تازہ ترین

ریاسی واقعہ پر مینڈھر میں احتجاجی مظاہرہ

مینڈھر//ریاسی واقعہ پرمینڈھرکی عوام نے مین چوک مینڈھر پر ٹر یفک کی آمد رفت بند کرکے زور دار احتجاج کیا۔مظاہرین نے ہا تھو ں میں سیاہ پرچم اٹھارکھے تھے ۔اس  احتجاج کی قیا دت سابق سرپنچ شوکت چوہد ری کر رہے تھے جنہوںنے کہا کہ ریاسی ضلع میں شرپسندعناصرکی طرف سے نہتے خانہ بدوشوں پر حملہ ناقابل برداشت ہے۔انہوں نے کہاکہ نہ صرف غنڈہ عناصرنے نہتے لو گو ں کومارپیٹ کانشانہ بنایابلکہ ان کے مال واسباب کوبھی لوٹ لیا،یہاں تک کہ خواتین کے ساتھ بھی بدتمیزی سے پیش آئے ۔ انہوں نے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ حکومت اقلیتی طبقے کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہوچکی ہے جس کاثبوت ریاسی کاحالیہ واقعہ ہے۔شوکت نے کہاکہ گرفتارکئے گئے کچھ ملزمان کوپولیس نے چھوڑدیاہے جو متاثرین کے ساتھ زیادتی ہے۔انہوںنے کہاکہ پولیس نے متاثرین کے خلاف بھی مقدمہ درج کیاہے جو کہاں کا انصاف ہے ۔انہو ں نے ملزمان کی گرفتاری اوران کے

پٹھانہ تیر کا مڈل سکول… 2ہی کمرے،وہ بھی شکستہ حال

مینڈھر//تعلیمی زون مینڈھر کا سرکاری مڈل سکول کنجیا لی پٹھا نہ تیر خستہ حالی کی منہ بولتی تصویر ہے ۔اس سکول میں زیر تعلیم بچے در در کی ٹھو کر یں کھا رہے اور ان کو نہ بیٹھنے کی جگہ ہے اور نہ ہی کوئی دوسری سہولت دستیاب ہے۔ سکول دو کمر و ں پر مشتمل ہے جن کی حالت بھی ناگفتہ بہ ہے ۔انہی کمرو ں میں مڈ ڈے میل  کے علا وہ کلا سیں بھی چلا ئی جا رہی ہیں ۔مقامی لو گو ں نے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ افسر ان پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ سکولو ں کی خستہ حالت ہے جبکہ سرکار بڑے بڑے دعوے کر رہی ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ اس مڈل سکول کی حالت دیکھ کر یہ نہیں لگتا ہے کہ یہ تعلیمی ادارہ ہے اور بغیر مکمل کئے عما رت کیسے محکمہ تعلیم کے افسر ان کے حو الے کی گئی ۔ انہو ں نے کہا کہ اگرسکولوںکی یہی حالت رہی تو بچے تعلیم کیسے حا صل کر یں گے ، نہ ہی سکول میں رسوئی ہے اور نہ بیت الخلا ہے اور انہی دو کمرو ں میں مڈ ڈے میل بھی پک

راجوری میں موٹرسائیکل ریلی برآمد

راجوری //لارڈ پرشو رام کی پیدائش کے موقعہ پر راجوری میں ہندو طبقہ کے نوجوانوں کی طرف سے موٹرسائیکل ریلی نکالی گئی جس میں بڑی تعداد میںنوجوان شامل ہوئے ۔یہ ریلی سناتن دھرم سبھا راجوری سے شروع ہوئی جو مین مارکیٹ سے ہوتے ہوئے ورکشاپ پل ، طارق پل ، سلانی پل ، جواہر نگر اور پھر واپس نئے بس اڈہ میں اختتام پذیر ہوئی ۔اس دوران مذہبی نعرے لگائے گئے ۔ریلی کے شرکاء نے اسبات پر زور دیاکہ نوجوان لارڈ پرشورام کی تعلیمات پر عمل کریں ۔

