مزید خبریں

تاریخ    19 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


نیو ڈیسک

’شب قدر،جمعتہ الوداع اورعید الفطر پر مذہبی اجتماعات نہیں ہوں گے‘

 بصیر خان کی ڈپٹی کمشنروں ، سی ایم اوز کے ساتھ ویڈیو کانفرنس 

 جموں//جموں کشمیرمیں شب قدر،جمعتہ الوداع اور عید الفطر کے موقعہ پر مذہبی اجتماعات کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔اس بات کااظہار لیفٹینٹ گورنر کے مشیربصیراحمدخان نے  ڈپٹی کمشنروں ، چیف میڈیکل آفیسروں ، ڈائریکٹر سکمز سری نگر اور ڈائریکٹر سکمز بمنہ کے ساتھ کووِڈ۔19 وَبا کے مزید پھیلائو پر روک لگانے کے لئے اُٹھائے جارہے اقدامات اور متعلقہ ضلع انتظامیہ اور محکمہ صحت کی تیاریوں کا جائزہ لینے کے لئے ایک ویڈیو کانفرنس کے دوران کیا۔میٹنگ میں آئی جی کشمیر ، ڈائریکٹر محکمہ صحت کشمیر ، پرنسپل جی ایم سی اور ڈائریکٹر ائیرپورٹ سری نگر موجود تھے۔دوران میٹنگ مشیر نے کہا کہ کووِڈ۔19وَبا کے پھیلائو پر روک لگانے کے لئے اِنتظامی اور علاج و معالجہ پروٹوکال پر توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت ہے ۔قرنطین عمل پر زور دیتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ ملک کے مختلف حصوں سے آنے والے لوگوں کا ٹیسٹ کرنا لازمی ہے اور ایسے اَفراد کو گھریلو قرنطین کے لئے بھیجنا اہم ہے۔مشیر موصوف نے کہا کہ ڈاکٹر ، نیم طبی عملہ ،پولیس اور ضلع انتظامیہ کے افسران اور ملازمین فرنٹ لائین ورکر ہیں۔اُنہوں نے محکمہ صحت کشمیر کو تمام فرنٹ ورکروں کو معقول تعداد میں حفاظتی گیئر فراہم کرنے کے لئے کہا ۔اُنہوں نے ڈپٹی کمشنروں کو ساٹھ برس سے زائد عمراور دائمی بیماریوںمیں مبتلا مریضوں کی فہرست مرتب کرنے کے لئے کہا۔اُنہوںنے انتظامی افسروں کو اِن دو زمروں کے افرادکی معقول نگہداشت کی ہدایت دی تاکہ یہ لوگ اس وائرس سے متاثرہ نہ ہوسکے۔انہوں نے ریڈ اور دیگر زونوں میں اشیائے ضروریہ کی ہوم ڈیلیوری یقینی بنانے کے لئے بھی ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی۔ڈائریکٹرمحکمہ صحت کشمیر نے کہا کہ وادی میں پی پی ٹی ، سینٹائزوں اور دستانوں کی کوئی قلت نہیں ہے اور طبی عملے کے لئے حفاظتی گیئر بھی وافر مقدار میں دستیاب ہے۔اننت ناگ میں پولیس افسران کا کووڈ۔19مثبت نتیجہ سامنے کے ضمن میں مشیر موصوف نے ڈپٹی کمشنروں کو ضلع پولیس لائینوں میں بھی ٹیسٹ کرنے کی بھی ہدایت دی۔اُنہوں نے پرنسپل جی ایم سی کو پولیس کنٹرول روم سری نگر میں پول ٹیسٹنگ کرنے کی ہدایت دی۔شب قدر ، جمعۃ الوداع او رعید پیش نظر بصیراحمد خان نے ڈپٹی کمشنروںکو سماجی دوری بنائے رکھنے کے قواعد و ضوابط کو سختی سے لاگو کرنے کے لئے کہا ۔اُنہوں نے کہا کہ شب قدر ، جمعۃ الوداع اور عید کے موقعوں پر مذہبی اجتماعات کی اجازت نہیں دی جائے گی۔اُنہوں نے ضلع انتظامیہ کو اِس ضمن میں مذہبی رہنمائوں ، معزز شہریوں کے ساتھ میٹنگیں کرنے کے لئے کہا۔این آر ای جی اے ، جے کے پی سی سی ، آر اینڈ بی ، جل شکتی اور دیگر محکموں کے تحت کام شروع کرنے پر بھی مشیر نے زور دیااور ترقیاتی سرگرمیوں کے دوران سماجی دوری بنائے رکھنے سے متعلق کامگاروں کو جانکاری دینے کی بھی متعلقہ ضلع انتظامیہ کو ہدایت دی۔
 
