جی 20 کا متاثرممالک کیلئے14ارب ڈالر امداد کا اعلان

تاریخ    31 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


یو این آئی
لندن // جی 20 نے کرونا وائرس کے شکار ممالک کو 14 ارب ڈالرز کی امداد دینے کا فیصلہ کرلیا۔العربیہ کے مطابق سعودی سعرب کے زیرِ صدارت جی 20 ممالک کا اجلاس ہوا جس میں کرونا وائرس کے شکار ممالک کو 14 عرب ڈالرز کی امداد دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اجلاس میں وبا سے نبردا?زما پسماندہ ممالک کو قرضہ دینے سے متعلق معاملات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اجلاس میں سعودی عرب کی نمائندہ ٹیم کا کہنا تھا کہ ایسے ممالک جو کورناوائرس کیخلاف لڑنے میں وسائل کی کمی کا شکار ہیں، اْن کو 14 عرب ڈالرز کی امداد دی جائے گی۔ممالک کو قرضہ دئیے جانے کے حوالے سیسعودی ٹیم کا کہنا تھا کہ اس فیصلے میں اگر قرض فراہم کرنے والے ادارے اور بینک بھی شامل ہوگئے تو رقم بڑھائی بھی جاسکتی ہے۔واضح رہے کہ کرونا وائرس وبا کے باعث پیدا ہونے والے عالمی معاشی بحران کے نتیجے میں36 ممالک نے قرضوں کی ادائیگی ملتوی کرنے کی درخواستیں دی ہیں۔ادھرعالمی ادارہ صحت اور 37 ممالک نے کورونا وائرس وبا سے لڑنے کے لیے ویکسین، ادویات اور تشخییصی آلات کی عام ملکیت کی اپیل کی اور کہا کہ پیٹنٹ قوانین اس اہم ترین اشیا کی سپلائی میں رکاوٹ ڈال سکتا ہے ترقی پذیر ممالک کے اس اقدام کو زیادہ زیادہ تر تنظیموں بشمول ڈاکٹرز ود آؤٹ بارڈرز کی جانب سے پذیرائی ملی۔ترقی پذیر اور چند چھوٹے ممالک کو خدشہ ہے کہ امیر ممالک کو ویکسین کی تلاش میں وسائل صرف کر رہے ہیں، کامیابی کے بعد اس قطار میں سب سے آگے کھڑے ہوجائیں گے۔کوسٹا ریکا کے صدر کارلوس الوارادو کا کہا تھا کہ ’ویکسینز، ٹیسٹس، ڈائیگنوسٹکس، علاج اور دیگر اہم چیزیں کورونا وائرس سے لڑنے کے لیے اہم ہیں اور انہیں عالمی سطح پر عوام کی بہتری کے لیے دستیاب ہونا چاہیے‘۔ان اقدامات کو سب سے پہلے مارچ میں پیش کیا گیا تھا جس کا مقصد سائنس کے علم، ڈیٹا اور نجی ملکیت کو دنیا بھر کو متاثر کرنے والی وبا کی وجہ سے عام کرنا تھا۔عالمی ادارہ صحت نے اسٹیک ہولڈرز سے اس عمل میں رضاکارانہ طور پر ساتھ دینے کے لیے ’سالڈیرٹی کال ٹو ایکشن‘ جاری کیا۔ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس ادھانوم نے بتایا کہ ’ڈبلیو ایچ او تسلیم کرتا ہے کہ جدت کے لیے پیٹنٹس اہم کردار ادا کرتا ہے تاہم یہ وہ وقت لوگوں کو ترجیح دینے کا۔
 

تازہ ترین