ایس ایم ایس سروس بند تاہم فحش پیغامات کاارسال جاری

تاریخ    11 مئی 2020 (00 : 03 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// مواصلاتی بندشوں کے بیچ وادی میں ایس ایم سروس بھی معطل کر دی گئی ہے،تاہم مواصلاتی کمپنیوں کی طرف غیر ضروری پیغامات کا ارسال جاری ہے۔ وادی میں4 روز قبل مواصلاتی بندشیں عائد کی گئیں اور اگرچہ جمعہ کو موبائل سروس کو بحال کیا گیا تاہم ایس ایم سروس ہنوز منقطع ہے۔صارفین کا کہنا ہے کہ اگرچہ فون خدمات بحال ہوئی ہیں لیکن ایس ایم ایس سہولیت کی لگاتار معطلی کی وجہ سے وہ مختلف مشکلات کا سامنا کررہے ہیں۔ ایس ایم ایس سہولیت بند رہنے کی وجہ سے لوگ آن لائن ادائیگی نہیں کر پا رہے ہیں کیونکہ موبائل فون پر او ٹی پی نمبر نہیں آتا ہے۔صارفین کا کہنا ہے کہ اگر چہ مواصلاتی کمپنیوں اور دیگر کاروباری کمپنیوں سے اُنہیں ایس ایم ایس موصول ہو رہے ہیں،تاہم ان کیلئے جو ضروری پیغامات رسائی ہیں، اس کو منقطع کیا گیا ہے۔ نثار احمد نامی ایک صارف نے اس بات پر حیرانگی کا اظہار کہ کرونا لاک ڈائون کے نتیجے میں جب ایس ایم ایس سروس اہم ہے،تاہم اس دوران مواصلاتی کمپنیوں کی طرف سے فحش پیغامات کی رسائی جاری ہے۔ان کا کہنا تھا’’ ماہ رمضان میں اس طرح کے پیغامات ارسال کرنا اخلاقی دیوالیہ پن کے علاوہ اور کچھ نہیں، جبکہ ایس ایم ایس سروس کے منقطع ہونے کے بیچ اس طرح کے پیغامات زخموں پر نمک پاشی ہے‘‘۔ایک اور صارف فردوس احمد نے بھی برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مواصلاتی کمپنیوں کی طرف سے اس طرح کے پیغامات اس وقت ارسال کرنے کا کیا جواز ہے جب لوگ ایس ایم سروس کے بند ہونے کی وجہ سے پہلے ہی پریشان ہے۔
 

تازہ ترین