 

نصراللہ پوہ واقعہ کی تائیدنہیں کرتا:دلباغ سنگھ

’گنہگار گھروں میں بیٹھے یاباہر،اُن کو ضرور پکڑ اجائیگا‘

سرینگر//جموں کشمیر پولیس سربراہ کے دلباغ سنگھ نے کہا ہے کہ وہ بڈگام کے نصراللہ پورہ علاقے میں ایک ڈی ایس پی کے زخمی ہونے کے بعد پولیس کی طرف سے کی گئی توڑ پھوڑ کی تائید نہیںکرتے۔ انہوں نے کہا کہ اس نوعیت کے واقعات رونما نہیں ہونے چاہئے اور آئندہ احتیاط سے کام لیا جانا چاہئے۔ نصر اللہ پورہ بڈگام میں گذشتہ ہفتے پولیس اور لوگوں کے درمیان ہوئی جھڑپ کے دوران ایک ڈی ایس پی زخمی ہوئے تھے۔بعد ازاں پولیس نے دوران شب گاؤں میں گھس کر مکانوں، دکانوں اور دیگر املاک کی توڑ پھوڑ کی تھی جس کی سوشل میڈیا پر مختصر ویڈیوز بھی وائرل ہوئی۔ لوگوں نے پولیس پر مکینوں کو زد کوب کرنے کا بھی الزام عائد کیا ہے۔ پولیس سربراہ نے ایک انٹرویو میں نصراللہ پورہ بڈگام میں پیش آئے اس واقعے کے بارے میں کہا’’یہ بات میری نوٹس میں آئی ہے اور میں نے بتایا کہ اس قسم کے واقعات نہیں ہونے چاہئے اور ہمیں اشتعال سے کام نہیں لینا چاہئے ‘‘۔انہوں نے کہا کہ میں پولیس کی طرف سے کی گئی توڑ پھوڑ کی تائید نہیں کرتا ہوں ایسا نہیں ہونا چاہئے اور آئندہ احتیاط کیا جانا چاہئے۔یہ پوچھے جانے پر کہ اس گاؤں کے لوگ گھر واپس جانے میں ڈر محسوس کررہے ہیں، کے جواب میں موصوف پولیس سربراہ نے کہا’’جو لوگ بے گناہ ہیں وہ گھروں میں بیٹھ سکتے ہیں لیکن جو گنہگار ہیں وہ گھروں میں بیٹھے یا باہر ان کو ضرور پکڑ لیا جائے گا‘‘۔
 
 

