پورے بھارت میں بیروزگاری کا سامنا:حنا بٹ

مرکزی اسکیموں سے استفادہ کرنے کا مشورہ

تاریخ    18 جولائی 2019 (03 : 11 PM)   


بلال فرقانی
سرینگر//مرکزی اسکیموں سے مستفید ہونے کا مشورہ دیتے ہوئے کھادی اینڈ ولیج کمیشن کی نائب چیئرپرسن ڈاکٹر حنا بٹ نے واضح کیا کہ وادی میں ہی نہیں بلکہ بھارت بھر میں نوجوانوں کو بے روزگاری کا سامنا ہے۔ سرینگر کے ایس کے آئی سی سی میں کھادی اینڈ ولیج انڈسٹری کمیشن کی طرف سے وزیر اعظم روزگار جنریشن پروگرام سے متعلق ریاستی سطح کے ورکشاپ کا پروگرام منعقد کیا گیا،جس کا مقصد کھاڈی اینڈ ولیج انڈسٹری کمیشن کی اسکیموں بالخصوص وزیر اعظم روزگار جنریشن پروگرام سے متعلق عوام میں بیداری پیدا کرنا تھا۔ نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کھادی اینڈ ولیج انڈسٹری کمیشن کی وائس چیئرپرسن ڈاکٹر حنا بٹ نے لیڈرشپ کو مورود الزام ٹھہراتے ہوئے کہا کہ ان کی غلط پالیسیوں کے نتیجے میں رقومات زائد المعیاد(لیپس)ہوتے تھے۔انہوں نے کہا’’ رعایت کی رقم کو32کروڑ سے بڑا کر153کروڑ تک پہنچایا گیا،جبکہ ماضی میں لیڈرشپ کی غلط پالسیوں کے نتیجے میں یہ رقومات لیپس ہوتے تھے۔‘‘ ڈاکٹر بٹ نے کہا کہ اب ہدف سے دوگناہ یا تین گناہ زیادہ رقومات موصول ہو رہے ہیںاور انکا تصرف بھی عمل میں لایا جاتا ہے۔انہوں نے نوجوانوں کو مرکزی اسکیموں سے استفادہ حاصل کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر ہی واحد جگہ نہیں ہے جہاں روزگار کی کمی ہے،بلکہ بے روزگاری پورے بھارت میں ہے۔ انہوں نے  وزیر اعظم روزگار جنریشن پروگرام کو نوجوانوں کیلئے ایک اہم اسکیم قرار دیتے ہوئے کہا کہ بیداری مہم سے نوجوان خود روزگاری سے اپنا روزگار حاصل کر سکتے ہیں۔ پروگرام کے دوران کے وی آئی سی کے ریاستی ڈائریکٹر ڈی ایس بھاٹیا نے وزیر اعظم روزگار جنریشن پروگرام کو مشترکہ طور پر کامیاب بنانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ مستحقین سروس شعبے میں25لاکھ اورپیداواری شعبے میں ایک کروڑ روپے تک کا قرضہ حاصل کرنے کے اہل ہیں۔ اس تقریب میں جموں کشمیر بنک کے وائس پریذیڈنٹ فیاض احمد بٹ،کھاڈی اینڈ ولیج انڈسٹری بورڈ کے سیکریٹری و چیف ایگزیکٹو افسر راشد احمد قادری،اسسٹنٹ ڈائریکٹر و وزیر اعظم روزگار جنریشن پروگرام کے نوڈل افسر برائے جموں کشمیر انیل کمار شرما سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے۔
 

تازہ ترین