GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
وادی برف برف۔۔۔۔شاہراہ بند،میدانی و بالائی علاقوں پر سفید چادر کی دبیز تہہ


سرینگر//پیرپنچال کے آرپار برف باری اوربارشوں کا سلسلہ جاری ہے جبکہ شہر سرینگر اور وادی کے دیگر علاقو ں میں جمعرات بعد دوپہر برف باری شروع ہوئی۔تازہ برف باری اور بارشوں کے بعد سرینگر ،جمو ںشاہراہ کو ٹریفک کی آواجاہی کیلئے بند کردیا گیاجبکہ صوبائی انتظامیہ کی آفات سماوی سے متعلق سیل نے اُوپری علاقوں کے لوگوں کو نقل و حمل میں احتیاظ برتنے کا مشورہ دیا۔ادھر موسمیاتی ماہرین نے دوران شب بھاری برف باری کا پھر ایک مرتبہ امکان ظاہر کیا۔شہر سرینگر سمیت پیر پنچال کے آر پار جمعرات کی صبح سے سال نو کی تازہ بھاری برفباری ہوئی جبکہ میدانی علاقوں میں بارشوں کے ساتھ ساتھ ہلکی برفباری اور بالائی علاقوں میں بھاری برفباری کا سلسلہ جاری ہے۔جمعرات کو بعددوپہرشہر سرینگر میں سال نو اور موسم کی تازہ برفباری ہوئی ۔محکمہ موسمیات کے مطابق شہر سرینگر میں 6ملی میٹر برف ریکارڈ کی گئی جبکہ کم از کم درجہ حرارت 0.8ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔واضح رہے کہ گذشتہ رات شہر سرینگر میں کم از کم درجہ حرارت 0.1تھا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق سیاحتی مقام پہلگام میں رات کے درجہ حرارت میں نمایاں تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے جس کے تحت پہلگا م میں رات کا کم از کم درجہ حرارت 1.4ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا جو کہ گذشتہ رات کے مقابلے میں4ڈگری سیلسیس زیادہ ہے۔اسی طرح معروف سیاحتی مقام گلمرگ میں 5.6ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا جوکہ گذشتہ روز کے مقابلے میں 1.1ڈگری سیلسیس ریادہ ہے۔پہلگا م میں تازہ برفباری کے حوالے سے ملی تفصیلات کے مطابق یہاں جمعرات کو آخری اطلاعات ملنے تک 5.4ملی میٹر برفباری ریکارڈ کی جبکہ گلمرگ میں 4.8ملی میٹر برفباری ریکارڈ کی گئی ۔اس دوران پہلگام اور گلمرگ کی سیر پر آنے والے ملکی وغیر ملکی سیاح قدرت کے نظاروں سے لطف اندوز ہوئے ۔جنوبی کشمیر کے قاضی گنڈ علاقے میں آخری اطلاعات ملنے تک 6.2ملی میٹر برفباری ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ یہاں کا درجہ حرارت 1.8ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق ککرناگ میںرات کے درجہ حرارت میں بھی غیر معمولی تبدیلی دیکھنے کو ملی اور یہاں رات کا کم سے کم درجہ حرارت 0.3ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیاجبکہ یہاں گذشتہ رات کم سے کم درجہ حرارت منفی 1.7ریکارڈ کیا گیا۔محکمہ موسمیات کے ترجمان کے مطابق شمالی ضلع کپوارہ میں بھی رات کے درجہ حرارت میں نمایاں تبدیلی دیکھنے کو ملی ہے جس کے تحت یہاں کا رات کا کم سے کم درجہ حرارت 0.3ڈگر ی سیلسیس ریکارڈ کیا گیا جبکہ گذشتہ رات کا کم سے کم درجہ حرارت 0.9ڈگری سیلسیس تھا۔ جنوبی ضلع اننت ناگ کے کوکر ناگ علاقے میں آخری اطلاعات ملنے تک 1.8ملی میٹربرفباری ریکارڈ کی گئی جبکہ اسی طرح سرحدی ضلع کپوارہ میں آخری اطلاعات ملنے تک 12.1ملی میٹر برفباری ہوئی تھی۔ معلوم ہوا ہے کہ وادی کشمیرکے جنوب و شمال میں برفباری کا سلسلہ جاری تھا جبکہ وسط کشمیر میں بھی شام دیر گئے تک برفباری کا سلسلہ جاری تھا۔ اس دوران محکمہ موسمیات نے پیشن گوئی کی ہے کہ 18جنوری کو پیرپنچال کے آرپار درمیانہ سے لیکر بھاری برفباری کا امکان ہے ۔ محکمہ موسمیات نے مزید تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا ہے کہ برفباری کا سلسلہ 19جنوری تک جاری رہے گا۔ ادھر صوبائی انتظامیہ نے پیر پنچال میں ہوئی تازہ اور بھاری برفباری کے پیش نظر کشمیر کو دنیا سے جوڑنے والی واحد300کلومیٹر لمبی سرینگر ، جموں شاہراہ کو ٹریفک کی آواجاہی کے لئے بند کر دیا گیا۔ ادھر ٹریفک کنٹرول روم کے ترجمان نے بتایا ہے کہ جمعرات کو جموں سے سرینگر کی طرف آنے والی کچھ گاڑیوں کو آنے کی اجازت دی گئی جنہوںنے صبح 8بجے نگروٹہ جموں کو پاس کیا تھا۔ موسم میں تبدیلی اور برفباری سے جہاں لوگوں کو خشک موسم اور منفی درجہ حرارت سے کافی راحت ملی تاہم پوری وادی سردی کی شدید لپیٹ میں آئی ہے۔بدلتے موسم اور برفباری کے حوالے جنوبی کشمیر کے کولگام کے دنو کنڈی مرگ ،باڑی جالن ،سمر،بوہ اور دانوارڑ کے بالائی علاقوں میں1فٹ سے2فٹ برف ریکارڑ کی گئی جبکہ برفباری کا سلسلہ آخری اطلاعات ملنے تک جاری تھا۔اسی طرح کولگام کے میدانی علاقوں میں بھی بارشوں کے ساتھ ساتھ برفباری بھی ہورہی ہے۔نمائندے نے بتا یا کہ تازہ برباری کی وجہ سے بالائی ومیدانی علاقوں میں بجلی کا نظام درہم برہم ہو کر رہ گیا ہے۔سونہ مرگ کے بالائی علاقوں میں 1 فٹ سے زیادہ برفباری ریکارڑ کی گئی ۔زوجیلا کے مقام پر اڑھائی فٹ برفباری ریکارڑ ہوئی جبکہ برفباری کا سلسلہ جاری تھا۔اسی طرح منی مرگ اور گمری کے علاقوں میں ڈیڑھ فٹ برفباری ہوئی ہے جبکہ یہ سلسلہ ہنوز جاری ہے ۔سونہ مرگ کے میدانی علاقوں میں کلن ،گگنگیر،گنڈ ،غنی ون اور دیگر علاقوں میں بھی برفباری ہوئی جبکہ ان علاقوں میں بھی برفباری کا نہ تھمنے کا سلسلہ جاری ہے ۔ادھر ضلع گاندربل کے میدانی علاقوں میں بارشوں کے ساتھ ساتھ ہلکی برفباری ہوئی جوکہ شام دھیر تک وقفہ وقفہ سے جاری رہا۔سرحدی ضلع کپوارہ کے بالائی علاقوں میں ایک فٹ سے زیادہ برفباری ہوئی ،ان علاقوں میں کیرن سیکٹر ،سادنا ٹاپ،کرالہ پورہ ،دلگام،مژھل،بنگس ویلی اورفرکین ٹاپ شامل ہیں جہاںایک فٹ سے زیادہ برفبای ریکارڑ کی گئی۔۔اس سلسلے میں سرکاری ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وادی میں برفباری سے پیدا شدہ صورتحال پر کڑی نگاہ رکھی جاری ہے جبکہ برف ہٹانے کیلئے جدید مشینوںکو تمام اضلاع میں تیاری کی حالت میں رکھا گیا ہے تاکہ لوگوں مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ دریں اثناء صوبائی انتظامیہ کی آفات سماوی سے متعلق سیل نے اُوپری علاقوں کے لوگوں کو برفانی تودے اور پسیاں گرآنے کے اندیشے کے پیش نظر نقل و حمل میں احتیاظ برتنے کی تلقین کی ہے۔اس سلسلے میں خاص طور پر نوگام ،چوکی بل ،مژھل،ٹنگڈار ،کیرن اور گریز میں مقیم لوگوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ آئندہ24گھنٹوں کے دوران نقل وحمل میں احتیاط برتیں تاکہ کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہ آسکے۔ادھر محمد تسکین کے مطابق ٹنل کے آرپار برفباری کی وجہ سے پیدا ہوئی پھسلن کی وجہ سے جمعرات  سہ پہر تین بجے کے بعد جموں سرینگر شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بند کردی گئی ۔پھسلن کی وجہ سے شیطانی نالہ اور نوگام سیکٹر میں وادی کی طرف جارہی فوجی کانوائے کے علاوہ پچاس کے قریب چھوٹی مسافر بردار گاڑیاں درماندہ ہوکر رہ گئی ہیں تاہم شام کو درماند ہ پڑی مسافر بردار گاڑیوں کو ٹریفک پولیس نے واپس بانہال لایا۔ ڈی ایس پی ٹریفک بانہال بھوشن کمار گنجو نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ تین بجے تک جموں سے سرینگر کی طرف آنے والی تین سو کے قریب مسافر بردار اور دو سے زائید مال بردار گاڑیوں نے ٹنل پار کیا تھا لیکن اس کے بعد بانہال اور ٹنل کے دونوں طرف برفباری اور پھسلن کی وجہ سے وادی کی طرف آنے والی گاڑیوں کو ادہمپور۔ رام بن اور بانہال سے آگے جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By