ریڈیو ٹیکسی سروس متعارف کی جائے گی: سامون 

 روڈ سیفٹی فنڈ کے تحت 10کروڑ روپے کی رقم واگزار ہوگی 

سری نگر//پبلک ٹرانسپور ٹ نظام کو مستحکم بنانے کے لئے حکومت جموںوکشمیر یونین ٹریٹری میں اولا اور اوبر ریڈیو ٹیکسی خدمت متعارف کر رہی ہے۔ا س کا اظہار پرنسپل سیکرٹری ٹرانسپور ٹ اصغر سامون نے انسٹی چیوٹ آف ڈرائیونگ ، ٹریننگ اینڈ ریسرچ کوٹ بلوال اور بڈگام میں قائم کرنے کے لئے جاری انتظامات کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ میٹنگ میں کیا۔میٹنگ میں ہارون سری نگر اور سانبہ جموں میں انسپکشن اینڈ سرٹیفکیشن سینٹر ( آئی سی سی ) کے قیام کے لئے اُٹھائے جارہے اقدامات کا بھی جائزہ لیا۔ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے کہا کہ ریڈیو ٹیکسی سروس کو متعارف کرنے سے پبلک ٹرانسپورٹ نظام مزید مستحکم ہوگا۔یہ خدمت نہ صرف مسافروں کے لئے بہتر اور محفوظ ٹرانسپورٹ سہولیت کی فراہمی یقینی بنائے گی بلکہ اس کو متعارف کرنے سے مقامی لوگوں کے لئے روز گار کے مواقع بھی پیدا ہوں گے ۔اُنہوں نے کہا کہ اولا اوبرا کے طرز پر گوگل ایپ کے ذریعے کام کرنے والی اِس خدمت میں تکنیکی ماہرین ، ڈرائیوروں ، ٹیکسی اور آٹو رکشا مالکان کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔ اُنہوں نے کہا کہ ٹیکسی سروس کے قواعد و ضوابط پہلے ہی مشتہر کئے گئے ہیں اور جموںوکشمیر میں اس خدمت کو متعارف کرنے کے لئے متعلقہ اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔دوران میٹنگ ایس آر ٹی سی کی انتظامیہ کو نئی بشمول الیکٹرک بسوں کے حصول کا عمل بغیر اِلتوأ کے شروع کرنے کی ہدایت دی گئی۔پرنسپل سیکرٹری نے ایس آر ٹی سی انتظامیہ کو گریز ، لداخ اور دیگر دُور دراز علاقوں کے لئے بس سروس شروع کرنے کے لئے کہا تاکہ مسافروں کو بہتر ٹرانسپورٹ سہولیت بہم رکھی جاسکے۔دوران میٹنگ سامون نے متعلقہ حکام کو زیر عمل پروجیکٹوں میں سرعت کے لئے کہا اور کوٹ بلوال اور سانبہ جموں میں آئی ڈی آر ٹی اور آئی سی سی پر اِلتوأ میں پڑے کام کو رواں برس کے ماہ جون تک مکمل کرنے کی ہدایت دی۔اُنہوں نے سری نگر اور بڈگام ضلع انتظامیہ کو بڈگام میں آئی ڈی آر ٹی اور ہارون میں آئی سی سی پروجیکٹوں پر فوری طور کام شروع کرنے کے لئے کہا ۔سامون نے دوران میٹنگ روڈ سیفٹی فنڈ پر مفصل جائزہ لیتے ہوئے تمام حفاظتی سازو سامان بشمول گزشتہ سال خریدی گئی 110موٹر بائیکوں سمیت معقول مقامات پر تعینات کرنے کے لئے کہا۔اُنہوں نے کہا کہ روڈ سیفٹی فنڈ کے تحت 10کروڑ روپے کی رقم واگزار کی جارہی ہے جو 50 لاکھ روپے فی ضلع کے حساب سے یوٹی کے ڈپٹی کمشنروں کو روڈ سیفٹی منیجمنٹ کے لئے فراہم کئے جائیں گے ۔ اُنہوں نے جموں وکشمیر میں سڑک حادثات سے بچائو کے لئے کیمروںاور دیگر لازمی آلات کی تنصیب پر خطرمقامات کی نشاندہی اور راڈار کو استعمال کرنے کی بھی متعلقہ حکام کو ہدایت دی۔ میٹنگ میں ٹرانسپورٹ کمشنر ، ایم ڈی ایس آر ٹی سی، ڈائریکٹر ایس ایم جی ،سی ای آر اینڈ بی، ڈی سی بڈگام ، ڈائریکٹر فائنانس ٹرانسپورٹ ، جموں ، کٹھوعہ ، کشمیر کے آر ٹی اوز ، ایس ایس پی ٹریفک جموں ، اے ڈی سی سری نگر ، ایڈیشنل سیکرٹری روڈ سیفٹی کونسل ، سانبہ اور بڈگام کے اے آر ٹی اوز اور دیگر متعلقہ افسران موجود تھے۔
 
 

