تازہ ترین

کورونا نے 100 کانفسیاتی ہندسہ پار کرلیا

جموں کشمیر میں تعداد 106تک پہنچ گئی،2 روز میں 28کی رپورٹ مثبت قرار دی گئی،96کی رپورٹیں آنا باقی

تاریخ    6 اپریل 2020 (41 : 12 AM)   


پرویز احمد
سرینگر // جموں و کشمیر میں 37دنوں کے بعد کورونا وائرس تیزی سے پھیلنے لگا ہے اور سنیچر و اتوار کو دو روز کے دوران 28 مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی۔سنیچر کو 17جبکہ اتوار کو مزید 11افراد کے نمونے مثبت قرار دیئے گئے۔اس طرح کورونا وائرس سے متاثر مریضوں کی تعداد 106ہوگئیہے۔سرکاری ترجمان روہت کنسل نے اتوار کو اپنے ایک ٹیوٹ میں لکھا’’ کشمیر میں مزید 14 مشتبہ مریضوں کے نمونے مثبت قرار دئے گئے ہیں اور اس طرح جموں و کشمیر میں کورونا وائرس مریضوں کی کل تعداد 106ہوگئی ہے جن میں کشمیر میں 82 جبکہ جموں میں 18مریض زیر علاج ہیں‘‘۔( سرکاری ترجمان نے 14 مثبت قرار دئے گئے کیسوں کے اعدادوشمار میں سنیچر دیر شام گئے شوپیاں کے میاں بیوی کے علاوہ ہاکہ بارہ حاجن کے ایک مریض کو بھی شامل کیا ، جنہیںکشمیر عظمیٰ نے اتوار کو ہی اپنی رپورٹ میں شامل کیا تھا )۔

سکمز صورہ

کشمیر میں اتوار کو مثبت قرار دئے گئے 11نمونوں میں سکمز کے شعبہ مائکرو بائولاجی میں7نمونوں کو جبکہ جی ایم سی سرینگر میں کورونا وائرس کیلئے قائم کی گئی خصوصی لیبارٹری میں 4مریضوں کی رپورٹوں کو مثبت قرار دیا گیا ہے۔ سکمز میں مثبت قرار دئے گئے 7نمونوں میں سے 5اوڑی،1 بانڈی پورہ، 1 گاندربل، 2سرینگر ،2کا تعلق پلوامہ سے ہے۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’ اتوار کو مزید 10مشتبہ مریضوں کو اسپتال میں داخل کیا گیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ جی ایم سی بارہمولہ کی طرف سے بھیجے گئے نمونوں میں سے اوڑی کے 5مشتبہ مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی ، جبکہ سکمز میں داخل مریضوں میں سے 2کی رپورٹیں مثبت آئیں۔انکا  کہنا تھا کہ سکمز میں داخل جن مریضوں کے ٹیسٹ مثبت آئے ان میںبانڈی پورہ کا 30سالہ نوجوان اور گاندر بل ضلع کے گوزہامہ بٹہ وینہ سے تعلق رکھنے والا 61سالہ معمر شخص شامل ہے جو سوپور کے ایک کورونا وائرس مریض کے رابطے میں آیا ہے۔انہوں نے کہا ’’ بانڈی پورہ سے تعلق رکھنے والے نوجوان نے حالیہ دنوں میں مدھیہ پردیش کا سفر کیا تھا۔معلوم ہوا ہے کہ بانڈی پورہ کا شخص در اصل گریز سے تعلق رکھتا ہے اور اب پٹھکوٹ بانڈی پورہ میں رہائش پذیر ہے مذکورہ شخص 22مارچ کو مدھیہ پردیش سے آیا 26مارچ کو ڈاکٹروں کی ٹیم نے چترنار فارسٹ سکول کے قرنطینہ مرکز میں رکھا  تھا بعد میں صورہ منتقل کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ سرحدی ضلع اوڑی کے5 مشتبہ مریض کے کسی کورونا وائرس مریض کے رابطہ میں آئے ہیں اور انکی کوئی سفری تفاصیل موجود نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ سکمز آئیسولیشن وارڈ میں داخل کورونا وائرس مریضوں کی تعداد 24تک پہنچ گئی ہے جبکہ قرنطینہ وارڈ میں 10مشتبہ مریضوں کو رکھا گیا ہے۔ میڈیکل سائنسز صورہ کے شعبہ عوامی رابطہ کی جانب سے جاری کئے گئے ا عدادوشمار کے مطابق  سکمز میں کل 287مشتبہ مریضوں کو لایا گیا جن میں 24کی رپورٹ ابتک مثبت آئی ہے۔ اسپتال کے قرنطینہ وارڈ میں صرف ایک مشتبہ مریض کو نگرانی میں رکھا گیا ہے  جبکہ 257مریضوں کی رپورٹ منفی آنے کے بعد انہیں گھر بھیج دیا گیا ۔بیان کے مطابق سکمز لیبارٹری میں کل 483نمونوں کی تشخیص کی گئی جن میں 45مریضوں کی رپورٹ مثبت آئی جبکہ 438افراد کی رپورٹ منفی قرار دی گئی ۔

