تازہ ترین

ایک دن میں ریکارڈ اضافہ، 33مثبت،تعداد158

جموں وکشمیر میں کورونا سے چوتھی موت، ادھمپور کی خاتون فوت

تاریخ    9 اپریل 2020 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد

 نئے179نمونے زیر تشخیص، وادی میں 128 اور جموں میں 30متاثرین

جموں+سرینگر //صوبہ جموں میں دیر رات کورونا وائرس سے ہلاکت کا پہلا معاملہ سامنے آیا۔اس طرح جموںوکشمیر میں کورونا سے ہلاک ہونے والوںکی تعداد 4ہوگئی ۔ مارچ کے پہلے ہفتے میں کورونا وائرس کا پہلا متاثر شخص سامنے آنے کے بعد بدھ 8اپریل کو ایک دن میں مثبت کیس آنے کا نیا ریکارڈ بن گیا ہے۔کل ایک ہی دن میں 34کیس سامنے آئے جن میں وادی کشمیر سے 30اور جموں سے4کیس شامل ہیں۔نئے 34مشتبہ مریضوں کی رپورٹیں مثبت آنے کے ساتھ ہی جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی کل تعداد 159ہوگئی ہے جن میں جموں صوبے کے31جبکہ کشمیر کے128مریض ہیں۔حکومتی ترجمان روہت کنسل نے رات پونے بارہ بجے ایک ٹویٹ کرکے یہ افسوسناک اطلاع دی ۔انہوںنے ٹویٹ میں لکھا’’61سالہ خاتون مریض گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں ہسپتال میں انتقال کر گئیں ۔وہ کورونا وائرس کیلئے مثبت قرار پائی ۔وہ ممکنہ طور ہڈیوں اور جوڑوںکے درد میں مبتلا تھیں اور بستر علالت پر تھیں۔حکام ان کے رابطے میں آنے والے لوگوں کو ٹریس کررہے ہیں۔اس سے قبل شام کو روہت کنسل نے اپنے پہلے ٹویٹ میں کہا ’’کورونا وائرس کے 14نئے معاملات سامنے آئے ہیں، جن میں 11کشمیر اور 3جموں سے ہیں‘‘۔ اپنے ٹیوٹ میں انہوں نے مزید لکھا’’ کل تعداد 139ہوگئی ہے جن میں 130زیر علاج ہیں، جن میں سے 27جموں اور 103کشمیر میں ہیں‘‘۔سرکاری ترجمان نے شام کے وقت دوسرے ٹویٹ میں وادی سے مزید 19کیسز سامنے آنے کا پیغام دیا۔اس طرح وادی میں بدھ کو کل 30 افراد کے ٹیسٹ مثبت آئے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ خاتون کو چھاتی میں درد اور بخارکی شکایت تھی اور اُسے دوپہر گھر والوںنے پہلے نرائنا ہسپتال لیا جہاں ڈاکٹروںنے اُسے نمونیا میں بھی مبتلا پایا اور ڈاکٹروںنے انہوںنے کورونا کی تشخیص کیلئے جی ایم سی جموںجانے کا مشورہ دیاجس کے بعد اُسے صبح ہی جی ایم سی جموں پہنچایاگیاجہاں اُسے کووڈ او پی ڈی میں دیکھاگیا ۔دوپہر ایک بجے کے قریب اس کے نمونے کورونا وائرس کے لئے لئے گئے اور اُسے آئیسولیشن وارڈ منتقل کیاگیا۔ذرائع کا کہناہے کہ آئیسولیشن وارڈ میں اس کی حالت غیر ہوگئی اور سہ پہر چار بجے دم توڑ بیٹھی ۔اس کے بعد مذکورہ خاتون کی لاش کو لاش گھر منتقل کیاگیا اور رپورٹ کا انتظار کیاگیا۔رات ساڑھے دس بجے کے قریب جب اُس کا رپورٹ آیا تو وہ مثبت پایا گیاجس کے بعد لاش کو اب ضوابط کے تحت آخری رسوم کی ادائیگی کیلئے بھیجا جائے گا۔یہ جموں صوبہ میں کورونا وائرس کی وجہ سے پہلی ہلاکت ہے ۔مذکورہ خاتون کا تعلق ٹکری ادہم پور سے ہے اور وہ اپنے پیچھے شوہر،بیٹا ،بہو اور دو نواسوں کو چھو ڑ کرچلی گئی ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اُن کا بیٹا پولیس اہلکار ہے اور مذکورہ خاتون 20مارچ کو امن دیپ ہسپتال امرتسر بھی اپنے بہنوئی کے ساتھ چیک اپ کیلئے گئی تھی ۔بلاک میڈیکل آفیسر ٹکری ادہم پور نے مذکورہ خاتون کے ساتھ رابطہ میں آنے والے لوگوںکی تلاش شروع کردی ہے۔معلوم ہوا ہے کہ یہ خاتون گزشتہ 38برسوں سے ریح ہار کی مریضہ تھی اور مسلسل زیر علاج تھی۔اس سے قبل صوبہ جموں میں بدھ کو جونئے3مثبت کیس سامنے آئے تھے،ان تینوںکاتعلق اتر پردیش سے ہے۔