 ہنرمندں کی حالت زارپر نیشنل کانفرنس کو تشویش

راحت سانی کیلئے فوری اقدامات کرنے کا مطالبہ

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے دستکار طبقہ کی حالت زار پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ شعبہ صدیوں سے ایک وسیع آبادی کے روزگار کا ذریعے رہا ہے لیکن گزشتہ کچھ برسوں کے حالات و واقعات اور اب کورونا وائرس سے پیدا شدہ صورتحال سے یہ شعبہ دم توڑنے کی دہلیز پر پہنچ گیا ہے کیونکہ اس سے منسلک کاریگر اورہنر مند مجبوراً دوسرے کاموں کی طرف راغب ہورہے ہیں۔ پارٹی کے سینئر لیڈر و سابق وزیر مبارک گل، نائب صدر صوبہ محمد سعید آخون، وسطی زون صدر علی محمد ڈار، ضلع صدر سرینگر پیر آفاق احمد اور سینئر لیڈر عرفان احمد شاہ نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں دستکاری شعبے سے وابستہ افراد کیلئے خصوصی پیکیج کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ طبقہ گذشتہ کئی برسوں سے مصائب و مشکلات سے دوچار ہے۔2014کے سیلاب کی تباہ کاریوں کے بعد اگرچہ اس طبقہ سے وابستہ افراد نے پھر سے اپنے پیروں پر کھڑا ہونے کی کوشش کی لیکن 2016سے شروع ہوئی بے چینی اور 2017میں جی ایس ٹی لاگو کرنے اور آج تک مسلسل غیر یقینی صورتحال کی وجہ سے جموں وکشمیر کا محنت کش  طبقہ افلاس اور غربت کے شکنجوں میں بری طرح پھنس گیا ہے اور بیشتر نان شبینہ کے محتاج بن گئے ہیں یا بننے کی دہلیز پر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سوزنی، قالین بافی، شال سازی، نمدہ اور گبہ ، رفل اور پٹو ،آری، کریول ، ووڈ کارونگ، پیپر ماشی، سنگتراشی اور دیگر کاموں کیساتھ منسلک کنبے اس وقت بہت ہی زیادہ کسمپرسی کی حالت میں ہیں۔ حکومت کو اس طبقے کی فلاح و بہبود اور راحت رسانی کیلئے ٹھوس اور کارگر اقدامات اُٹھانے چاہئیں۔
 
 

بانڈی پورہ میں فاریسٹ پرٹیکشن افسر کازدکوب

معاملہ ڈپٹی کمشنر کی نوٹس میں لایا گیا 

سرینگر//عازم جان//بانڈی پورہ میں پولیس نے محکمہ جنگلات کے ایک ملازم کو زدکوب کرکے زخمی کردیا۔ادھرمحکمہ جنگلات کے حکام نے اس واقعہ کو ضلع کے ڈپٹی کمشنر کی نوٹس میں لایاہے۔تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ اُس وقت پیش آیا جب فاریسٹ پروٹیکشن فورس افسرفیاض احمد گنائی فیلڈ میں کام انجام دینے کے بعد اپنے دفتر جارہا تھا کہ اس دوران کلوسہ پل پر موجود پولیس اہلکاروں نے اُسے روکااور اس سے پوچھ تاچھ کی۔بتایا جاتا ہے کہ اس سے قبل کہ فاریسٹ پروٹیکشن افسرکچھ وضاحت کرتا،پولیس اہلکاروں نے اس کی مارپیٹ شروع کی ،جس کی وجہ سے وہ شدیدزخمی ہوگیا۔زخمی اہلکارکو بعد میں اسپتال لیجایا گیا۔ادھر ڈپٹی ڈائریکٹر فاریسٹ پروٹیکشن فورس بانڈی پورہ نے بتایا کہ انہوں نے اس معاملے کو ڈپٹی کمشنر کی نوٹس میں لایا ہے۔ 
 
 

روزانہ اجرتوں پر کام کرنے والوں کی زبوں حالی پرقیوم وانی کوتشویش

سرینگر//ملازمین کی انجمن کے سابق صدر اور سول سوسائٹی ممبر عبدالقیوم وانی نے روزانہ اُجرتوں پر کام کرنے والے مختلف زمروں کے ملازمین کی زبوں حالی پر تشویش کااظہار کیاہے ۔ایک بیان میں عبدالقیوم وانی نے کہا کہ  کم اُجرت پر کام کرنے والے ان ملازمین کو کئی کئی ماہ تک تنخواہوں سے محروم رکھاجاتا ہے جو ویجس ایکٹ کی سراسر خلاف ورزی ہے ۔انہوں نے کہا کہ نہ تو ان کو مستقل کیا جاتا ہے اورنہ ہی وقت پر تنخواہ دی جاتی ہے ۔وانی نے کہا کہ ان ملازمیں کے ساتھ بندھوا مزدوروں جیسا سلوک کیا جاتا ہے۔وانی نے مزیدکہا کہ نیشنل ہیلتھ مشن کے ملازمین کا مستقبل بھی تاریک ہے ۔انہوں نے کہا کہ ان کو مستقل کرنے سے پہلے ہی انکار کیا جاچکا ہے جبکہ یہ لوگ سخت حالات جیسے کووِڈ- 19کی وبائی صورتحال کے دوران صف اول پر کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان ملازمین کو مراعات دیئے جانے چاہیے تھے لیکن ان کو ان کے جائزحقوق سے بھی محروم رکھاجارہا ہے ۔وانی نے ایس آرٹی سی ڈرائیوروںکو بھی حفاظتی لباس مہیا کرنے کا مطالبہ کیاتاکہ وہ کووِڈ19کی وجہ سے درماندہ طلاب ،مزدوروں اور دیگر کولانے لیجانے کے دوران خودمحفوظ رہ سکیں۔
 
