GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
انتظامیہ بغلیں جھانکنے میں محو،بجلی بحران گہرا،بالائی علاقوں کی سڑکیں ہنوز منقطع
23اور24جنوری کو مزید برفباری کا امکان،شاہراہ پر جام، سینکڑوں گاڑیاں درماندہ

سرینگر//وادی بھر میں حالیہ برفباری کے بعد پیدا شدہ صورتحال سے نمٹنے میں انتظامیہ ابھی تک ناکام نظر آرہی ہے۔ دو روز تک برفباری کے باعث جہاں وادی میں بجلی کانظام یکسر مفلوج ہوکر رہ گیا ہے وہیں دور دراز علاقوں میں سڑک رابطے ابھی تک بحال نہیں کئے جاسکے ہیں۔ اس دوران سرینگر جموں شاہراہ پر گاڑیوں کی نقل وحرکت شدید پھسلن کے باعث رک گئی ہے اور پتنی ٹاپ ،رام بن اور بانہال کے علاوہ قاضی گنڈ علاقوں میں شاہراہ ہزاروں گاڑیاں درماندہ ہوکر رہ گئی ہیں۔ محکمہ موسمیات نے 23اور24جنوری کو وادی بھر میں ہلکی سے درمیانہ درجے کی برفباری اور بارشوں کی پیش گوئی کی ہے۔ کشمیرعظمیٰ کو وادی کے مختلف علاقوں سے موصولہ اطلاعات کے مطابق حالیہ برفباری کے بعد سرینگر سمیت وادی بھر کا بجلی نظام یکسر متاثر ہوکر رہ گیا ہے۔ اگرچہ سرینگر اور قصبہ جات میں بجلی کی سپلائی کسی حد تک بحال کی گئی ہے تاہم شہرو قصبہ جات کے مضافاتی علاقوں میں بجلی کی سپلائی بری طرح متاثر ہے۔ ادھر بجلی نظام بگڑنے کے باعث پیدا شدہ پریشانی کے ساتھ ساتھ سڑکوں کی خستہ حالی اور کئی بالائی علاقوں میں سڑک رابطے یکسر منقطع ہوگئے ہیں اور انتظامیہ ابھی تک ان علاقوں تک رسائی میں ناکام ہورہی ہے ۔سرحدی ضلع کپوارہ سے نمائندے اشرف چراغ نے اطلاع دی ہے کہ حالیہ برفباری کے نتیجے میں کپواڑہ کے دور دراز دیہات جن میں کرناہ، کیرن، مژھل، جمہ گنڈ، بڈ نمبل شامل ہیں ضلع ہیڈ کواٹر سے کٹ کے رہ گئے نمائندے کے مطابق کپواڑہ ضلع میں دور دراز دیہاتوں میں زندگی بُری طرح مفلوج ہے۔ 17 اور18 جنوری کی برف باری کے ساتھ ضلع انتظامیہ نے اگرچہ اہم علاقوں کی رابطہ سڑکوں سے برف اٹھا لی اور بجلی سپلائی فراہم کی تاہم بالائی علاقوں میں انتظامیہ بے بسی کا مظاہرہ کررہی ہے ۔ جسکی وجہ سے عوام کو گونا گوں مشکلات کا سامنہ کرنا پڑتا ہے۔ بھاری برف باری کے بعد محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے ضلع اور تحصیل صدر مقامات کو ملانے والی اہم سڑکوں سے برف ہٹایا گیا تاہم درجنوں بالائی علاقوں جن میں کاچہامہ، ہفرڈہ، تُمنہ، ہچمرگ، رنگواڑ، موری، لچھم پورہ شامل ہیں کی اندرونی سڑکوں سے ابھی تک برف نہیں ہٹائی گئی جسکی وجہ سے لوگوں کا گھروں سے باہر آنا نا ممکن ہو کر رہ گیا۔ ان علاقوں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ بیماروں کو اس وجہ سے اسپتالوں تک نہیں پہنچایا جا سکتا کیونکہ ان علاقوں کی رابطہ سڑکیں برف سے ڈھکی ہوئی ہیں تاہم معلوم ہوا ہے کہ اب تک ضلع میں 80 فیصدی سڑکوں سے برف ہٹائی گئی جبکہ بجلی سپلائی فراہم کی گئی۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ شدید برف باری کے بعد پینے کے پانی کی بھی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے کیونکہ پانی کی پائپیں مکمل طور بند ہو چکی ہیں جبکہ بجلی کی عدم دستیابی کے باعث کئی لفٹ واٹر سپلائی سکیمیں بھی بے کار ہو کر رہ گئی ہیں اور شدید برف باری کے بیچ لوگوں کو دور دراز جگہوں سے پینے کا پانی حاصل کرنے پر مجبور ہونا پڑتا ہے اس دوران کرناہ، کیرن، مژھل، بڈنمبل اور جمہ گنڈ کی سڑکیں بند رہنے سے ان علاقوں میں بازاروں سے اشیائے خوردنی کی چیزیں نایاب ہیں جسکی وجہ سے ناجائز منافع خور سر گرم عمل ہیں اور وہ لوگوں کو دو دو ہاتھوں سے لوٹ لیتے ہیں لوگوں کا کہنا ہے کہ ذخیرہ اندوز منہ مانگی قیمت وصول کرتے ہیں جس پر عوامی حلقوں نے شدید غم و غصّہ کا اظہار کیا۔ ڈپٹی کمشنر کپواڑہ سرمد حفیظ نے اس حوالے سے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ آج شام تک ضلع کی تمام سڑکوں سے برف ہٹانے کا کام مکمل کیا جائے گا جبکہ بجلی سپلائی بھی چالو کی جارہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ دور دراز علاقوں جن میں خاص طور کرناہ شامل ہے کی سڑکوں سے برف ہٹانے کا کام شروع کیا گیا انھوں نے کہا کہ برف باری سے جن علاقوں کے لوگوں کو مشکلات ہیں تو وہ ان کے دفتر سے رابطہ قائم کریں۔دریں اثناء وادی کے دیگر اضلاع جن میں بارہمولہ ،بانڈی پورہ ،گاندربل،پلوامہ ،بڈگام،اننت ناگ،کولگام اور شوپیان میں بھی بجلی کا بحران شدید ہوگیا ہے ۔مختلف اضلاع سے نمائندوں نے اطلاع د ی ہے کہ میدانی علاقوں میں اگرچہ برف ہٹانے کا عمل جلد ہی مکمل کیا گیا تاہم بیشتر مضافاتی علاقوں میں برف ہٹانے اور سڑک رابطے بحال کرنے میں کوئی بھی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔دریں اثناء سرینگر جموں شاہراہ پر ٹریفک کی نقل وحرکت اگرچہ بحال ہے تاہم زبردست جام کے باعث گاڑیاں پتنی ٹاپ اور دیگر مقامات پر پھنس کر رہ گئی ہیں ۔درماندہ مسافروں نے کشمیر عظمیٰ کو فون پر بتایا کہ انتظامیہ نے جموں میں رش کم کرنے کیلئے شاہراہ پر جموں سے سرینگر ٹریفک چلنے کا اعلان کرکے انہیں پریشان کیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ شاہراہ پر درماندہ مسافروں کو صبح 4بجے سے بے یار مدد گار چھوڑا گیا ہے ۔اس دوران ٹریفک حکام نے سوموار کو موسم ٹھیک رہنے کی صورت میں سرینگر سے جموں ٹریفک کی اجازت دی ہے تاہم مسافروں سے کہا گیا ہے کہ وہ صبح کو ٹریفک کنٹرول روم سے رابطہ کریں تاکہ شاہراہ کی اصل صورتحال سے انہیں آگاہی ملے ۔دریں اثناء محکمہ موسمیات نے 23اور24جنوری کو وادی بھر میں مزید برف باری کی پیش گوئی کی ہے ۔موسمیات محکمہ کے ترجمان نے بتایا اگلے چوبیس گھنٹوں تک موسم خشک رہنے کے بعد23اور24جنوری کو ہلکی سے درمیانہ درجے کی برفباری ہوسکتی ہے ۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By