میں توسیعی لیکچر کا اہتمام YCET

تاریخ    18 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   


جموں //آب و ہوا کے بحران اور توانائی بچانے کے مقصد سے YCETنے ایک ریسرچر، مصنف، سوشل اینٹر پرینور اور آئی آئی ٹی بمبئی کے ایک نامور بھارتی سائنسدان ڈاکٹر چیتن سنگھ سولانکی کے ذریعہ سے ایک لیکچر کا اہتمام کیا ۔اس سلسلہ میں پروفیسر سولانکی نے کہا کہ وقت آیا ہے کہ وقت آیا ہے کہ مہاتما گاندھی کی نامور فلاسفی ’’گرام سوراج‘‘ کے طرز پر ’’ اینرجی سوراج‘‘ لایا جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ گاندھی گلوبل سولر یاترا کا مقصد اینرجی کے بچائوکیلئے خو د کفیل توانائی ، مقامی توانائی ، سستی ، پائیدار  اور ماحولیات کے تحفظ کیلئے قابل برداشت سولر اینرجی کی رسائی کو فروغ دینا ہے۔انہوں نے کہا کہ ماحول کو بچانے کے ساتھ ساتھ روز گار پیدا کرنے اور مقامی لوگوں کو بااختیار بنانے کی ضرورت ہے۔انہوں نے YCET کے فیکلٹی ممبروں کو سولر اسٹڈی لیمپ کو جوڑنے کی دستی تربیت بھی فراہم کی۔انہوں نے کہا کہ توانائی کے سلسلہ میں توانائی کے متضاد منظر ہیں،جہاں پر ایک طرف تو کروڑوں لوگوں کو توانائی فراہم کرنی ہے وہیں دوسری جانب توانائی کے استعمال سے آب و ہوا میں بدلائو آیا ہے ،جس کو فوری طور سے حل کرنے کی ضرورت ہے۔اگر اس پر فوری طور سے قابو نہیں پایا گیا ،تو انسانی جنایں ڈئینا سور س کی طرح اگلے100سال میںغائب ہو جائے گی۔پروفیسر سولانکی نے اپنی تقریر اس گُذارش سے ختم کردی کہ ’’بھارت میں رواعتی ایندھن جیسے کہ تیل ،گیس اور نیوکلئیر کافی نہیں ہے۔ضرورت اس بات کی ہے کہ متبادل بجلی کا حل بروئے کا ر لایا جا ئے ،جو کہ ماحول دوستانہ اور سستا ہے۔انہوں نے کہا کہ بہت سے لوگ اس حقیقت سے واقف ہیںکہ شمسی توانائی ،گرڈ توانائی کے مقابلہ میںسستی ہے ۔انہوں نے لوگوں سے کہا کہ ہم شمسی توانائی کا استعمال کرکے اپنی رقم بچائیں  اور مستقبل میں شمسی توانائی کی جانب رخ کریں۔نشست دو گھنٹوں تک جاری رہی ۔YCETکے ڈائریکٹر  انجینئر بی آر ورما نے پروفیسر سولانکی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے شکریہ کا ووٹ پیش کیا ۔