 

سوزکالیفٹینٹ گورنر کومکتوب

 درماندہ کشمیریوں کی وادی واپسی کیلئے اقدام کئے جائیں

سرینگر//سابق مرکزی وزیر پروفیسرسیف الدین سوزنے جموں کشمیر کے لیفٹینٹ گورنرگریش چندر مرموپرزوردیا ہے کہ وہ مغربی بنگال میں درماندہ کشمیری لوگوں کی وادی واپسی کیلئے قدم اُٹھائیں۔پروفیسر سوزنے مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی کو بھی اس سلسلے میں آگاہ کرنے کے علاوہ انگریزی روزنامہ ڈیلی ٹیلی گراف کے ایڈیٹرشری راجا گوپال کو بھی مغربی بنگال میں کشمیریوں کی حالت زار کواُجاگر کرنے کی درخواست کی۔ایک بیان کے مطابق پروفیسر سوزنے مغربی بنگال میں کشمیری شال کام گاروں اور مزدوروں سے فون پر بات کی اورانہیں درپیش مشکلات سے آگاہی حاصل کی۔اس دوران حاجی محمدیعقوب اورفردوس احمد نے پروفیسر سوزکوبتایا کہ ان کی انجمن کے ساتھ4000سے زیادہ افراد وابستہ ہیں ۔انہوں نے پروفیسر موصوف کو بتایا کہ کوروناوباء کی وجہ سے پیداشدہ حالات کی وجہ سے بے روزگاری میں اضافہ ہواہے۔انہوں نے بتایا کہ انہیں درپیش مشکلات میں ایک بڑی مشکل گھر پہنچنے کیلئے ٹرانسپورٹ اور دیگر وسائل کی عدم دستیابی ہے جس کی وجہ سے وہ مضطرب ہیں ۔بیان کے مطابق پروفیسرسوز نے جموں کشمیر کے لیفٹینٹ گورنر کو خط لکھ کر اُن سے استدعاکی کہ وہ مگربی بنگال میں درماندہ کشمیریوں کوواپس وادی لانے کیلئے فوری اقدام کریں۔
 
 

گاندربل میں لاک ڈائون کی خلاف ورزی

ٹپر ضبط، 6ڈرائیور گرفتار 

 سرینگر //گاندربل میں لاک ڈائون کی خلاف ورزی کرنے والے چھ ٹپرڈرائیوروں کوپولیس نے حراست میں لیا ہے۔ پولیس  پوسٹ شادی پورہ نے ضلع پولیس سربراہ کی ہدایت پر لاک ڈائون کی خلاف ورزی کرنے والے چھ ٹپر ڈرائیوروں کوگرفتار کرکے ان کی گاڑیاں ضبط کیں اور ان کے خلاف کیس زیر ایف آئی آرنمبر100/2020 متعلقہ دفعات کے تحت درج کرکے مذید تحقیقات شروع کردی۔ گاندربل پولیس نے عوام سے گزارش کی ہے کہ وہ کووِڈ - 19وباء کے پیش نظر انتظامیہ کی طرف سے نافذ کئے گئے ضوابط کی پاسداری کریں اور اگر کوئی بھی شخص قانون کی خلاف ورزی کرنے کا مرتکب پائے جائے گا تو اس کے خلا ف سخت سے سخت کاروائی کی جائیگی۔
 
 

 لاک ڈائون کی وجہ سے اشٹابری کے کاشتکار بھی سخت پریشان

تیار فصل ملک کی منڈیوں تک پہنچ نہ پانے کی وجہ سے کروڑوں کے نقصان کاخدشہ

 

