GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  اداریہ
پیر پنچال و خطہ چناب میں برف باری کی مار
زبانی جمع خرچ نہیں، عملی اقدمات ناگزیر

جموں خطہ کے پہاڑوں علاقوں میں حالیہ بر فباری نے گزشتہ چندروز سے پوری زندگی مفلوج کر دی ہے خصوصی طور پر خطہ پیر پنچال کا ضلع پونچھ ، ضلع راجوری کا بیشتر حصہ بری طرح متاثر ہے ۔فی الحال سڑک رابطے منقطع ہو چکے ہیں ، مواصلاتی نظام ٹھپ ہے ، بجلی اور پانی کا ترسیلی ڈھانچہ چر مرا گیا ہے جبکہ نہ صرف دور دراز دیہات بلکہ قصبہ جات میں بھی لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا ہے ۔ اس کے علاوہ خطہ چناب اور ضلع اودہم پور و ریاسی کے دوردراز علاقوں کی آبادیاں بھی شدید مشکلات میں ہیں ۔ اگر چہ ان علاقوں کی مقامی انتظامیہ برفباری سے تباہ شدہ ڈھانچہ کو بحال کرنے کی کوششیں کر رہی ہے تاہم سرکاری دعوئوں سے قطع نظر نقصان کاپیمانہ اس قدر زیادہ ہے کہ اس کی مکمل بحالی میں کچھ وقت لگ سکتا ہے ۔ اگرچہ قدرتی آفات پر کسی کو اختیار نہیں اور اس کے لئے حکومت اور انتظامیہ کو کسی طور قصور وار نہیں گردانا جا سکتا تاہم ایک بات ضرور کہی جا سکتی ہے کہ اس مرتبہ بھی انتظامیہ کو موسمی آفت نے غفلت میں پکڑ لیا ۔ البتہ اس بار محکمہ ٹریفک اور انتظامیہ نے ایک قابل ِ ستائش قدم یہ اٹھایا کہ ڈیزاسٹر منیجمنٹ محکمہ کی طرف سے 17اور18جنوری کو بھاری برفباری کی پیش گوئی کے پیش نظر محکمہ ٹریفک نے جموں سرینگر شاہراہ پر پہلے ان دو دنوں کے دوران گاڑیوں کی آمد و رفت بند رکھنے کا اعلان کر دیا جس کی وجہ سے لوگوں کی قلیل تعداد ہی درماندہ ہو ئی ۔ تاہم جموں پونچھ شاہراہ پر بھمبر کی گلی اور دیگر مقامات پر سینکڑوں مسافر اور مال بردار گاڑیاں بھری برفباری میں پھنس گئیں اور متعدد درماندہ افراد کو پولیس اور فوج نے اس افتاد سے نجات دلائی ۔ چونکہ ریاست کے بیشتر حصہ میںموسم سرما کے دوران برفباری کوئی نئی بات نہیں ہے اور فرق محض اتنا ہے کہ اس کی مقدار کسی سال زیادہ یا کم ہو سکتی ہے لیکن سالہا سال کے تجربات سے شائد حکومت اور اس کے مختلف محکموں نے کوئی سبق نہیں سیکھا ہے ۔ نتیجہ یہ کہ ہر سال لاکھوں لوگ اس موسم کی تمام شدتوں کو اپنے طور پر جھیلنے کے لئے مجبور ہو جاتے ہیں کیونکہ اس کے علاوہ ان کے پاس کوئی چارہ کار بھی نہیں ہے جبکہ مقامی انتظامیہ اور متعلقہ محکموں کی نیند اس وقت ٹوٹ جاتی ہے جب برف ریاست کو اپنی لپیٹ میں لے لیتی ہے۔ حکومت نے حالانکہ اس قسم کے ہنگامی حا لات کے لئے ہی ڈیزاسٹر منیجمنٹ کا شعبہ قائم کر رکھا ہے لیکن ابھی تک اس کی کار کردگی کا وہ معیار قا ئم نہیںہو سکا ہے جس کا اعلان کیاگیا تھا یا جس کی توقع کی جا رہی تھی ۔ اس وقت جموں خطہ کے پہاڑی علاقوں خصوصی طور پر خطہ پیر پنچال ، خطہ چناب اور دیگر اضلاع کے بالائی علاقوں میں رہنے والے لوگ جن مصائب کا سامنا کر رہے ہیں ، اس کا مداوا ذرائع ابلاغ میں دعوے اور اعلانات سے نہیں ہو سکتا بلکہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ہنگامی طور پرسڑک ، مواصلاتی رابطوں ،بجلی و پانی کی ترسیلی لائینوں کو بحال کیاجائے لیکن بدقسمتی سے ابھی تک ریاست میں مختلف محکموں کے پاس تو اس قسم کی جدید مشینری اور میکانزم موجود نہیںہے جس کو بروئے کار لاکر ایسا ممکن ہو پائے ۔ اس لئے غالب امکان یہی ہے کہ قصباتی علاقوںاور ضلع صدر مقامات کی طرف جانے والی سڑکیں اور پانی و بجلی کی ترسیلی لائنیں تو ہنگامی بنیاد پر بحال کر لیا جائے تاہم دیہی اور دور راز علاقہ جات کے لوگوں کو ہفتوں نہیں بلکہ مہینوں کا انتظا کر نا پڑ سکتا ہے ۔گزشتہ چھ سات دہائیوں کے دوران آس پاس کی دنیا کہاں سے کہاں پہنچ چکی ہے لیکن ہم ابھی تک اپنے شہریوں کو راحت پہنچانے کے لئے روایتی اور فرسودہ طریقوں پر انحصار کر رہے ہیں ۔ جموں و کشمیر کو ہمسایہ ریاست ہماچل پردیش اوراترانچل سے سبق سیکھنا چا ہئے جہاں کے جغرافیائی اور موسمی حالات جموں و کشمیر سے مختلف نہیں ہیں لیکن وہاں کی حکومتوں نے سریع الحرکت میکانزم قائم کر رکھا ہے جو ہر طرح کی جدید مشینری اور انتظام سے لیس ہے اور اس طرح کے حالات سے نبرد آزما ہو نے کے لئے محض زبانی جمع خرچ نہیں بلکہ حقیقی عمل میںیقین رکھتی ہیں۔ امید کی جانی چاہئے کہ ریاستی انتظامیہ کم ازکم اب کی بارنیند سے بیدار ہوجائے گی اور عملی میدان میں کود کرسخت ترین موسمی حالات میں ریاستی عوام کی راحت رسانی کی کوئی ایسی ترکیب ڈھونڈ نکالیں گے جس پر عمل پیدا ہوکر سردیوں میں برف باری کے دوران لوگوں کو کم سے کم مشکلات سے دوچار ہونا پڑے گا۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By