تازہ ترین

کورونا وائرس؛ ایک سالہ کمسن سمیت مزید 40متاثر

جموں کشمیر میں تعداد 1489،جے وی سی بمنہ میں بھی تشخیصی لیبارٹری فعال کی گئی

تاریخ    23 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


پرویز احمد
سرینگر // باپ بیٹے سمیت 3 نانوائیوں اور ایک قصاب کے علاوہ ایک سالہ کمسن بچے سمیت مزید 40افراد کے نمونے مثبت پائے گئے ہیں۔ اس طرح کورونا متاثرین کی تعداد 1489تک پہنچ گئی ہے جن 218 جموں جبکہ 1271کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ جمعہ کو مثبت قرار دئے گئے40افراد میں سے 18 شوپیاں،4سانبہ،3بارہمولہ، 3 کپوارہ، 2اننت ناگ، 2سرینگر، 2 پلوامہ،2راجوری، ایک کولگام، ایک بانڈی پورہ، ایک بڈگام اور ایک کا تعلق پونچھ سے ہے۔ جے وی سی بمنہ میں قائم لیبارٹری سے 16، سکمز صورہ سے 10 اور 7کی رپورٹ سی ڈی اسپتال میں قائم لیبارٹری سے مثبت قرار دیئے گئے ہیں۔ 

جے وی سی بمنہ

جے وی سی بمنہ میں قائم کی گئی نئی لیبارٹری میں جمعہ کو 378نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں 16مثبت جبکہ 362منفی قرار دئے گئے ۔ سکمز میڈیکل کالج بمنہ کے پرنسپل ڈاکٹر ریاض ایتو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’جے وی سی میں قائم کی گئی نئی لیبارٹری میں 500نمونوں کی تشخیص کرنے کی صلاحیت موجود ہے اور پچھلے تین دنوں سے روزانہ مختلف اضلاع سے آنے والے نمونوں کی تشخیص کی جارہی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’  بڈگام کے 166، سرینگر 107 اوربارہمولہ سے بھیجے گئے22 نمونوں کی تشخیص کی گئی ،جو سبھی منفی قرار دئے گئے‘‘۔ ڈاکٹر ریاض ایتو نے بتایا ’’ ضلع شوپیاں سے تشخیص کیلئے ہمارے پاس 83نمونے آئے تھے جن میں سے 16مثبت قرار دئے گئے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ سبھی 16مریضوں کا تعلق چھٹہ واٹ شوپیاں سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان مریضوں میں ایک سالہ کمسن بچہ سمیت 8خواتین اور 8مرد شامل ہے۔ ڈاکٹر ریاض ایتو نے بتایا ’’ ابتک اسپتال میں 199کورونا وائرس مریضوں کا داخلہ ہوا اور ان میں سے 174صحتیاب ہوکر گھر لوٹ گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسپتال میں صحتیاب ہونے والے مریضوں کی شرح 87فیصد ہے جبکہ ابتک صرف دو اموات ہوئی ہیں۔   