یو این آئی

 
سرینگر// وادی کشمیر میں ملک گیر لاک ڈائون کی وجہ سے سٹرابری یعنی اشٹابر کے کاشتکار بھی سخت پریشان ہیں کیونکہ ان کی تیار سٹرابری ملک کے مختلف حصوں تک نہیں پہنچ پا رہی ہے۔ سٹرابری کے کاشتکاروں نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ اس پھل کی کاشت کو بچانے کے لئے آگے آئیں۔ سری نگر کے مضافات گاسو حضرت بل جہاں لوگوں کی ایک بڑی تعداد سٹرابری کی کاشت سے وابستہ ہے، کے ایک نوجوان کاشتکار آصف احمد ڈار نے بتایا،’’ہم گذشتہ پندرہ برس سے سٹرابری کی کاشت کررہے ہیں۔ ہماری روزی روٹی اسی پھل کی کاشت سے جڑی ہے۔ لیکن جاری لاک ڈائون کی وجہ سے ہمیں نقصان اٹھانا پڑا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا،’’ہمارا سٹرابری فروٹ باہر کی ریاستوں جیسے دلی، پنجاب، مہاراشٹر، کلکتہ اور ممبئی بھی جاتا تھا۔ وہاں سے اچھی ریٹ بھی ملتی تھی لیکن اس سال نقصان اٹھانا پڑا ہے۔سٹرابری پھل منڈی بھی نہیں جاتا ہے۔ اب ہم کیا کرتے ہیں کہ تھوڑی بہت اسٹرابری شام کو یہاں پر ہی مقامی لوگوں کو فروخت کرتے ہیں‘‘۔آصف کے مطابق کشمیر کے سٹرابری کاشتکاروں کو ہونے والا نقصان کروڑوں میں ہے۔ ان کا کہنا تھا،’’میرا ماننا ہے کہ سٹرابری کاشت کاروں کو ہونے والا نقصان کروڑوں میں ہے۔ سٹرابری کے لئے باہر سے کوئی آڈر آتا ہے نہ یہ مال منڈی جا پاتا ہے۔ اس وقت یہاں پر بڑی تعداد میں سیاح بھی موجود رہتے تھے جو سٹرابری خریدنے میں بہت دلچسپی لیتے تھے‘‘۔ محمد صدیق ڈار نامی معمر سٹرابری کے کاشتکار نے بتایا،’’میں گذشتہ پندرہ برسوں سے یہ کام کررہا ہوں۔ اس کی کاشت سے روزگار اچھا چلتا تھا۔ لیکن لاک ڈائون سے نقصان ہی ہوا ہے۔ اس کی کاشت میں بہت محنت لگتی ہے‘‘۔ ان کا مزید کہنا تھا،’’یہاں سے سٹرابری پارمپورہ منڈی جاتی تھی اور پھر وہاں سے ملک کے مختلف حصوں کو۔ ہماری حکومت سے اپیل ہے کہ ہماری مدد کی جائے۔ حکومت کی مدد کے بغیر ہمارے لئے اسٹرابری کی کاشت جاری رکھنا مشکل ہے‘‘۔ ریاض احمد نامی ایک نوجوان سٹرابری کاشتکار نے بتایا،’’یہاں پر اکثر لوگ سٹرابری کی کاشت کرتے ہیں۔ سٹرابری بہت میٹھی ہوتی ہے۔ لاک ڈائون کی وجہ سے ہم بہت پریشان ہیں کیونکہ ہمارا مال باہر نہیں جاسکتا ہے۔ مال بھی اب خراب ہونے لگا ہے‘‘۔  
 
 

