GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
وادی میں سوائن فلو الرٹ
روک تھام کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت

سرینگر// سوائن فلو سے ہونے والی موت کے پیش نظر انتظامیہ نے وادی کشمیر میں ہائی الرٹ جاری کیا ہے۔ماہر طب ڈاکٹر جی ایم قادری نے کہا ہے کہ وادی کشمیر کے کچھ علاقوں میںاس ’وائرس‘کے اسباب واضح طور پر موجود ہیں لہٰذا اس کی روک تھام کیلئے مناسب احتیاطی تدابیر اٹھانے کی ضرورت ہے۔ تاہم ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر اگر کسی شخص کو بہت زیادہ بخار کے ساتھ ساتھ گلے میںشدید درد اور زکام کی شکایت ہو تو وہ فوری طور پر ڈاکٹروں سے رابطہ قائم کریں کیونکہ صورہ ہسپتال میں اس کا بہتر علاج موجود ہے۔ واضح رہے کہ چند روز قبل صورہ ہسپتال کا ہی ایک ملازم سوائن فلو کی وجہ سے لقمہ اجل بن چکاہے ۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ شمالی ہندوستان کی 3ریاستوں پنجاب، ہریانہ اور دلی میں بڑے پیمانے پر سوائن فلو پھوٹ پڑا ہے جس کے اب تک 94افراد کی جان لے لی ہے۔ سوائن فلوکو لیکر عام لوگوں میںپائی جانی والی تشویش کے بیچ انتظامیہ نے جمعہ کو ہائی الرٹ جاری کیا ہے۔ اس سلسلے میں ماہرین طب نے بتایا کہ سوائن فلو یعنی (این1ایچ1 وائرس )وادی کے کچھ علاقوں میں ابھی بھی موجود ہے۔ 2008 اور 2009 میں وادی میں 53’’ایچ1این 1وائرس‘‘کیس سامنے آئے  جس کے نتیجے میں تین اموات بھی ہوئیں۔بخار، گلے میں خراش،زُکام اور کھانسی اس بیماری کے عام علامات ہیں۔ماہرین طب کا کہنا ہے کہ سوائن فلو کا علاج ممکن ہے اور اس بیماری کے شکار لوگوں کا علاج ومعالجہ کیا جاتا ہے لیکن احتیاطی تدابیر ہمیشہ بہتر ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایسے مریضوں کو ویکسین فراہم کی جاتی ہے جبکہ پہلے ہی ماہرین ایک ٹیم تشکیل دی گئی تاکہ وادی میں اس بیماری پر قابو پایا جاسکا۔ جن لوگوں میں یہ بیماری پائی جاتی ہے ان کے قریبی رشتہ داروں کو اس وائرس سے بچنے کیلئے ادویات فراہم کی جاتی ہے۔ صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ کے سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر اعجاز مصطفیٰ نے کہا کہ اہل وادی کو گھبرانے کی کوئی ضرورت نہیں کیو نکہ اسپتال میں اس وائرس سے نمٹنے کیلئے بہترین سہولیات میسر ہیں۔ ان کا کہناتھا کہ اسپتا ل میں جدید سہولیات سے لیس لیبارٹری ہے جہاں مریضوں کی جانچ کی جاتی ہے جبکہ ایسے مریضوں کیلئے ’’ویکسین‘‘ بھی دستیاب ہیں۔انہوں نے کہا کہ لوگ مختلف بیماریوں کے حوالے سے اسپتالوں کا رخ کرتے ہیں جن میں سے کئی ایک کیس ایسے بھی پائے جاتے ہیں۔واضح رہے کہ گذشتہ ہفتے صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ کے ایک ملازم کی موت (این1ایچ1 وائرس ) سے ہوئی تھی جبکہ ڈاکٹروں کا کہناتھا کہ گذشتہ5ماہ کے دوران اس وائرس کے شکار 4مریضوں کا کامیابی کے ساتھ علاج ومعالجہ کیا گیا۔ادھردارالحکومت دہلی،راجستھان ، پنجاب ، ہریانہ اور کشمیر میں اس وائرس سے ہونے والی اموات کے بعد مرکزی وزارت صحت نے 10نکاتی احتیاطی تدابیر جاری کیں ہیں جس کے تحت عام لوگوں کو اس بیماری سے بچنے کیلئے جانکاری فراہم کی جارہی ہے۔اس سلسلے میں مرکزی وزارت صحت نے عام لوگوں کو اس وائرس سے بچنے کیلئے احتیاطی تدابیر اپنا نے پر زور دیا ہے۔مرکزی وزارت صحت کی جانب سے جاری کئے گئے10نکاتی احتیاطی تدابیر کے مطابق بیت الخلاء کے استعمال کے بعد لوگ صابن یا راکھ سے ہاتھ دھویا کریں،آنکھ ،ناک اور منہ کو بار بار چھونے سے گریز کریں اور متواتر بنیادوں پر ہاتھوں کو دھویا کریں،جو لوگ کسی بیماری میں مبتلاء ہیں،وہ بھیڑ بھاڑ جگہوں خاص طور بسوںاور بازاروں میں جانے سے گریز کریں ،کھانسی اور زُکام کی حالت میںمنہ اور ناک کو رُومال یا ’’ماسک‘‘ سے ڈھک کر رکھیں،اپنے آس پڑوس کی سطوحوں کو روزانہ بنیادوں پر صاف کیا کریں،مدافعتی نظام کو بہتر بنانے کیلئے کم سے کم 8گھنٹوں کی بھر پور نیند کریں جبکہ اس کے علاوہ روزانہ ورزش کیا کریںاور اس کے ساتھ وزرات صحت نے لوگوں سے اس بیماری سے بچنے کیلئے بخار،زُکام ،کھانسی اور گلے میں خراش کی صورت میں فوری طور پر ڈاکٹر کے پاس جا کر اپنی تشخیص کرائیں۔اس دوران اس بات کا خلاصہ ہوا ہے کہ بھارت میں سال رواں کے پہلے مہینے میں ’’سوائن فلو ‘‘کے واقعات میں اب تک94 سے زیادہ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت نے اپنی تازہ رپورٹ میں کہا ہے کہ گزشتہ سال بھارت میں سوائن فلو سے 405ہلاکتیں ہوئی تھیں اور اس سال یکم جنوری سے27 جنوری تک بھارت میں 456 سوائن فلو کے کیس سامنے آئے اور 91 افراد ہلاک ہوئے۔(مشمولات کے ایم این)

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By