سکمز

سکمزمیں 24گھنٹوں کے دوران2088نمونوں کی تشخیص کی گئی اور اُ ن میں سے10مثبت جبکہ2078منفی قرار دئے گئے ہیں۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا’’10 میں سے 3بارہمولہ،3افرادکپوارہ،2شوپیاں، 1سرینگر اور ایک بڑگام سے تعلق رکھتا ہے‘‘  ڈاکٹر جان نے بتایا ’’بارہمولہ کے 3میں سے 2مریضوں کا تعلق ہرد ہ چلو ہندوارہ اور ایک کا تعلق رفیع آباد سے ہے۔ ڈاکٹر فاروق نے مزید بتایا ’’ کلتورہ ہندوارہ سے ایک، ہائیہامہ کپوارہ سے ایک اور چھون لولاب سے ایک کی رپورٹ مثبت آئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ضلع اسپتال شوپیاں کی جانب سے بھیجے گئے نمونوں میں سے2مثبت قرار دئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ شوپیان کے میمندر گائوں میں ایک نانوائی اور ایک قصاب بھی مثبت پائے گئے۔ انہوں نے کہا کہ سی ایم او سرینگر کی طرف سے بھیجے گئے نمونوں میں سے حیدر پورہ سرینگر  اورشیخ پورہ بڈگام سے تعلق رکھنے والے دو افرادکی رپورٹ مثبت قرار دی گئی۔ انسٹی ٹیوٹ کے شعبہ عوامی رابطہ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی جانب سے جاری کئے گئے اعدادوشمار میںبتایا گیا ہے کہ ابتک کل468مشتبہ مریضوں کا داخلہ کیا گیا جن میں سے406مریضوں کو قرنطینہ کی مدت مکمل کرنے کے بعد گھر روانہ کردیا گیا جبکہ49مثبت قرار دئے گئے مریضوں کو گھر بھیجا گیا ہے۔ ابتک45252نمونوں کی تشخیص کی گئی ہے جن میں سے35826کو منفی قرار دیا گیا ہے جبکہ644مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں ہیں۔  انہوں نے کہا کہ ابتک 8782نمونوں کی تشخیص ہونا ابھی باقی ہے۔   

سی ڈی اسپتال

سی ڈی اسپتال میں قائم لیبارٹری میں756نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں7  مثبت قرار دئے گئے جبکہ749کی رپورٹیں منفی آئیں ۔ میڈیکل کالج ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے بتایا’’7میں سے2کا تعلق پنگلنہ پلوامہ،ایک 85سالہ خاتون قاضی گنڈ کولگام، 2اننت ناگ اور ایک حاملہ خاتون کا تعلق بانڈی پورہ سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ بانڈی پورہ سے تعلق رکھنے والے حاملہ خاتون ہائی بلڈ پریشر اور خون کی کمی کی وجہ سے علیل ہے۔ 

 حکومتی بیان

حکومت نے کہا ہے کہ پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے40نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے33کا تعلق کشمیر صوبے سے اور7 کا تعلق جموں صوبے سے ہیں اور اس طرح مثبت معاملات کی کل تعداد1489تک پہنچ گئی ہے۔صحت بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے1489 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے749سرگرم معاملات ہیں ۔ اب تک720اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاور20اَفراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔اِس دوران جمعرات کو مزید36مزید مریض صحتیاب ہوئے۔ اب تک114859ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے 22؍مئی 2020ء کی شام تک 113370نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اب تک128517افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ ان میں32077 اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ73 اَفراد کو ہسپتال قرنطین میں رکھا گیا ہے۔749کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ25132اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح70466اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔ ضلع بانڈی پورہ میں اب تک138 مثبت معاملات سامنے آئے ہیںجن میں سے8سرگرم معاملات ہیں ، 129مریض صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ سری نگر میں اب تک کورونا وائرس کے176 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے71 سرگرم معاملات ہیں ۔99 مریض صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ06 کی موت واقع ہوئی ہے۔اننت ناگ میں266 مثبت معاملے سامنے آئے ہیںاور180 سرگرم ہیں۔99 شفایاب ہوئے ہیں اور4 کی موت واقع ہوئی ہے۔ضلع بارہمولہ میں اب تک کورونامریضوں کی تعداد 132ہوئی ہیں جن میں سے37سرگرم معاملات ہیں اور4مریضوں کی موت واقع ہوئی ہیںاور91صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع شوپیان میں 127 مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں37 سرگرم ہیں اور102صحتیا ب ہوئے ہیںجبکہ کپواڑہ میں128مثبت معاملات درج کئے گئے ہیں اور79 سرگرم معاملات ہیں اور49صحتیاب ہوئے ہیں۔ضلع بڈگام میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی کُل تعداد اب تک63ہوئی ہیںجن میں سے 30سرگرم ہیں اور30اَفراد صحتیاب ہوئے ہیںجبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے ۔گاندربل میں کل 27مثبت معاملات سامنے آئے ہیں جن میں10 سرگرم معاملات ہیں اور 15 اَفراد شفایاب ہوئے ہیں۔اِدھرکولگام میں193مثبت معاملات پائے گئے ہیںجن میں180سرگرم معاملات ہیںاور12صحتیاب ہوئے ہیںاور ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔پلوامہ ضلع میں21 معاملات کی تصدیق ہوئی ہے جن میں12 سرگرم معاملات ہیں اور9 صحتیاب ہوئے ہیں۔ اسی طرح  جموں میں وائر س کے68مثبت معاملات پائے گئے ہیں جن میں36سرگرم معاملات ہیں اور35  صحت یاب ہوئے ہیںاور ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ اودھمپور ضلع میں اب تک کورونا مریضوں کی کُل تعداد33 ہوئی ہیں جن میں سے11معاملات سرگرم ہیں۔ 19صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔ٔ ضلع سانبہ میں20مثبت معاملے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں13سرگرم معاملات ہیں اور 7اَفراد شفایاب ہوئے ہیںاورراجوری ضلع میں کورونا کے اب تک8مریض پائے گئے ہیںجن میں 4 معاملے سرگرم ہیں اور 4مریض شفایاب ہوئے ہیں جبکہ کٹھوعہ میں40مثبت معاملہ سامنے آئے ہیںجن میں36 سرگرم معاملات ہیںاور ایک صحتیاب ہوا ہے۔ کشتواڑ میں 7 مثبت معاملے سامنے آئے ہیں جن میں6 معاملہ سرگرام ہے اورایک پوری طرح سے صحتیاب ہوا ہے جبکہ رام بن میں30 معاملات سامنے آئے ہیںجن میں 29 سرگرم معاملات ہیں اورایک شفایاب ہواہے اورریاسی میں بھی4 معاملات سامنے آئے ہیں جن میں3 سرگرم ہیں اور ایک شفایاب ہوا ہے۔
 

