تازہ ترین

لائوسہ قلم آ باد حکام کی نظروں سے اوجھل

مقامی لوگو ں میں ناراضگی ،بنیادی سہولیات کی مانگ

تاریخ    16 جولائی 2019 (40 : 10 PM)   


اشرف چراغ
کپوارہ//ہندوارہ کے مضافاتی گائوں چک لائوسہ قلم آباد گزشتہ7دہائیوں سے سرکاری نظرو ں سے اوجھل ہے۔ آج تک اس گائوں کو ترقیاتی منظر نامہ پر نہیں لایا گیا جس کی وجہ سے مقامی لوگو ں میں زبردست ناراضگی پائی جارہی ہے ۔لائوسہ نامی یہ گائوںصدر مقام قلم آباد سے محض چند کلو میٹر کی دوری پر ہے مگر بنیادی سہولیات سے محروم ہے ۔اس بستی کو قدرت نے اس قدر خوبصورتی عطا کی کہ اگر ایک بار اس گائوں کی کوئی سیر کرتا تو اس کا دل یہا ں سے واپس جانے کو نہیں کرتا ۔قدرتی حسن سے مالا مال چک لائوسہ نالہ ماور کے کنارے پر آباد ہے تاہم اس بستی میں داخل ہونے کے لئے نالہ ماور پر آج تک بھی کوئی پل تعمیر نہیں کیا اور سڑک کی تعمیر دور کی بات ہے ۔لائوسہ پہنچنے کے لئے نالہ ماور پر لوگو ں نے خود ایک عارضی پل تو بنایا لیکن وہ ہر وقت لوگو ں کی زندگی کے لئے خطرہ ہے ۔لوگو ں کا مزید کہنا ہے کہ جب نالہ ماور کے پانی کے بہاو میں تیزی آتی ہے تو لوگ اس نالہ کو عبور کرنے میں خطرہ محسوس کرتے ہیں لیکن مجبوری کے عالم میں انہیں یہ سب کچھ کرنا پڑتا ہے۔ایک مقامی سماجی کارکن خادم محمد الطاف نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ نالہ ماور پر پل کی تعمیر نہ ہونے کی وجہ سے لوگو ں کو عبور و مرور میں سخت دشواریو ں کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور جب گائو ں میں کوئی شادی کی تقریب ہوتی ہے تو لوگ عارضی پل کی مرمت کر کے عبور و مرور کو آ سان بنادیتے ہیں لیکن کسی بھی حکومت نے آج تک بھی لائوسہ کی طرف کوئی توجہ نہیں دی اور نہ ہی کسی نمائندے نے لوگو ں کا دکھ درد جاننے کے لئے اس علاقہ کو دورہ کیا ۔مقامی لوگو ں نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ چک لائوسہ ایک خاص مقام یہ بھی ہے کہ یہا ں سے بنگس وادی بہت ہی نزدیک ہے لیکن پھر بھی یہ علاقہ ترقیاتی منظر نامہ میں بالکل ہی نظر انداز کیا گیا ۔انہو ں نے کہا کہ طبی سہولیات کے سلسلے میں بھی علاقہ کی آبادی کو سخت دشواریو ں کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور یہا ں پر ایک ڈسپنسری قائم کرنے کی اشد ضرورت ہے۔
 

تازہ ترین