میری مفلسی

افسانچہ

10 مئی 2020 (30 : 03 AM)   
(      )

تحلیل احمد ملک
"۔۔۔۔یہ لیجئے مہینے بھر کا راشن"،  عامر ایک غریب آدمی کو راشن دے کر کہنے لگا۔
"اللہ تم لوگوں کو خوش رکھے !  تمہارا دامن خوشیوں سے بھرے! "اس آدمی کی آنکھوں سے آنسو نکل پڑے اور وہ پھر کہنے لگا،" بھائی جان میرا خاندان بھوکا ہے۔ آج وہ دو روز بعد کچھ کھائیں گے"
"اچھا بھائی میں چلتا ہوں خدا حافظ "،عامر یہ کہہ کر دور بیٹھے اپنے دوست کے پاس چلا گیا جو ویڈیو ریکارڈنگ کر رہا تھا اور اسے کہنے لگا" عابد ویڈیو اچھی طرح شوٹ کیا؟"
" کیوں نہ کرتا اسی لئے تو ہم نے یہ سب کچھ کیا ورنہ ہمیں اتنا پیسہ خرچ کرنے کی کیا ضرورت تھی؟ بولو؟" عابد نے واپس کہا۔
"اب اس کو فیس بک پر پوسٹ کر دیتے ہیں اور ساتھ ہی ساتھ اس یہ بھی لکھتے ہیں کہ اس کو زیادہ سے زیادہ شیئر کریں پھر دیکھتے ہیں مزہ !"، عامر نے اسے یہ کہہ کر اس کو پوسٹ کروا دیا۔
 
نفس کا مارا کرتا بھی تو کیا کرتا، صرف عائیں اس کے منہ سے نکل رہی تھیں۔۔وہ ان کو کسی فرشتے سے کم نہیں سمجھتا تھا، جو آج کی اس مشکل گھڑی میں اسے ایک مہینے کا راشن دے گئے لیکن اسے کیا پتہ تھا یہ سرعام اس کی عزت کا جنازہ نکالنے آئے تھے نہ کہ اس کی مدد کرنے۔۔عامر اور ساحل نے راشن دیتے  وقت  جو ویڈیو بنایا تھا ہزاروں لوگ فیس بک پر اُسے لائک اور شیئر کرچکے تھے۔
���
لہوند شوپیان کشمیر
موبائل؛9697402129

تازہ ترین