پی ایچ سی منجاکوٹ میں بنیادی سہولیات کافقدان

منجاکوٹ//منجاکوٹ پبلک ہیلتھ سنٹر میں بنیادی سہولیات کے فقدان پر مقامی لوگوں نے محکمہ صحت کو تنقید کا نشانہ بنایاہے ۔انہوںنے مطالبہ کیا کہ محکمہ قواعد وضوابط کو مد نظر رکھتے ہوئے عام لوگوں کو طبی سہولیات فراہم کرے ورنہ عوام محکمہ کے خلاف احتجاجی راستہ اختیار کرسکتے ہیں ۔ محمد الطاف ، صدام حسین اور جمیل احمد نے بتایا کہ منجاکوٹ پبلک ہیلتھ سنٹر میںعلاج کیلئے آنے والے لوگ جہاں ادویات پرائیویٹ دوکانوں سے لینے پر مجبور ہیں وہیں اسپتال کی عمارت میں پانی کانام ونشان تک نہیں جس کی وجہ سے مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔انہوںنے الزام لگایاکہ عملے کی طرف سے یہ تجویز دی جاتی ہے کہ دوائیاں فلانی دوکان سے خرید ی جائیں جو قوانین کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے پبلک ہیلتھ سنٹر منجاکوٹ میں بنیادی سہولیات کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے ۔  

فضل آباد ۔مرہوٹ سڑک تعطل کاشکار

سرنکوٹ //فضل آباد سے مرہوٹ 8کلو میٹر سڑک جس کاکام نو سال قبل یعنی 2008میں محکمہ پی ایم جی ایس وائی کے تحت ہواتھا ، دور دراز اور پہاڑی علاقوں میں سڑک روابط کی واضح مثال ہے ۔اس روڈ کا نو برسوں میں صرف زمین کی کٹائی کاکام ہوسکاہے اور مقامی لوگوں کا الزام ہے کہ محکمہ کی ملی بھگت سے پیسے نکال لئے گئے ہیں لیکن کام کچھ بھی نہیںہوا۔اب حالت یہ ہے کہ لوگوں کی زمین کھسکتی جارہی ہے اور بارشوں کے موسم میں پسیاں گرتی رہتی ہیں۔اس سلسلے میں بات کرتے ہوئے نذیر احمد ، محمد رشید ، غلام محمد ،محمد شفیع ، عبدالخالق اور محمد اشرف نے کہاکہ سڑک کے کام پر 2008میں پہلا ٹینڈر نکلا تاہم ٹھیکیدار نے زمین کی کٹائی کرنے کے بعد کام چھوڑ دیااور زمین مالکان کو خدا کے رحم و کرم پر چھوڑ دیاگیا ۔انہوںنے بتایاکہ پھر پہلے اور دوسرے مرحلے کیلئے دوبارہ سے ٹینڈر منظور ہوئے اور کام دوسرے کسی ٹھیکیدار کو دیاگیا جس نے وہی کام کی

حیات پورہ سڑک کی تعمیر کا مطالبہ

  منجاکوٹ //منجاکوٹ کے حیات پورہ اور گردونواح کے لوگوںنے مقامی سڑک کی تکمیل کرنے پر زور دیاہے ۔ لوگوں کاکہناہے کہ یہ روڈ بہت ہی خستہ بن چکی ہے تاہم اس جانب کوئی توجہ نہیں دی جارہی ۔ انہوںنے کہاکہ حکام سے کئی بارسڑک کی حالت بہتر کرنے کی اپیل کی گئی لیکن انہوںنے کوئی اقدام نہیں کیا۔انہوںنے بتایاکہ منجاکوٹ سے حیات پورہ ڈاک بنگلہ تک اس کی حالت انتہائی ابتر ہے اور تمام آٹھ کلو میٹر حصہ کھڈوںسے بھرا ہواہے ۔مقامی لوگوںنے کہاکہ اس روڈ کی تعمیر کو شروع ہوئے برسوں بیت گئے ہیں لیکن تکمیل کے بارے میں کچھ پتہ نہیں جس سے حکام کی غیر سنجیدگی کا اندازہ ہوتاہے ۔ انہوںنے کہاکہ خراب سڑک کی وجہ سے انہیں روزانہ مشکلات کاسامناکرناپڑتاہے ۔  