شوپیان اور پلوامہ میں تشویش کی لہر

۔3نانوائی اور قصاب کورونا سے متاثر

شاہد ٹاک
 
 شوپیان//شوپیان اور پلوامہ میں تین نانوائی اور ایک قصاب کا کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد کئی علاقوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ جمعہ کو ضلع شوپیان میںچھٹہ وٹن ویہل گائوں کے 16افراد مثبت پائے گئے۔اسکے علاوہ میمندر اور پالپورہ  کے مزید 2افراد بھی متاثر پائے گئے جن میں سے ایک قصائی اور دوسرا نانوائی ہے۔مقامی لوگوں کے مطابق یہ دونوں افراد شب قدر اور پچھلے کئی دنوں سے اپنا کام کررہے تھے اور دونوںکے دکانوں کے پاس لوگوں کی کافی بھیڑ رہا کرتی ہیں۔ خدشہ ظاہر کیا جارہاہے کہ دونوں افراد کے متاثر ہونے کی وجہ انکی دکانوں پر جانے والا کوئی متاثر گاہک ہوسکتا ہے۔ادھر پلوامہ کے پنگلنہ گائوں میں نانوائی باپ بیٹا بھی متاثر ہوئے ہیں۔جمعہ کو بیکری فروشوں سے نمونے لئے گئے تھے جن میں سے دونوں باپ بیٹے کے نمونے مثبت قرار دیئے گئے ہیں۔غور طلب ہے کہ دونوں کوبھی کسی گاہک سے وائرس منتقل ہوگیا ہے۔باپ بیٹے کی دکان پر پچھلے کئی روز سے لوگوں کا بھاری رش رہتا تھا۔
 