سی ڈی اسپتال

 سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں اتوار کو ایک اور مشتبہ مریض کا داخلہ ہوا ۔میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد سلیم ٹاک نے بتایا ’’ سی ڈی اسپتال میں داخل مریضوں میں سے اتوار کو کوئی بھی رپورٹ مثبت نہیں آئی تاہم رعناواری اور ضلع اسپتال پلوامہ کی طرف سے بھیجے گئے نمونوں میں سے 4کی رپورٹ مثبت آئی ‘‘۔ان کا مزید کہنا تھاکہ اسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں داخل  20کورونا وائرس مریضوں میں سے 8کی رپورٹ منفی آئی ہے جن میں سے 2کو کشمیر نرسنگ ہوم سونہ وار منتقل کیا گیا جبکہ باقی 6منفی قرار دئے گئے کورونا وائرس مریضوںکے خون کی دوبارہ تشخیص ہوگی ۔ اسپتال میں قائم لیبارٹری میں اتوار کوخون کے نمونوں کی تشخیص کا عمل جاری رہا اور یہاں 96نمونوں میں سے 92 کی رپورٹیں منفی قرار دی گئیں۔ گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر کے ترجمان ڈاکٹر محمد سلیم خان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’کل96نمونوں کی تشخیص ہوئی جن میں 4مثبت جبکہ 92نمونے منفی قرار دئے گئے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ ابھی بھی لیبارٹری میں مزید 86نمونے زیر تشخیص ہیں ‘‘۔  سرینگر کے رعناواری اسپتال میں کورونا وائرس کی نوڈل آفیسر ڈاکٹر بلقیس نے بتایا ’’  سنیچر کو ہم نے زکورہ قرنطینہ مرکز سے 30لوگوں کے نمونے حاصل کئے تھے جن میں 28منفی آئے جبکہ 2کی رپورٹ مثبت آئی ‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ دونوں کا تعلق سرینگر سے ہے اور وہ کورونا وائرس مریضوں کے رابطے میں آنے کی وجہ سے وائرس کا شکار بنے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ زکورہ قرنطینہ مرکز سے اتوار کو مزید 30مشتبہ مریضوں کے خون کے نمونے تشخیص کیلئے بھیجے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا ’’ رعناواری اسپتال میں داخل 9کورونا وائرس مریضوں میں تین کمسن بچیوں کے نمونوں کو دوبارہ تشخیص کیلئے بھیج دیا گیا ہے اور اُمید ہے کہ کل انکی رپورٹ منفی آئے گی‘‘۔     

صحت بلیٹن

حکومت نے کہا ہے کہ جموںوکشمیر میں آج نوول کورونا وائر س کے 14نئے معاملات سامنے آئے ہیں ۔ ان سبھی کا تعلق کشمیر صوبے سے ہیں۔اس طرح جموں وکشمیر میں مثبت معاملات کی کل تعداد 106تک پہنچ گئی ہے۔ حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلٹین میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے 106 مثبت معاملات میں سے 100 سرگرم معاملات ہیں ،04 مریض صحتیاب ہوئے ہیں اور 02کی موت واقع ہوئی ہے۔اب تک 33,503 ایسے اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفری پس منظر ہے یا جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں ۔ ان میں سے 10,981 اَفراد کو ہوم کورنٹین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے کورنٹین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ619 اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔100کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 16,237 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق5,566اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن میں مزید بتایا گیا ہے کہ اب تک 1,551نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں جن میں سے 1,429 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے اور 16کی روپورٹیں 05؍اپریل 2020 ء تک آنا باقی ہے ۔