تازہ ترین

جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال کیا جائے: ڈوگرہ صدر سبھا

تاریخ    27 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


یوا ین آئی
جموں// ڈوگرہ صدر سبھا کے صدر و سابق وزیر گلچین سنگھ چاڑک نے مرکزی حکومت سے جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ نیز یونین ٹریٹری انتظامیہ کے سامنے سرکاری دفاتر میں یکساں اوقار کار، دربار مو کی روایت کو ختم کرنے، کشمیر میں جاں بحق ہونے والے فوجیوں کی یاد میں میموریل تعمیر کرنے سمیت متعدد مطالبات رکھے ہیں۔ انہوں نے دھمکی دی ہے کہ جو جماعتیں ان مطالبات کی تائید نہیں کریں گی جموں میں ان کے دفاتر بند ہونے چاہیے۔گلچین سنگھ چاڑک نے منگل کے روز یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا،’’آپ (مرکزی حکومت) نے جموں وکشمیر کا درجہ کم کرکے اس کو ایک ریاست سے یونین ٹریٹری بنا دیا۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ گلگت بلتستان اور پاکستان مقبوضہ کشمیر کو شامل کرکے جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال کیا جائے‘‘۔ انہوں نے کہا،’’تازہ مردم شماری اور نئی حد بندی کرکے آپ یہاں عوامی منتخب حکومت کو بحال کرو۔ جو جماعتیں ان مطالبات کی تائید نہیں کرتی ہیں ان کے دفاتر یہاں بند ہونے چاہیے‘‘۔موصوف نے جموں وکشمیر کے دفاتر میں یکساں اوقات کار کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا،’’یہاں کے سبھی سرکاری دفاتر کے اندر یکساں اوقات کار ہونے چاہیے تاکہ لوگوں کے ساتھ انصاف ہو۔ سبھی یونیورسٹیوں کا تعلیمی کلینڈر ایک جیسا ہونا چاہیے۔ دربار مو بند ہونا چاہیے۔ 600 کروڑ روپے سے زیادہ رقم تباہ ہورہی ہے۔ سال بھر دونوں جگہ سکریٹریٹ کام کرنا چاہیے‘‘۔ان کا مزید کہنا تھا،’’کشمیر میں عیدگاہ کے اندر مزار شہدا بنا ہوا ہے۔ لیکن جو پانچ ہزار فوجی شہید ہوئے ہیں ان کی قربانی کو یاد کرنے کے لئے کوئی میموریل نہیں ہے۔ ہم وہاں ایک شاندار میموریل کی تعمیر کا مطالبہ کرتے ہیں‘‘۔ 
 

تازہ ترین