GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
نئے گیس کنکشنوں کیلئے 4364 روپے کی قیمت مقرر
21 فروری سے ہوم ڈیلوری،172 نئی گیس ایجنسیاں قائم ہونگی : رمضان

جموں//وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کی ہدایات پر وزیر برائے امور صارفین و عوامی تقسیم کاری و ٹرانسپورٹ چودھری محمد رمضان نے جموں اور سرینگر شہروں کی میونسپل حدود کے اندر رسوئی گیس کی ہوم ڈیلوری کیلئے 21 فروری 2013 کی ڈیڈ لائین مقرر کی ہے ۔ وزیر موصوف نے یہ ہدایات یہاں سی اے اینڈ پی ڈی کے سینئر افسروں اور تیل کمپنیوں کے نمائندوں کی ایک میٹنگ میں دیں ۔ وزیر موصوف نے کہا کہ ان دونوں شہروں میں ایل پی جی کی موقعہ پر ڈیلوری 20 فروری 2013 تک دستیاب ہو گی اور صارفین سی اے اینڈ پی ڈی کے دونوں ڈائریکٹوریٹس کی جانب سے پہلے ہی میڈیا کے ذریعے تشہیر دئیے گئے گیس ایجنسیوں کے رابطہ نمبرات پر ہوم ڈیلوری کی بکنگ کرا سکتے ہیں۔ سیکرٹری سی اے پی ڈی و ٹرانسپورٹ محمد عباس ، ڈائریکٹر سی اے پی ڈی کشمیر مشتاق احمد ، ڈائریکٹر سی اے پی ڈی جموں  پرویز ملک ، سٹیٹ لیول کوارڈینیٹر ، آئی او سی اور آر کے شہاب ، سینئر ریجنل منیجر ایچ پی سی ایل  اشونی کمار گپتا اور اسسٹنت منیجر بی پی سی ایل انکور مشرا بھی میٹنگ میں موجود تھے ۔چودھری نے کہا کہ ریاست کے دیگر قصبوں میں ایل پی جی ہوم ڈیلوری 15 مئی 2013 سے اور دیہی علاقوں میں جولائی 2013 کے اختتام سے شروع ہو گی ۔ ریاست کی ہر گیس ایجنسی کیلئے نئے سبسڈی والے گیس کنکشن جاری کرنے کے سلسلے میں وزیر موصوف نے صارفین سے کہا کہ وہ تمام لوازمات پورے کرنے کے بعد اس سے فایدہ اٹھائیں انہوں نے کہا کہ تیل کمپنیوں کی طرف سے نئے گیس کنکشنوں کے ریٹ 4364 بشمول دو بھرے ہوئے گیس سلینڈر سبسڈی ریٹ پر دیگر ایسسریز ما سوائے چولہا کے دستیاب ہوں گے ۔ تیل کمپنیوں نے ایک سلینڈر ( بغیر گیس ) کیلئے بطور سیکورٹی 1450 روپے ، ریگولیٹر کیلئے 150 روپے ، سلینڈروں کی ری فلنگ14.2 کلو گرام کیلئے432 روپے سبسڈی ریٹ پر سرینگر میں اور جموں میں 420 روپے مقرر کئے ہیں ۔ اسی طرح سے ریڈ بُک چارجز 35 روپے، انسٹالیشن چارجز 35 روپے ، پایپ کی قیمت ( سرکھشا ہاوس ) 180 روپے اور مارکیٹ سے باہر خریدے گئے چولہے کے انسپیکشن چارجز200 روپے مقرر کئے گئے ہیں ۔ صارفین کیلئے صرف آئی ایس آئی مارک چولہے خریدنے کو لازمی قرار دیا گیا ہے ۔ ایل پی جی گیس ڈیلروں کے خلاف صارفین کی طرف سے موصول ہو رہی شکایات کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر موصوف نے سی اے پی ڈی کے دونوں ڈائریکٹوریٹس کو ہدایات دیں کہ وہ ہیرا پھیری میں ملوث پائے جانے والے ڈیلروں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائیں ۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایات دیں کہ وہ قصور وار ڈیلروں کے لائیسنس منسوخ کریں ۔ اس کے علاوہ انہوں نے تیل کمپنیوں سے بھی کہا کہ وہ قصور وار ایل پی جی ڈیلروں کے خلاف ضابطے کے تحت لازمی کاروائی کرے ۔ چودھری نے ریاست کے تمام ایل پی جی ڈیلروں سے کہا کہ وہ روز مرہ کی بنیادوں پر گیس سپلائی کو بنائے رکھیں اور اپنے کاروباری اداروں میں سٹاک اور ریٹ سے متعلق فہرستیں آویزاں رکھیں ۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ صارفین کو اُن کے گھروں کی دہلیزوں پر رسوئی گیس دستیاب رکھنے کیلئے تیل کمپنیوں کی جانب سے ریاست بھر میں 172 نئی ڈیلر شپس جاری کی جا رہی ہیں۔ ان میں سے 55 ریگولر ڈیلر شپ کے تحت اور 117 راجیو گاندھی گرامین ایل پی جی وٹرل سکیم کے تحت جاری کی جائیں گی ۔ چودھری نے کہا کہ آر جی جی ایل وی کے تحت ریاست کے تمام بلاکوں کو ایل پی جی ڈیلر شپ حاصل ہو گی ۔ انہوں نے تیل کمپنیوں سے کہا کہ وہ20 فروری 2013 تک اس کی تشہیر کریں ۔ انہوں نے کہا کہ بلاک سطح پر نئی ڈیلر شپس کے قیام سے دیہی علاقوں کے صارفین کو اُن کے گھروں کی دہلیزوں پر رسوئی گیس دستیاب ہو گی اور بلیک مارکیٹنگ ختم ہو جائے گی ۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ جموں و کشمیر میں کے وائی سی کے تحت 15.70 لاکھ کنکشن ریگولر کئے گئے ہیں اور صرف 41 ہزار کے وائی سی التوا میں پڑے ہیں اور ان کے جلد نمٹارے کیلئے ہدایات دی گئی ہیں ۔ ریاست میں ایل پی جی سٹاک کی دستیابی سے متعلق وزیر موصوف کو بتایا گیا کہ ریاست کے سبھی حصوں میں خاطر خواہ ذخیرہ موجود ہے ۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By