوں نے بتایاکہ مشینری متحرک ہے اور کام چل رہاہے۔انہوں نے بتایاکہ ڈپٹی کمشنر سے ان کی بات ہوئی اور انہوں نے بتایاہے کہ ایک دن کاکام چھوڑ کر باقی برف صاف کردی جائے۔انہوں نے کہاکہ حکام اگر اجاز ت دیں گے تو وہ ایک دن میں روڈ کھول دیں گے۔ڈپٹی کمشنر پونچھ راہل یادو نے رابطہ کرنے پر بتایاکہ ابھی تک ان کے پاس حکومت کی طرف سے کوئی ایڈائوئزری نہیں آئی ہے تاہم جیسے ہی احکامات ملیں گے تو وہ مغل شاہراہ کو فوری طور پر کھول دیں گے ۔راجوری اور پونچھ کے کئی لوگ اس وقت کشمیر میں درماندہ ہیں جبکہ اسی طرح سے کشمیر کے کچھ لوگ راجوری پونچھ میں پھنسے ہوئے ہیں جن کا مطالبہ ہے کہ مغل شاہراہ کو فوری طو رپر ٹریفک کیلئے کھول دیاجائے ۔ اسی طرح سے کئی مریضوں،طلباء اور ملازمین کو بھی شاہراہ کے کھلنے کا انتظار ہے ۔
 

تازہ ترین