تازہ ترین

کشمیری پنڈتوں کا وفدلیفٹنٹ گورنر سے ملاقی | حقِ شہریت قانون میں تبدیلی تاریخی سنگِ میل قرار

22 مئی 2020 (00 : 03 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
جموں//کشمیری پنڈت برادری کی مختلف تنظیموں کے نمائندگان بشمول کشمیری پنڈت ویلفئیر آرگنائیزیشن اور آل پارٹیز مائیگرنٹ کوارڈی نیشن کمیٹی راج بھون میں لفٹینٹ گورنر گریش چندر مرمو سے ملے اور جموں کشمیر میں نئے حقِ شہریت قانون کو متعارف کرنے کیلئے حکومت ہند اور یو ٹی انتظامیہ کے تئیں اظہارِ تشکر کیا ۔ ڈیلی گیشن کے ارکان نے جموں کشمیر کے نئے حقِ شہریت کے قانون کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہا کہ دفعہ 370 اور دفعہ 35 اے جو کہ ترقی میں رکاوٹ کا باعث تھے کو ہٹانے سے یو ٹی تعمیر و ترقی کی نئی اونچائیوں کو چھوئے گی ۔ ڈیلی گیشن ارکان کے ساتھ تبادلہ خیال کرتے ہوئے لفٹینٹ گورنر نے کہا کہ نیا حقِ شہریت قانون جموں کشمیر اور اس کے عوام کی مساوی متوازناور کلہم ترقی کو یقینی بنائے گا ۔ کشمیری پنڈت ویلفئیر آرگنائیزیشن کے وفد ،جس کی سربراہی ڈاکٹر کے این پنڈتا کر رہے ہیں ، کے ارکان سابق ایم ایل سی سریندر امباردار اور جی ایل رینہ صدر کشمیر پنڈت سبھا جموں کے کے کھوسہ اور دیگر سماجی کارکن ہیں ۔ انہوں نے کشمیری پنڈت طبقے کو درپیش مختلف بہبودی معاملات بشمول ووٹنگ عمل کو آسان بنانے ، پی ایم پیکج کے تحت بھرتی عمل میں سرعت لانے اور مائیگرنٹ ملازموں کیلئے عارضی قیام گاہوں کی فراہمی کے معاملات اٹھائے ۔ مندروں کے تحفظ کے معاملے کا جائیزہ لینے کے دوران لفٹینٹ گورنر نے کہا کہ حکومت نے پہلے ہی مندروں اور شردھالوؤں کے تحفظ کو یقینی بنانے کا معاملہ انتظامیہ کے زیر غور ہے ۔ دریں اثنا آل پارٹیز مائیگرنٹ کوارڈینیشن کمیٹی ونود پنڈتا کی سربراہی میں 1.75 لاکھ روپے کی مالیت کا چیک لفٹینٹ گورنر کو پی ایم کئیرس فنڈ کیلئے بطور عطیہ پیش کیا ۔ کمیٹی کے دیگر ارکان سابق چیف سیکرٹری اور سابق ایم ایل سی وجے بقایا اور سابق ڈی جی پی کلدیپ کھڈا ہیں ۔ لفٹینٹ گورنر نے وفد کے ارکان کو یقین دلایا کہ حکومت ہند اور یو ٹی حکومت جموں کشمیر کے تمام مسائل کے ازالہ کیلئے وعدہ بند ہے ۔