تازہ ترین

ثانوی سطح پر اُردو زبان کی تدریس

میری آوازسنو

تاریخ    16 مئی 2019 (00 : 01 AM)   


پرویز یوسفؔ
اس  حقیقت سے مفر نہیں کہ ابتدائی اور ثانوی تعلیمی اداروں میں ہی طلبہ و طالبات کی اعلیٰ تعلیم کا اصل ڈھانچہ تیار ہوتا ہے۔ان کی شخصیت ، سیرت اور مزاج کی تعمیرکا کام یہی سے شروع ہو تا ہے ۔ بچے کے اعضائے بدن اور حواس خمسہ پہلی مرتبہ شعوری طور پر اسی سطح پر حرکت میں آتے ہیں ۔اسی مرحلے میںان کا ذہن عملی طور پر متحرک ہو جاتا ہے اور ذہنی وسعت شروع ہونے لگتی ہے اور ان کے مستقبل کاتاروپود شروع ہوتا ہے ۔ثانوی سطح پر زبان اُردو اگراس غرض سے پڑھائی جائے تاکہ طالب علم کا ذہن پختہ کار ہو جائے، تواس کے لئے صرف نظم ونثرکی تفہیم کافی نہیں بلکہ زبان و بیان کی خوبیوں کے ساتھ ساتھ عبارات واشعار کے محاسن کا بھی انہیں احساس دلانا ضروری ہوتا ہے ۔اگر اردو پڑھنے والے طالب علم میں زندگی گزارنے کے اصل مقصد کی معرفت پیدا کر نا مطلوب ہو تو وہ اسی مرحلے میں کیا جا سکتا ہے اورمذہبی معاملات ہوں یا سیاسیات،اقتصادی مسائل ہوں یا کہ معاشرتی اقدار، ان کو سمجھنے اور بر تنے کا یہی مرحلہ ہوتا ہے۔اسی سطح پر طلبہ کو مختلف اصناف سے روشناس کرانا ہوتاہے۔اگر پڑھانے والے اساتذہ صحیح طریقے پر ثانوی سطح کے طالب علم کو پڑھائیں تو یہ طلبہ وطالبات آئندہ اُرود کے حوالے سے کارہا ے نمایاں انجام دے سکتے ہیں۔ یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ ثانوی سطح تک زبان صحیح طرح سیکھنے والا طالب علم اپنی آنے والی زندگی میں جو کوئی بھی پیشہ اختیار کرے ،یہ زبان زندگی بھر اس کا اوڑھنا،بچھونا بن کر رہے گی ۔ وہ بے شمار لوگ جو طب ،ریاضی ، حیاتیات وغیرہ پڑھتے ہیں مگر بنیادی اور ثانوی سطحوں پر اُرود شناس ہونے کے سبب وہ شاعر اور ادیب بھی بنتے ہیں ۔وجہ یہی ہے کہ ثانوی سطح پہنچنے تک انہوں نے اُردو کو اچھی طرح سے سمجھا ہوتا ہے۔ سنجیدہ فکرطلبائے علم کی ایک بڑی تعداد ایسی ہے جن کو صرف ثانوی سطح تک یاکبھی اس سے بھی کم سطح تک اُردو صحیح ڈھنگ سے پڑھائی گئی ،تو وہ آگے علم و آگہی کے دریا بہاتے گئے کہ جب قلم اُٹھایا تو لعل و جواہر زیب قرطاس کرگئے اور زبان سے کچھ بیان کیا تو شرینی اورخوشبوئیںبکھیردیں ۔ ثانوی سطح تک اگر طالب علم کو اردو زبان کے حوالے سے صحیح ڈگر مل گئی تو وہ بڑا قلم کار ، مفکراورادیب و شاعر بن سکتا ہے۔ تاریخ گواہ ہے کہ اُردو زبان کے بڑے مشہور و معروف افسانہ نگار،ناول نگار ،مضمون نگار ،شاعر و ادیب ایسے ہیں جنھوں نے صرف ثانو ی سطح تک اُردو زبا ن پڑھی مگرآ ج ان کے نام ادبی دُنیا کے آسمان میں چمکتے ہوئے ستاروں کے مانندہیں۔ان کے ذہن و قلب میں موجزن بلند خیالیاں عالم انسانیت کی رہنمائی میں اپنی مثال آپ ہیں۔ 
 
رابطہ:   کنٹریکچوَل لیکچرار گورئنمنٹ ماڈل ہائیر سیکنڈری اسکول چندوسہ بارہ مولہ۔
فون نمبر:9469447331