وٹرنکہ میںکشیدگی ، پولیس کالاٹھی چارج ،پتھرائو میں ایک زخمی

راجوری //کوٹرنکہ کے مندر گالہ علاقے میں اس وقت حالات کشیدہ ہوگئے جب راجوری بدھل سڑک کو بند کرکے احتجاج کرنے والے مظاہرین پرتشدد ہوگئے ۔اس دوران پتھرائو اور پولیس لاٹھی چارج کے نتیجہ میں ایک شخص زخمی ہواہے ۔ ذرائع نے بتایاکہ صبح ساڑھے آٹھ بجے پیڑی گائوںسے تعلق رکھنے والے لوگ مندر گالا کے مقام پر جمع ہوئے اور انہوںنے روڈ بند کرکے پولیس کے خلاف نعرے بازی شروع کردی ۔انہوںنے الزام لگایاکہ ایک بیس سالہ لڑکی کو پروڑی گائوں کا ایک لڑکا انتیس مارچ کو اغواکرلے گیا اوراس سلسلے میں پولیس تھانہ کنڈی میں ایف آئی آر زیر نمبر19/2017 US 366, 109, 379کاکیس درج کیاگیاجبکہ لڑکی کو اس ماہ کی انیس تاریخ کو جموں سے بازیاب کرایاگیا۔لڑکی کو والدین کے حوالے کرنے کی مانگ کرتے ہوئے انہوںنے الزام لگایاکہ اس معاملے میں پولیس کا رول منفی رہا اور اس نے تحقیقات میں جانبداری سے کام لیا ۔اس دوران انچارج پولیس چوکی پی

ریاسی واقعہ پر خطہ پیر پنچال میں شدید غم و غصہ کا اظہار

راجوری //ریاسی کے تلواڑہ علاقے میں بکروال کنبے کی مار پیٹ کرنے کے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے راجوری کے لوگوں نے شر پسندوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کی مانگ کی ہے ۔ لوگوں نے راجوری کے عبداللہ پل کے مقام پر احتجاج کیاجس دوران گاڑیوں کی آمدورفت بھی بند رہی ۔بڑی تعداد میں لوگ شام پانچ بجے عبداللہ پل پر جمع ہوئے اور انہوںنے گاڑیوں کی آمدورفت بند کرکے احتجاج کیا۔انہوںنے کہاکہ ریاسی واقعہ لاقانونیت کا ثبوت ہے اوراس سے یہ ثابت ہوتاہے کہ ریاست کس طرح کے حالات سے گزر رہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ پرامن ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے اور حکومت کو ایسے غنڈہ عناصر کے خلاف سخت کارروائی کرنی چاہئے ۔انہوںنے کہاکہ ا س طرح کے واقعات ناقابل برداشت ہیں اور اس سے پورے پیر پنچال خطے کا ماحول خراب ہوسکتاہے ۔ احتجاج کو دیکھتے ہوئے ایس ایچ او راجوری سدھانشو ورما اور انسپکٹر اجے چب موقعہ پر پہنچے اور انہوںنے مظ

’پی ایس اے نافذ کیاجائے ‘

مینڈھر// کا نگریس کی ریا ستی سیکریٹری پر وین سرور خان نے حکومت کو آڑ ے ہا تھو ں لیتے ہوئے کہا کہ گز شتہ دنو ں ریا سی میں بکروال کنبے پر ہوا حملہ تشویشناک ہے ۔ایک پریس بیان میں انہو ں نے کہا کہ ریا ستی حکو مت جان بو جھ کرغریب لو گو ں پر ظلم و ستم ڈھارہی ہے ۔انہوںنے کہاکہ غیر قانونی کام کر نے والے ان غنڈہ عنا صر کے خلاف سخت کار روائی کی جائے اور قبائلی طبقہ کو تحفظ فراہم کیاجائے ۔کانگریس لیڈرنے کہا کہ جمو ں میں وقت بر وقت گو جر بکروال طبقہ کو نشانہ بنا یا جا تا ہے جس سے کسی بھی وقت خطر ناک نتا ئج بر آمد ہو سکتے ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ لو گ اس بات کی کو شش کر رہے ہیں کہ کسی طر ح سے ریا ست کو مذہب کے نام پر تقسیم کیا جائے ، غر یب طبقہ پر حملہ کر نے والوں پر پی ایس اے نا فذ کیا جائے کیو نکہ اگر کشمیر میں نہتے کشمیریوں پر پتھر ما رنے کے عو ض یہ قانون نافذ ہوسکتاہے تو پھر ان غنڈہ عناصر پر کیو