پلس ٹو لیکچراروں کا وفد اعلیٰ حکام سے ملاقی

لیکچراروں کو درپیش مشکلات پر تبادلہ خیال

سرینگر//پلس ٹولیکچراروں کو درپیش مشکلات کوحل کرنے کیلئے پلس ٹو لیکچراروں کی انجمن کانائب صدرمنصوراحمد،ڈاکٹر ناظم جنرل سیکریٹری اور خورشیدعالم چیف آرگنائزرپر مشتمل ایک وفد نے پرنسپل سیکریٹری اسکول ایجوکیشن ڈاکٹر اصغر سامون کے ساتھ ملاقات کی اورانہیں لیکچراروں کودرپیش مشکلات سے آگاہ کیا۔ وفد نے پلس ٹو لیکچراروں کی ترقیوں و دیگر معاملات پر تفصیلی بحث ومباحثہ کیا۔ڈاکٹر سامون نے اس دوران وفد کے مسائل نغور سنے اور انہیں یقین دلایا کہ ان کے مطالبات کو پورا کرنے کیلئے پہلے متعلقین کو ہدایات دی گئی ہیں تاکہ وہ فائل کو انتظامی محکمہ کی کمیٹی کو پیش کرے۔ وفد نے ڈائریکٹر ایجوکیشن کشمیر ،ڈاکٹرمحمد یونس کے ساتھ بھی ملاقات کی اوردوردرشن سرینگر،آل انڈیا ریڈیوپرریڈیوبراڈ کاسٹ ،ویڈیو لیکچراور آن لائن کلاسز شروع کرنے کیلئے ان کی سراہنا کی ۔انہوں نے ڈائریکٹر ایجوکیشن کو یقین دلایا کہ پلس ٹو لیکچرارطلبہ کے مفادمیں کئے گئے اقدامات کی تہہ دل سے حمایت کرتے ہیں ۔وفد نے ایڈیشنل سیکریٹری اسکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ سے بھی ملاقات کی اورلیکچراروں کی سینئر لیکچراروں کے طورپلیسمنٹ سے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ایڈیشنل سیکریٹری نے وفد کویقین دلایا کہ اس معاملے کوقلیل مدت میں حل کیا جائے گا ۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

ڈیری صنعت ترجیحات میں شامل:نوین کمار

 
 
 

 حکومت نے رہنماخطوط جاری کئے 

 جموں//ڈیری شعبہ کو بڑے پیمانے پر ترقی دینے اور اس سے وابستہ افراد کو سبسڈی اور رعایت بلا رکاوٹ فراہم کرنے میں شفافیت لانے کی غرض سے محکمہ پشو و بھیڑ پالن نے رہنماخطوط جاری کئے ۔ تفصیلات دیتے ہوئے پرنسپل سیکریٹری پشو و بھیڑ پالن نوین کمار چودھری نے کہا کہ لیفٹیننٹ گورنر نے جموںوکشمیر یوٹی میں ڈیری شعبے کی بہتر ترقی یقینی بنانے کو اپنی ترجیحات میں شامل کیا ہے ۔اُنہوںنے کہا کہ نئے رہنما خطوط کے تحت ڈیری فارمروں کو اپنی پسند کے ڈیلر یا مینوفیکچرر سے سازو و سامان ، مشینری اور دیگر آلات خریدنے کی آزادی دی جائے گی۔تاہم اِس ضمن میں تجویز کی گئی خصوصیات کاہونا لازمی ہے۔اُنہوں نے کہا کہ اس سے ان کے لئے حکومت سے امداد کے حصول میں درپیش دفتری طوالت بھی کم ہوسکتی ہے ۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

 ڈاکٹر فاروق پارٹی کارکن کے انتقال پر اظہارِ تعزیت

سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے پارٹی کے سابق بلاک صدر آری زال خانصاحب حشت اللہ خان کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے اور مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی ہے۔ انہوں نے مرحوم کے پسماندگان کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا اور مرحوم کی پارٹی اور عوامی خدمات کویاد کرتے ہوئے انہیں خراج عقیدت پیش کیا۔ پارٹی کے صوبائی سکریٹری ایڈوکیٹ شوکت احمد میر، سینئر لیڈران عبدالمجید متو، منظور احمد وانی، عبدالاحد ڈار اور غلام نبی بٹ نے بھی اس غمزدہ خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔

حکیم یاسین کااظہار رنج

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم یاسین نے خانقاہ فیض پناہ چرار شریف کے امام و خطیب مولوی غلام احمد کے انتقال پر گہرے رنج وغم کا اظہار کیا ہے۔ایک تعزیتی بیان میں حکیم یاسین نے کہا ہے مرحوم نے پچھلے تقریباً 30 برسوں سے خانقاہ فیض پناہ میں امامت و خطبہ جمعہ کے فرائض انجام دیے ہیں۔ 

رورل ڈیولپمنٹ سوسائٹی کا اظہار تعزیت

سرینگر//رورل ڈیولپمنٹ سوسائٹی شمالی کشمیر کے چیئرمین خواجہ محمد شفیع اور ضلع چیئرمین بارہمولہ عبدالمجید آخون، ضلع چیئرمین کپوارہ محمد سکندر میر نے سابق ممبر پارلیمنٹ عبدالرشید شاہین کی بھتیجی کی وفات پر گہرے رنج و غم کااظہار کیا ہے اور مرحومہ کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔ 
 
 

