محکمہ تعلیم کا بچوں کوآن لائن تعلیم فراہم کرنے کافیصلہ

لاک ڈائون سے متاثر ہر بچے تک پہنچنے کی کوششیں جاری

تاریخ    9 اپریل 2020 (22 : 12 AM)   


اشفاق سعید
سرینگر //4جی انٹر نیٹ سہولت پر مکمل پابندی کے بیچ محکمہ ایجوکیشن کشمیر نے بچوں کو آن لائن تعلیم دینے کا فیصلہ کیا ہے، جبکہ محکمہ کا دعویٰ ہے کہ ہزاروں کی تعداد میں بچے اس سے مستفید ہو رہے ہیں ۔محکمہ تعلیم کا کہنا ہے کہ لاک ڈائون سے متاثر ہوئے ہر ایک بچے تک پہنچنے کی کوشش کی جارہی ہے۔محکمہ کے مطابق انہوں نے زوم نامی ایک ایپ بنائی ہے جس پر بچے آن لائن تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ سٹیڈی میٹریل بھی حاصل کر سکتے ہیں ۔ ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن کشمیر محمد یونس ملک نے کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ اسمارٹ فونز میں انسٹال ہونے کے بعد طلبا ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے رابطہ کریں گے اور آن لائن کلاسوں سے اپنے گھروں میں مستفید ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ ہم ہر اُس بچے تک پہنچیں جو لاک ڈائون کے سبب گھروں میں ہی بند ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اس وقت تمام اضلاع میں ویب سائٹوں پر سٹیڈی میٹریل دستیاب ہے اور جن طلاب کے پاس موبائل اور سمارٹ فون نہیں ہیں، ان تک سٹیڈی میٹریل پہنچانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہزاروں بچوں تک ہم مختلف پلیٹ فارموں کے ذریعے پہنچ چکے ہیں، تاکہ ان کو گھروں میں ہی تعلیم دی جا سکے ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ کا عملہ جس میں اساتذہ اور لیکچرار شامل ہیں، اسی کام میں لگے ہیں اور ہماری کوشش ہے بچوں تک اسائنمنٹ اور سٹیڈی میٹریل پہنچے ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ نے دوددرشن کے ذریعے بھی کلاسیں شروع کی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم نے اگست 2019 سے غیر یقینی حالت کی صورتحال کی وجہ سے طلبا کو ہونے والے نقصانات کو کم کرنے کے لئے موجودہ صورتحال میں آن لائن کلاسوں کے انعقاد سمیت متعدد اقدامات اٹھائے ہیں۔4جی انٹر نیٹ کی سہولیات نہ ہونے پر پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس اس وقت جتنی نیٹ کی سہولیات ہیں ہم اسی کا فائدہ اٹھا رہے ہیں ۔
 

تازہ ترین