نجی سکولوں کی من مانیاں

میندھر//مینڈھر میںچل رہے مختلف نجی تعلیمی اداروں کی طرف سے چھوٹی گاڑیاں جن میں ماروتی وین، ایکو اور آٹوشامل ہیں ، میں ایک ساتھ کئی درجن بچوں کو سوار کیا جاتا ہے ۔کئی والدین نے اس پر برہمی کا اظہار کیا کہ ایک طرف ان سکولوں کے منتظمین بچوں سے بس نام پربھاری فیس وصول کررہے ہیں اور دوسری طرف ان کو بھیڑ بکریوں کی طرح گاڑیوں میں بھراجاتاہے جس سے حادثات کا خطرہ بھی رہتاہے ۔ اگر چہ ان گاڑیوں میں سات بچوں تک کے بیٹھنے کی گنجائش ہوتی ہے لیکن ان میں ایک درجن سے زائد بچوں کو بھیڑ بکریوں کی طرح بھردیاجاتاہے جس سے بچوں کی زندگیوں سے کھلواڑ ہورہا ہے۔ حیرانی کی بات یہ ہے کہ ان سکولوں کے منتظمین بچوں سے بس فیس کے نام پر بھاری فیس وصول کررہے ہیں لیکن بدلے میں انہیں ایسی گاڑیوں میں سوار کیا جاتا ہے جن میں بچوں کو آنے جانے میں ذہنی و جسمانی تکالیف برداشت کرناپڑتی ہیں۔ان میں ایسی گاڑیاں بھی ہیں جو قواعد

پونچھ راولاکوٹ راہ ملن بس سروس جاری،105مسافر حدِ متارکہ کے آر پارہوئے

پونچھ//ہفتہ وار پونچھ راولاکوٹ بس سروس ہر ہفتہ کی طرح اس بار بھی حدِ متارکہ کے آر پار ہوئی۔اس دوران پونچھ سے راولاکوٹ کو روانہ ہوئی بس سے کل34 مسافر پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے راولاکوٹ کو روانہ ہوئے جن میں پونچھ سے3نئے مسافر پاکستانی زیر انتظام کشمیر میں رہنے والے اپنے رشتہ داروں سے ملاقات کو روانہ ہوئے اور 31مسافر پونچھ میں رہنے والے رشتہ داروں سے ملاقات کے بعد اپنے وطن پاکستانی زیر انتظام کشمیر کو لوٹ گئے۔راولاکوٹ سے پونچھ پہنچی بس سے کل 71مسافروں نے سفر کیا جو سبھی پاکستانی زیر انتظام کشمیر سے پونچھ میں رہنے والے اپنے رشتہ داروں سے ملاقات کے لئے یہاں پہنچے۔اس بار پونچھ کا کوئی بھی مسافر اپنے وطن واپس نہیں لوٹا۔اس طرح آج کل 105مسافروں نے حدِ متارکہ کے آرپار کا سفر کیا۔ کسٹوڈین چکاں دا باغ پونچھ نے بتایا کہ پونچھ راولاکوٹ راہ ملن بس سروس پر امن طریقہ سے جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ لو

راجوری۔بفلیاز سڑک کی کشادگی میں گریف غیر سنجیدہ

تھنہ منڈی //راجوری بفلیاز سڑک براستہ تھنہ منڈی کی کشادگی کے بجائے صرف تارکول بچھا کر عوام کو خوش کیا جا رہا ہے۔اس سڑک کی لمبائی 44 کلو میٹر  ہے اور تاریخی مغل شاہراہ کا اہم ترین حصہ ہے۔ سڑک کی کشادگی کے لئے کئی بار آواز اٹھائی گئی لیکن ٹال مٹول کے سوا کچھ حاصل نہ ہوا اورکئے گئے وعدے بھی ایفا نہ ہوئے ۔یہ سڑک بفلیاز کے مقام پر تاریخی مغل شاہراہ کے ساتھ ملتی ہے۔اسکے علاوہ تھنہ منڈی سے 6کلو میٹر کی دوری پر ایک معروف زیارت بھی موجود ہے جو حضرت با با غلام  شاہ بادشاہ رح شاہدرہ شریف کے نام سے منسوب ہے۔دو سال قبل راجوری سے پلانگڑھ تک 15 کلو میٹر پر بلیک ٹاپ کی گئی جبکہ پلانگرھ سے تھنہ منڈی 7 کلو میٹر سڑک پر تارکول نہ بچھائی گئی جس سے عیاں ہوتا ہے کہ محکمہ گریف اس سڑک کی تعمیر میں کتنا سنجیدہ ہے۔ عوام تھنہ منڈی نے متعدد بار یہ مطالبہ کیا ہے کہ اس سڑک کو کشا دہ کیا جائے تاکہ اس سڑک کی

