تازہ ترین

خالہ پورہ ڈلگیٹ میں نلکوں سے آلودہ پانی برآمد

محکمہ کی ٹیم نے صورتحال کا جائزہ لیا

9 مئی 2020 (30 : 03 AM)   
(      )

سرینگر// خالہ پورہ ڈلگیٹ میں جمعہ کی صبح لوگ اس وقت ششدر رہ گئے جب انہوں نے نلکوں سے سرخ پانی آیا۔مقامی لوگوں کاکہنا ہے کہ علاقے میں وقت وقت پر پانی کی سپلائی فراہم کی جاتی ہے اور جمعہ کو صبح کے وقت سرخ پانی نلکوں سے آیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پانی کا رنگ دیکھ کر وہ ہکا بکا اور خوف زدہ ہوکر رہ گئے جس کے بعد متعلقہ محکمہ کے ساتھ رابطہ قائم کیا گیا۔ذرائع نے بتایا کہ بعد میں محکمہ کی ایک ٹیم بھی وہاں پہنچی اور صورتحال کا جائزہ لیا۔ برتنوں میں سرخ رنگ کے پانی کے نمونے حاصل کئے گئے۔ بعد میں مذکورہ ٹیم نے شہریوں سمیت سلیمان ٹینگ پرموجود اُس ٹنکی کا معائنہ بھی کیاجس سے پانی کی سپلائی ہوتا ہے۔ محکمہ کے ایک افسر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ انہوں نے پانی اور ٹنکی کا معائنہ کیا اور صبح کے وقت کچھ وقفہ کیلئے گدلاور سرخ رنگ کا پانی علاقے کو سپلائی ہوا ہوگاتاہم بعد میں صاف پانی کی سپلائی بحال ہوئی۔مذکورہ آفیسر نے بتایا کہ علاقے کی بیشتر پائپیں زیر زمین ڈرینوں سے ہوکر گزرتی ہیںاور غالباً کسی جگہ ڈرین کا پانی ان پائپوں میں داخل ہوا ہوگاجس کے نتیجے میں یہ سرخ پانی آیا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ اس معاملے کی تحقیقات کی جا رہی ہے اور علاقے کو صاف پانی کی سپلائی فراہم کی جارہی ہے۔اس دوران مقامی لوگوں نے نلکوں سے آنے والے پانی کے استعمال پر خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس کے بیچ اس پانی کا استعمال کرنے سے خدشات لاحق ہوگئے ہیں۔انہوں نے متعلقہ حکام سے فوری طور پر ان علاقوں میں پینے کا صاف پانی سپلائی کرنے کا مطالبہ کیا اورجب تک پائپوں کو ٹھیک نہیں کیا جاتا تب تک متبادل طریقے سے پینے کا صاف پانی سپلائی کیا جائے۔