زلزلہ2005 | کرناہ میں کئی تباہ شدہ سکول ہنوز تشنۂ تکمیل

تاریخ    31 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(فائل فوٹو)

اشفاق سعید
 کرناہ //سرحدی علاقہ کرناہ میں2005کے تباہ کن زلزلے بعد آج تک سکولوں کی تعمیرتشنۂ تکمیل ہے بلکہ یہ سکول اب کتوں یا پھر لوگوں کے مویشیوں کی آماجگاہ بنے ہوئے ہیں ۔2005کے تباہ کن زلزلے کو ہوئے 15سال کا عرصہ گزر گیا لیکن کئی سکولوں کو تعمیر کرنے میں ہنوز لیت و لعل کیا جارہا ہے۔ مڈل سکول اپرنہچیاں ، مڈل سکول جبڑی بجلدار ، مڈل سکول بیاڑی ، مڈل سکول دھنی پر 2006اور2007میں کام شروع کیا گیا بلکہ زرِ کثیر بھی خرچ کیا گیا لیکن پھر اچانک کام ٹھپ ہوگیا۔ان سکولوں کی نہ کھڑکیاں ہیں اور نہ دروازے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ سکول اب کتوں اور مویشوں کی آماجگاہ بنے ہوئے ہیں۔لوگوں کا کہنا ہے کہ اب ان کی تعمیر وتجدید کی طرف کوئی دھیان نہیں دیاجارہا ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ڈیولپمنٹ فنڈ سکیم کے تحت کروڑوں روپے ملے تو پھر سکول تعمیر کیوں نہیں ہوپائے ؟ محکمہ آر اینڈ بی اورمحکمہ تعلیم نے کہا کہ انہوں نے فنڈس کیلئے اعلیٰ حکام سے رجوع کیا ہے ۔مقامی آبادی نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس اہم معاملے کی جانب خصوصی توجہ دی جائے۔
 

محکمہ تعلیم کے ’کنٹنجنٹ پیڈ‘ملازمین کو مستقل کیا جائے:کانگریس

سرینگر//کانگریس نے محکمہ تعلیم کے کنٹنجنٹ پیڈملازمین کی مستقلی کا مطالبہ کیا ہے۔ کانگریس کے نائب صدر عبدارشید ڈار اور محمد انور بٹ نے حکومت کی توجہ محکمہ تعلیم میں کئی برسوں سے مشروط ادائیگی(کنٹنجنٹ پیڈ) پر کام کرنے والے ملازمین کی مستقلی کی طرف مبذول کراتے ہوئے کہا کہ ان کی مستقلی پر غور نہیں کیا جا رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ ملازمین کافی عرصہ  سے خاکروبوں اور چوکیداروں کی حیثیت سے کام کر رہے ہیں،تاہم ایسا لگ رہا ہے کہ حکومت اُن کی مستقلی کو زیر غور نہیں لارہی ہے۔کانگریس کے دونوں نائب صدور کا کہنا تھا کہ اپنی خدمات بہتر طریقے سے انجام دینے کے باوجود بھی سال2017سے ان ملازمین کو تنخواہوں سے محروم رکھا گیا ہے،جو ان کی حوصلہ شکنی ہے۔انہوں نے حکام سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر ان ملازمین کی تنخواہوں کو واگزار کیا جائے تاکہ انکے اہل و عیال کو نان شبینہ کا محتاج نہ ہونا پڑے۔انہوں نے کہا کہ یہ ملازمین اسکولوں کی صفائی بھی کرتے ہیں،جبکہ انہوں نے انتخابی ڈیوٹیوں کو بھی وقت وقت انجام دیا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت فوری طور پر مشروط ادائیگی(کنٹنجنٹ پیڈ) پر کام کرنے والے ملازمین کی مستقلی کو زیر غور لائے۔
 

تازہ ترین