ریاسی واقعہ پر شدید برہمی کا اظہار

مینڈھر//نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر و ممبراسمبلی مینڈھر جاوید احمد رانانے ریاسی کے تلواڑہ علاقے میں بکروال کنبے کی مار پیٹ کرنے کے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اس سے پہلے سے جموں کشمیر میں پائی جارہی فرقہ وارانہ خلیج کو اور بھی بڑ ھ جائے گی۔ایک پریس بیان میں رانانے حکام پر زور دیاکہ وہ غیر قانونی کام کرنے والے ان غنڈہ عناصر کے خلاف سخت کارروائی کریں اور قبائلی طبقہ کو تحفظ فراہم کیاجائے ۔این سی لیڈر نے کہاکہ جموںمیں وقت بروقت گوجر بکروال طبقہ کو نشانہ بنایاجاتارہاہے جس سے خطرناک نتائج برآمد ہوںگے ۔انہوںنے کہاکہ کچھ لوگ اس بات کی کوشش کررہے ہیں کہ کس طرح سے ریاست کو مذہب کے نام پر تقسیم کیاجائے ۔انہوںنے کہاکہ جموں کشمیر کثرت میں وحدت والی ریاست ہے جس میں اس طرح کے گھنائونے جرائم کی کوئی اجازت نہیںہونی چاہئے ۔ انہوںنے کہاکہ قبائلی طبقہ کو شاہراہ پر بھی تحفظ فراہم ہوناچاہئے۔راجوری //گوج

پلمہ میں دوکان پراسرار طور پر خاکستر

راجوری //راجوری کے پلمہ مارکیٹ میں ایک کریانہ دوکان پراسرا ر طور پر خاکستر ہوگئی جس کی وجہ سے لاکھوں روپے کی مالیت کا سامان بھی تباہ ہواہے ۔ذرائع کے مطابق گزشتہ شب دو بجے اچانک سے انیل کمار کی کریانہ دوکان سے آگ نمودار ہوئی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے پوری دوکان کو تباہ کردیا۔واقعہ کی اطلا ع ملتے ہی بڑی تعداد میں لوگ جمع ہوئے اور فائر سروس کاعملہ بھی پہنچاتاہم تب تک دوکان میں رکھاہوا لاکھوں روپے کا سامان خاک بن چکاتھا۔ابھی تک آگ لگنے کی وجہ معلوم نہیںہوسکی ہے ۔  

امام موسی کاظم ؑ کی شہادت پر مجالس او ر جلوس کااہتمام

پونچھ//حضرت امام موسی کاظم علیہ السلام کی شہادت کے حوالے سے پچیس رجب المرجب کی شب عترت سوسائٹی موہری گورسائی کے زیر انتظام جلوس تابوت بر آمد کیا گیا جس میں شامل نوجوانوں نے نوحہ و سینہ کوبی کر کے اپنی عقیدتوں کا اظہار کیا۔یہ جلوس بعد نماز مغربین سمیل والا گورسائی سے بر آمد کیا گیا جو مقامی راستوں سے گزرتے ہوئے مکتب امامیہ میں اختتام پذیر ہوا۔اس موقعہ پرمقررین نے امام موسیٰ کاظم ؑ کی زندگی کے مختلف گوشوئوں کو روشنی ڈالی۔دریں اثناء امام بار گاہ عالیہ پونچھ میں بھی مجلس عزا کا اہتمام کیا گیا جہاں حسب دستور تلاوت قرآن پاک کے بعد نعت و منقبت، سلام و نوحہ کا نذرانہ پیش کیا گیا ۔اس موقعہ پرخطاب کرتے ہوئے علماء و مقررین نے کہا کہ وہ کتاب جو کتاب ہدایت ہے ،اس میں اللہ ارشاد فرماتا ہے کہ اللہ کے قانون میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی جو اس قانون کو توڑنے کی کوشش کرے وہ خود ٹوٹ جائے گا۔ انہوں نے ک