سکمز صورہ

 بدھ کومثبت قرار دئے گئے 30مریضوں میں سے19سی ڈی اسپتال لیبارٹری اور 1 کی رپورٹ سکمز صورہ میں مثبت آئی ۔ میڈیکل سائنسز صورہ میں بدھ کو 65نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں 11کی رپورٹیں مثبت آئی جبکہ اسپتال سے بانڈی پورہ کے دو کورونا وائرس مریضوں کو صحتیاب ہونے کے بعد گھر روانہ کردیا گیا ۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ مثبت آنے والے 11مشتبہ مریضوں میں سے 4سکمز صورہ میں زیر علاج ہیں جن میں 3 کا تعلق بانڈی پورہ سے جبکہ ایک 70سالہ معمر شخص ٹنگمرگ سے تعلق رکھتا ہے‘‘۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ جی ایم سی بارہمولہ کی طرف سے بھیجے گئے 6نمونے مثبت قرار دئے گئے ہیں جن میں ایک کپوارہ جبکہ 5کا تعلق سرینگر ضلع سے ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ سرینگر کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے 5نوجوانوں نے نائجیریا کا سفر کیا تھا اور وہ 26مارچ کے بعد وارد کشمیر ہوئے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا’’ یہ نوجوانوں نائجیریا سے آنے کے بعد گلمرگ گئے تھے جہاں ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے انکا پتہ لگا کر انکو قرنطینہ مرکز منتقل کیا تھا اور بعد میں جی ایم سی بارہمولہ نے انکے نمونے تشخیص کیلئے سکمز بھیج دئے جبکہ کپوارہ کے 60سالہ شخص دلی کے نظام الدین جاکر واپس لوٹ آیا تھا۔ ڈاکٹر جان نے بتایا ’’ سکمز لیبارٹری میں ابتک 848مشتبہ مریضوں کے نمونے موصول ہوئے ہیں جن میں 65مثبت جبکہ781منفی قرار دئے گئے ہیں۔ انہوں نے بتایا ’’ آئیسولیشن وارڈ میں داخل بانڈی پورہ کے دو نوجوانوں کو صحتیاب ہونے کے بعد گھر بھیج دیا گیا ہے اور اس طرح آئیسولیشن وارڈ میں داخل مریضوں کی تعداد 30رہ گئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ بدھ کو مزید60نمونے مختلف اسپتالوں سے تشخیص کیلئے سکمز بھیجے گئے ہیں۔

سی ڈی اسپتال

سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں قائم کورونا وئرس لیبارٹری میں بدھ کو 96نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں 19مشتبہ مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی ۔مثبت آنے والے نمونوں میں سے 7جی ایم سی اننت ناگ، 2ضلع اسپتال پلوامہ اور10جواہر لال نہرو میموریل اسپتال رعناواری سے تعلق رکھتے ہیں۔ جے ایم سی سرینگر کے ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’بدھ کو 94نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں 19مشتبہ مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئیں جبکہ 75نمونے منفی قرار دئے گئے ‘‘۔ انہوں نے کہا ’’19افراد میں سے 8کا تعلق شوپیاں، ایک کا تعلق کولگام اور 10کا تعلق ضلع سرینگر سے ہے۔ انہوں نے کہا’’ مثبت قرار دئے گئے تمام افراد کورونا وائرس مریضوں کے رابطے میں آنے کی وجہ سے وائرس کا شکار ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سی ڈی لیبارٹری میں 72نمونے زیر تشخیص ہیں جبکہ مختلف اسپتالوں سے مزید 114نمونے موصول ہوئے ہیں جن میں رعناواری اسپتال سے 56،ضلع اسپتال پلوامہ سے 23 اور11 افراد کے نمونے ضلع اسپتال شوپیاں نے بھیجے ہیں۔ ادھر سرینگر کے سی ڈی اسپتال میں زیر علاج بدھ کو کسی بھی مریض کی رپورٹ مثبت نہیں آئی ہے، اسپتال میں 3مشتبہ مریضوں کو داخل کیا گیا ہے‘‘۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد سلیم ٹاک نے بتایا ’’ آئیسولیشن وارڈ میں 28کورونا وائرس مریض داخل تھے جن میں8کی رپورٹیں منفی آئی ہیں اور انہیں قرنطینہ میں رکھنے کیلئے کشمیر ویلی نرسنگ ہوم منتقل کیا گیا ہے۔رعناواری اسپتال سے بھیجے گئی 86نمونوں کی تشخیص کی گئی ہے جن میں سے 10کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔ رعناواری اسپتال میں کورونا وائرس بیماری کی نوڈل آفیسر ڈاکٹر بلقیس نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’کشمیر یونیورسٹی کے زکورہ کیمپس میں قائم قرنطینہ سینٹر میں رکھے گئے 10مشتبہ مریضوں کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں جن کا تعلق سرینگر کے عیدہ گاہ اور چھتہ بل اور دیگر علاقوں سے ہے‘‘۔   

حکومتی بیان

جموں کشمیرحکومت نے کہا ہے کہ بدھ کو 33نئے کیس سامنے آئے ہیں۔ جن میں سے تین کا تعلق جموں اوردیگر30کا تعلق کشمیر صوبے سے ہے،یو ں اب تک جموںوکشمیر میں مثبت معاملات کی تعداد 158 تک پہنچ گئی ہے ۔حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے 158 مثبت معاملات میں سے149 سرگرم معاملات ہیں ،06 مریض صحتیاب ہوئے ہیں اور 3کی موت واقع ہوئی ہے۔ علاوہ ازیں اب تک ایسے 40,336 اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا یا تو سفری پس منظر ہے یا وہ مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ اب تک8,494 اَفراد کو ہوم کورنٹین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے کورنٹین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ518 اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔130کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 23,363 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق7,830اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن میں مزید بتایا گیا ہے کہ اب تک 2,269نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں جن میں سے 2,116 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے اور14کی روپورٹیں 08؍اپریل 2020 ء تک آنا باقی ہے ۔ بلیٹن میں کہا گیاہے کہ کووِڈ۔19کے دو مزید مریض صحتیاب ہوئے ہیں اور انہیں آج سکمز صورہ سری نگر سے رُخصت کیا گیا ہے۔
 

تازہ ترین