GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
پلوامہ میں حالات بدستور کشیدہ
انتونی نے رپورٹ طلب کی

نئی دلی// وزیر دفاع اے کے انتونی نے پلوامہ قصبہ میں 28دسمبر کو فوج کی جانب سے کی گئی فائرنگ واقعہ جس میں سات شہری زخمی ہوئے کی مکمل رپورٹ طلب کر لی ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر دفاع یہ جاننا چاہتے ہیں کہ اس روز واقعی ہوا کیا ہے ۔ وزیر دفاع نے فوج کے اعلیٰ حکام سے کہا ہے کہ وہ پلوامہ واقعہ کے بارے میں انہیں تفصیلی رپورٹ روانہ کرے کہ وہاں فوج کو مبینہ طور پر کیوں فائرنگ کرنا پڑی جس کے نتیجے میں سات شہری زخمی ہوئے اورتب سے علاقے میں حالات کشیدہ ہیں جس کے نتیجے میں ضلع انتظامیہ کو کرفیو کا نفاز کرنا پڑا۔وزیر دفاع نے یہ رپورٹ پولیس کی جانب سے اس اقدام کے بعد طلب کر لی ہے جس میں پولیس نے آر آر کی ایک یونٹ کیخلاف فائرنگ کرنے کی پاداش میں کیس درج کیا ہے۔فوج پر یہ الزام لگایا جا رہا ہے کہ چندگام میں جھڑپ کے دوران دو فوجی افسروں سمیت چار اہلکارو ں کو جب وہ اسپتال لے جارہے تھے تو انہوں نے پلوامہ چوک میں راستہ صاف کرنے کیلئے لوگوں پر اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں سات شہری زخمی ہوئے ۔تاہم فوج اور پولیس نے ان الزامات کی سختی سے تردید کی کہ انہوں نے لوگوں پر براہ راست فائرنگ کی ۔ پولیس اور فوج نے اس روز ایک بیان جاری کیا تھا جس میں بتایا گیا تھا کہ جب زخمیوں کو اسپتال لے جایا جا رہا تھاتو لوگوں نے پلوامہ چوک میں شاہراہ بند کی تھی جس کو کھولنے کی کوشش کی گئی تاہم اس موقعہ پر فائرنگ نہیں کی گئی ۔ حتیٰ کہ فوج نے کہا تھا کہ وہ اس موقعے پر وہاں موجود بھی نہیں تھی ۔ البتہ پولیس کا کہنا تھا کہ جب ایک میجر سمیت دیگر زخمی اہلکاروں کو ایک ایمبولنس میں پلوامہ پہنچایا گیا تو مشتعل ہجوم نے راستہ روک کر شدید پتھرائو کیا جس کے جواب میں گولی چلانا پڑی جس میں سات افراد زخمی ہوئے ۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By