GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
کیا اسی مذاکرات کاری کی بات ہورہی تھی: انجینئر کا سوال


سرینگر// نعیم احمد خان کی گرفتاری کو حیران کن قرار دیتے ہوئے ممبر اسمبلی لنگیٹ انجینئر رشید نے کہا ہے کہ ریاستی سرکار خود اپنا مذاق بنانے پر تُلی ہوئی ہے۔ انہوں نے تاہم کہا کہ اب جبکہ ریاستی سرکار نے برسوں پُرانے معاملات کو کھنگال کر گرفتاریاں شروع کر ہی دی ہیں تو پھر انہیں پروین توگڑیا جیسے فرقہ پرست شخص کی گرفتاری بھی عمل میں لانی چاہئے۔بیان میں انجینئر رشید نے نعیم احمد خان کی گرفتاری کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے حیرت کے ساتھ کہا کہ ایک طرف علیحدگی پسندوں کو مذاکرات پر آمادہ کرنے کی نام نہاد کوششیں کی جا رہی ہیں اور دوسری جانب گھڑے مردے اکھاڑ کر مصالحت پسندی اور مذاکرات کاری کے راستے مسدود کر دئے جاتے ہیں۔عمر عبداللہ کو مخاطب کرتے ہوئے انجینئر رشید نے اُن سے پوچھا ’’کیا یہی وہ مذاکرات کاری ہے کہ جسکی طرف آپ اپنے حالیہ بیانات میں اشارہ کر چکے ہیں‘‘۔ انجینئر رشید نے کہا کہ حکومتِ ہند اور اسکے ریاستی حامیوں کو وادیٔ کشمیر میں آنے والی کسی معمولی تبدیلی کو دیکھتے ہوئے مغرور نہیں ہوجانا چاہئے بلکہ مصلحت سے کام لیتے ہوئے مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے ٹھوس کوششیں جاری رہنی چاہئیں کیونکہ جب تک مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوجاتا کشمیر کی صورتحال میں کتنے ہی بدلاؤ کیوں نہ آئیں مذاکرات کاری اور صلح جوئی کی اہمیت باقی رہے گی۔انہوں نے کہا کہ اب جبکہ امن عمل کے تئیں انتہائی غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا ہی ہے تو پھر ہندو انتہاپسند پروین توگڑیا کو بھی گرفتار کر لیا جانا چاہئے کہ جنکے خلاف راجوری میں ایک عرصہ سے ایک انتہائی حساس معاملے میں ایف آئی آر درج ہے۔انجینئر رشید نے کہا کہ ریاستی سرکار کتنی ہی مغرور کیوں نہ ہو اور اپنے آپ کو کسی کے سامنے جوابدہ نہ سمجھتی ہو لیکن ریاستی عوام پروین توگڑیا کے خلاف درج ایف آئی آر پر کسی قسم کی کارروائی نہ کئے جانے کی وجہ جاننے کا حق رکھتے ہیں۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By