تازہ ترین

مڈل سکول منجوس کھڑی میں تعینات ماسٹر4برسوںسے ڈیوٹی سے غیرحاضر

طلباء اورلوگوں کاکھڑی مہو سڑک پردھرنا،دوگھنٹوں تک آمدورفت ٹھپ رہی

تاریخ    14 مئی 2019 (00 : 01 AM)   


محمد تسکین

بچوں کے مستقبل کیساتھ کھلواڑکرنے والے استادکیخلاف ٹھوس کارروائی کامطالبہ 

بانہال // سرکاری مڈل منجوس تعلیمی زون کھڑی ضلع رام بن کے ایک ماسٹر جوعرصہ دراز سے سکول سے غیر حاضر ہے کے معاملے کولیکر پیر کے روزسکول کے طلبا و طالبات اورمعززین نے تحصیل ہیڈکوارٹر کھڑی میں ناچلانہ - مہو سڑک پر دھرنا دیااور محکمہ تعلیم کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرکے انصاف فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔ مظاہرین نے الزام عائد کیاکہ120 بچے مڈل سکول منجوس میں زیر تعلیم ہیں اور یہاں ہیڈماسٹر سمیت تین اساتذہ تعینات ہیں جبکہ دو اسامیاں خالی ہیں۔ احتجاجی دھرنے پر بیٹھے بچوں اور مقامی لوگوں نے الزام لگایا کہ مڈل سکول منجوس میں تعینات ایک ماسٹر چار سال سے مسلسل غیر حاضر ہے اور سالوں سے یہ غیر حاضر ماسٹر لائف انشورنس کا ایجنٹ ہے اور سکول کے بجائے وہ اپنے کاروبار کو بانہال سے چلارہا ہے  - انہوں نے الزام لگایا کہ زونل ایجوکیشن دفتر کھڑی کے ملازمین اور افسرکے ساتھ اس انشورنس ایجنٹ نما ماسٹر سے ملی بھگت ہے جس کی وجہ سے چار سالوں سے اپنی ڈیوٹی سے غائب ہونے کے باوجود اسکے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ زونل ایجوکیشن دفتر کھڑی سے باضابط اور بلاناغہ اس غیر حاضر ماسٹر کی تنخواہ واگذار کی جاتی ہے اور اس کے عوض مبینہ طور پر محکمہ کے ملازمین اس ماسٹر سے ماہانہ کی بنیاد پر رشوت لیتے ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ ایسے اساتذہ کی لاپرواہی اور خود غرضی کی وجہ سے ہزاروں غریب بچوں کا مستقبل تباہ ہوا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ انشورنس ایجنٹ کی حیثیت سے کام کرنے والے اس ماسٹر کے ماضی کا ریکارڈ بھی بہت خراب ہے اور جس سکول میں بھی یہ تعینات کیا گیا ہے وہاں پر بچوں کو تعلیم کے بجائے یہ استاد لوگوں کو انشورنس کے نفع و نقصان سے آگاہ کرنا اپنا فرض اولین سمجھتا رہاہے اور یہ سلسلہ ہنوزجاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی اس ٹیچر سے ڈیوٹی سے غیرحاضررہنے کے بارے میں بات کی جاتی ہے تو وہ کبھی کہتا ہے کہ وہ الیکشن ڈیوٹی پر لگایا گیا ہے اور کبھی کہتا ہے کہ وہ دفتری کام سے باہر معمور کیا گیا ہے جبکہ حقیقت میں ایسا کچھ بھی نہیں ہے اور وہ بہانے بنا کر پچھلے چار سالوں سے مڈل سکول منجوس کے بچوں کے مستقبل سے کھلواڑ کررہا ہے۔  انہوں نے کہا کہ اگر اس معاملے کی طرف محکمہ تعلیم کی طرف سے فوری غور نہ کیا گیا اور سرکاری مڈل منجوس سے تنخواہ واگذار کرنے والے اس مسلسل غیر حاضر ماسٹر کے خلاف سخت کاروائی نہ کی گئی تو سکولی بچے اپنے والدین کو لیکر جموں سرینگر شاہراہ پر دھرنا دینے پر مجبور ہوں گے اور کسی بھی امن و امان کی صورتحال کیلئے محکمہ تعلیم کھڑی کے عہدیدار ذمہ دار ہونگے۔ کھڑی سڑک پر زونل ایجوکیشن دفتر کھڑی کے سامنے دھرنے پر بیٹھے بچوں اور دیگر معززین علاقہ کو تحصیلدار کھڑی نے یقین دلایا کہ اس معاملے کی تحقیقات کی جائے گی اور ملوث غیر حاضر ماسٹر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ اس یقین دھانی کے بعد بچوں اور مقامی لوگوں نے اپنا احتجاجی مظاہرہ ختم کرکے کم از کم دو گھنٹوں بعد کھڑی مہو سڑک پر ٹریفک کو چلنے کی اجازت دی۔