 مرغ کی قیمت 110روپے فی کلو مقرر 

سرینگر//محکمہ امور صارفین و عوامی تقسیم کاری نے عوام سے کہا ہے کہ وہ ناجائز منافع خوروں کے خلاف صف آرا ہوجائیں ۔ محکمہ نے مرغ کی  قیمت 110روپے فی کلومقررکی ہے اور کہا ہے کہ اگر کوئی بھی مرغ فروش زیادہ قیمت وصول کرنے میں ملوث پایا جائے گا تو اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔اس دوران لیگل میٹرالوجی اور محکمہ سی اے پی ڈی نے ناجائز منافع خوروں کیخلاف کارروائی کرنے کا من بنالیا ہے اور اس سلسلے میں عوام سے کہا گیا ہے کہ فون نمبرات
7006944295اور7006209784 
پر شکایات درج کریں ۔ ( سی این آئی )
 
 

 وادی میں گراں فروشی عروج پر

حکام خاموش ، عوام مشکلات کا شکار

سرینگر/ / وادی کشمیر میں سبزیوں، میوہ جات اور دیگر اشیاء ضروریہ کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں جبکہ قصابوں نے گوشت کی مصنوعی قلت پیدا کرکے قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ بازاروں میں قیمتیں زیادہ ہونے کی شکایات اعلیٰ افسران کو مسلسل مل رہی ہیں لیکن کوئی خاطر خواہ کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی ۔عید کی آمد سے قبل ہی یکایک سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بیجا اضافہ کیا گیا ہے۔مقامی لوگوں نے سرکار سے مطالبہ کیاکہ قیمتوں کو اعتدال پر رکھنے کیلئے چیکنگ سکارڈ تشکیل دئے جائیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ سرینگر، بارہمولہ، کپوارہ، بڈگام، اننت ناگ، پلوامہ، شوپیان اور باقی اضلاع میں بھی سبزیوں، میوہ جات، گوشت اور دیگر اشیائے ضروریہ کو مہنگے داموں فروخت کیا جاتا ہے لیکن گراں فروشوں کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی جاتی۔ (کے این ٹی)
 

گاندربل میںتین دوکانیں سربمہر 

ارشاد احمد

گاندربل//550 سے لیکر 580 روپے گوشت فی کلو فروخت کرنے کی پاداشت میں تحصیلدار لار نے مقامی شہریوں کی شکایت پر فوری کارروائی کرتے ہوئے تین قصابوں کی دوکانیں سربمہر کردیں۔صفاپورہ،بارسو،اور ینگورہ علاقوں میں موجود قصاب نے گوشت 550 سے لیکر 580 روپے کے حساب سے فروخت کررہے تھے اور مقامی لوگوں نے فوری طور پر تحصیلدار لار کے سامنے یہ شکایت پیش کی۔ تحصیلدار لار نے ایس ایچ او کھیر بوانی،محکمہ امور صارفین اور دیگر متعلقہ حکام کو اپنے ساتھ لیکر موقع پر پہنچ کر تین دوکانیں سربمہر کردیں۔تحصیلدار لار منیر حسین خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ انہیںشکایت موصول ہوئی کہ وہ 550 سے لیکر 580 روپے گوشت فروخت کررہے تھے اوراس سلسلے میںمبشر احمد ساکن صفاپورہ،حبیب اللہ گنائی ساکن کوندہ بل اور ثناء اللہ گنائی ساکن کرہامہ کی دوکانیں سربمہر کردیں۔ 
 
 

مزدوروں کی حالت ناگفتہ بہ:شارق

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر شریف الدین شارق نے ملک بھر میںمزدوروں کی حالت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے مرکزی حکومت کی بے حسی کو ہدف تنقید بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان مہاجر مزدوروں میں ہزاروں کشمیری بھی شامل ہیں ۔ اُن کا کہنا تھا کہ افسوس اس بات ہے کہ مرکزی حکومت صرف بلند بانگ دعویٰ کررہی ہے لیکن زمینی سطح پر غریب عوام حکومتی ناکامی کا خمیازہ بھگت رہی ہے۔ شارق نے کہا کہ حکومت لاکھوں کروڑ مالی پیکیج کا اعلان کررہی ہے لیکن دوسری جانب ان مزدوروں کو گھر پہنچانے کیلئے کوئی بھی لائحہ عمل مرتب نہیں کیا جارہا ہے۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے اپیل کی کہ فوری طور پر ان مزدوروں کی گھر واپسی کیلئے اقدامات کئے جائیں۔
 
 
 

تازہ ترین