مارچ 2021 تک 2.3 لاکھ کنبوں کو پانی فراہم کیاجائیگا | چیف سیکریٹری کی’ جل جیون مشن‘ کو فوری طور لاگو کرنے کی ہدایت

تاریخ    30 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


نیوز ڈیسک
جموں//چیف سیکرٹری بی وی آر سبھرامنیم نے جموں کشمیر جل جیون مشن کی اپیکس کمیٹی کی پہلی میٹنگ کی صدارت کی ۔ فائنانشل کمشنر خزانہ ،فائنانشل کمشنر صحت و طبی تعلیم ، پرنسپل سیکرٹری محکمہ اطلاعات ، کمشنر سیکرٹری جل شکتی ، سیکرٹری منصوبہ بندی و نگرانی میٹنگ میں موجود تھے ۔ پرنسپل سیکرٹری محکمہ سکولی تعلیم اور حکومت ہند کے پینے کے پانی اور صفائی ستھرائی محکمہ کے نمائندگان نے میٹنگ میں ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے شرکت کی ۔ کمشنر سیکرٹری جل شکتی نے میٹنگ میں جل جیون مشن سے متعلق ایک مفصل پرذنٹیشن پیش کی ۔ جل جیون مشن کے تحت یو ٹی کے 10.3 لاکھ کنبوں کو پینے کا پانی تین مرحلوں میں 10644 کروڑ روپے کی لاگت سے فراہم کیا جا رہا ہے ۔ پہلے مرحلے میں ریاسی، سرینگر اور گاندر بل  کے 2.3 لاکھ کنبوں کو مارچ 2021 تک نل کے ذریعے پینے کا پانی فراہم کیا جائے گا ۔ جبکہ دوسرے مرحلے میں بانڈی پورہ ،ڈوڈہ ، کلگام ، پونچھ ، سانبہ ، اودھمپور اور پلوامہ اضلاع کے 3.8 لاکھ کنبوں کو دسمبر 2021 تک نل کے ذریعے پانی فراہم کیا جائے گا۔ اسی طرح مرحلہ سوم کے تحت اننت ناگ ، بڈگام ، بارہمولہ ، جموں ، کٹھوعہ ، کشتواڑ ، رام بن ، راجوری ، کپواڑہ اور شوپیاں سے 4.1 لاکھ کنبوں کو دسمبر 2022 تک نل کے ذریعے پانی فراہم کیا جائے گا ۔ اپیکس کمیٹی نے جل جیون مشن کا سالانہ ایکشن پلان بھی منظور کیا ۔ جس کے تحت مالی سال 2020-21 کیلئے جموں کشمیر کیلئے جل جیون مشن کے تحت مرکزی حصہ کے طور پر 680 کروڑ روپے کی رقم مختص رکھی گئی ۔ محکمہ کو جل جیون مشن کے تحت کاموں کی فوری عمل آوری کی ہدایت دی گئی تا کہ پروگرام مقررہ مدت سے پہلے ہی مکمل کیا جا سکے ۔ 
 

تازہ ترین