جموں کشمیر میں720صحت یاب

صرف749زیر علاج

پرویز احمد
 
 سرینگر // جمعہ کو مختلف اسپتالوں میں زیر علاج مزید 36کورونا وائرس مریضوں کو صحتیاب ہونے کے بعد گھر بھیج دیا گیا۔  جموں و کشمیر میں کل 1489کورونا وائرس مریضوں میں سے 720صحتیاب ہوگئے ہیں۔ اس طرح فی الوقت صرف 749اسپتالوں کے ائیسولیشن وارڈوں میں زیر علاج ہیں۔جمعہ کو اننت ناگ سے 20، بڈگام سے 5،4شوپیاں، 2کولگام، 2سرینگر اور بانڈی پورہ ، کپوارہ اور سانبہ سے تعلق رکھنے والے 3متاثرین کی قرنطین مدت مکمل ہوئی جس کے بعد انہیں نمونے منفی آئے اور انہیں گھر روانہ کیا گیا۔جمعہ کو صحتیاب ہونے والے 36افراد میں جے وی سی سرینگر سے صحتیاب ہونے والے 11مریض بھی شامل ہیں۔ جے وی سی  میں ابتک 199مریضوں میں سے 174صحتیاب ہوئے ہیں ‘‘۔ابتک اسپتال میں لائے گئے کورونا وائرس مریضوں کی صحتیابی کی شرح87فیصد ہے۔ 
   

جموں وکشمیر میں اب کوروناکی تشخیص میں تیزی آئے گی 

جی ایم سی جموں، سرینگر اور سکمز کو مشینیں فراہم ہونگی

سید امجد شاہ 
 
جموں //کورونا وائرس کے بڑھتے معاملات کو دیکھتے ہوئے جموں وکشمیر کے تین ہسپتالوں جی ایم سی جموں ، جی ایم سی سرینگر اور سکمز صورہ کو آٹومیٹک COBAS-6800مشینیں فراہم ہوںگی جن کی خریداری کیلئے محکمہ صحت نے حکم دے دیاہے ۔ان مشینوں سے کورونا کی تشخیص کے عمل میں تیزی آئے گی ۔جموں وکشمیر میڈیکل سپلائز کارپوریشن کے منیجنگ ڈائریکٹر ڈاکٹر یشپال شرما نے بتایا’’ان مشینوں کی تنصیب سے روزانہ ٹیسٹ کی صلاحیت 1400سے بڑھ کر 2900تک پہنچ جائے گی۔ انہوں نے بتایاکہ اسی طرح سے بارہمولہ ، اننت ناگ ،ڈوڈہ ، کٹھوعہ اور راجوری کے میڈیکل کالجوں و ہسپتالوں میں بھی TRUNATمشینیں دی جائیں گی جس سے ان ہسپتالوں میں بھی تشخیصی عمل تیز ہوجائے گا۔اسی طرح سے RtPCRاورRNAایکسٹراکشن مشینوں کی تنصیب سے سکمز ہسپتال ، کالج و ہسپتال بمنہ سرینگر میں یومیہ تشخیصی صلاحیت 500سے بڑھ کر 1000ہوجائے گی ۔وہیں جی ایم سی سرینگر میں erPCRاورRNAایکسٹراکشن مشینوں کی مدد سے یہ صلاحیت 1000سے بڑھ کر یومیہ 2000ہوئی جو COBAS-6800مشین کی تنصیب سے بڑھ کر 3500ہوجائے گی۔سکمز صورہ میں آر این اے مشینوں سے یومیہ ٹیسٹنگ کی صلاحیت 2000سے 3000ہوئی ہے جو COBASمشین کی تنصیب سے بڑھ کر 4500ہوجائے گی ۔ڈاکٹر یشپال شرما کے مطابق ’’ہم نے مناسب مقدار میں وائرل ٹرانسپورٹ میڈیم (VAT)کو ہر جگہ تقسیم کیاہے اور فیلڈ میں اس کا وافر سٹاک موجود ہے ، ہم نے 1.70وی ٹی ایم تقسیم کردیئے ہیں جبکہ 1لاکھ سٹاک میں موجود ہیں ‘‘۔انہوں نے بتایاکہ وی ٹی ایم ایک خصوصی سولوشن ہے جو نمونے حاصل کرنے، ان کی منتقلی، برقراری اور طویل مدت تک کلینک میں رکھنے کیلئے مناسب ہے۔