شاہدرہ شریف میں دستار بندی کی تقریب منعقد

تھنہ منڈی //زیارت شاہدرہ شریف کی مسجد میں دستار بندی کی تقریب منعقد ہوئی جس میں ریاست کے نامور علماء نے شرکت کی۔اس دوران حافظ محمد یوسف، قاری محمد طارق اور قاری محمد شوکت کی دستار بندی کی گئی ۔دستار بندی کی تقریب میں مقامی علماء کے علاوہ مہمان خصوصی صدر صوت اولیاء صدر جموں و کشمیرمولانا عبدالرشید دائودی بھی موجود تھے۔مقامی علماء میں مولانا حافظ محمد سعید قابل ذکر ہیں۔اپنے خطاب میں مولانا دائودی نے نوجوانوںکو تلقین کی کہ وہ دین کی طرف راغب ہوجائیں۔انہوںنے کہایہ بچیاں پردہ دار بنیں اور بچے دیندار ہوں۔انہوںنے والدین پر زور دیاکہ وہ بچوںکو دینی تعلیم سے آراستہ کریں۔آخر پرایڈ منسٹریٹر اوقاف اسلامیہ شاہدرہ عبدالقیوم ڈار کاشکریہ ادا کیاگیااور ان کے کام کی ستائش بھی ہوئی ۔  

سرنکوٹ میں محکمہ پی ایچ ای کیخلاف احتجاج

سرنکوٹ//اقبال نگر سرنکوٹ میں پانی کی شدید قلت پر مقامی لوگوں نے روڈ بند کرکے احتجاجی مظاہرہ کیا ۔مظاہرین کے مطابق ان کے علاقے میں وضو کرنے کیلئے بھی پانی دستیاب نہیں اور وہ صبح جب محمدی جامع مسجد میں وضو کرنے گئے تو وہاں پانی نہیں ملا۔ احتجاج میں جامع مسجد سے منسلک مدرسہ کے طلباء بھی شریک تھے ۔ انہوںنے بتایاکہ ایک ہفتے سے پانی کی شدید قلت پائی جارہی ہے اور سب کچھ جانتے ہوئے بھی محکمہ کو ٹس سے مس نہیں ہورہاجس کی وجہ سے انہیں سڑک پر اترنا پڑاہے۔انہوںنے کہاکہ پانی نہ ہونے سے ان کی نمازیں اور پڑھائی متاثر ہورہی ہے ۔مقامی لوگوںنے بتایاکہ محکمہ غفلت کی نیند سور ہاہے اور وہ پانی کی بوند بوند کو ترساں ہیں۔  محمدی جامع مسجد کے امام مولانا سعید سلفی نے بتایا کہ انہوں نے کہ آفیسروں کو جمعہ کے دن بھی اعلان کرکے بھی پانی کی قلت کے بارے میں بتایااور پھر دوسرے روز فون پر بھی ان سے بات کی لیکن ا

مغل شاہرہ پر یکطرفہ ٹریفک آج سے

سرنکوٹ // مغل شاہراہ پر گاڑیوں کی یک طرفہ بحالی کے اعلان کے بعد ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ نے وہاں کا دورہ کر کے سڑک کا جائزہ لیا۔ اس دوران انہوں نے اطمینان کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ مسافروں کی حفاظت کے لیے فی الحال یک طرف گاڑیوں کو چلایا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ ابھی چونکہ سڑک کے کناروں پر بہت زیادہ برف ہے جس کی وجہ سے کچھ دنوں کیلے ایک طرفہ گاڑیوں کو چلانا پڑ رہا ہے انہوں نے کہا کہ خصوصی طور پر نیلانہ کے قریب برف بہت زیادہ ہے جس کی وجہ سے پسیاں آنے کا خدشہ بھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انھیں امید ہے کہ جلد ہی پگھل جائے گی جس کے بعد دونوں طرف سے گاڑیوں کو بحال کر دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کہ وہ سمجھتے ہیں کہ اس سڑک کی بحالی عوام کے لئے بڑی اہمیت رکھتی ہے۔ اس دورہ کے دوران موصوف کے ہمراہ ایس ڈی ایم سرنکوٹ ڈاکٹر بشارت حسین انقلابی، تحصیلدار سرنکوٹ، بلاک ڈیولمنٹ افسر سرنکوٹ اور ایکس ای این مغ

ریاسی واقعہ کی مذمت

پونچھ /کوٹرنکہ //گئو رکشک کے نام پر ریاسی میں بکروال کنبے کی مار پیٹ کے واقعہ کی مختلف تنظیموں نے سخت مذمت کی ہے ۔گوجر بکروال یوتھ ایسو سی ایشن پونچھ نے حملہ کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے غنڈہ گردی سے تعبیر کیا۔ایسو سی ایشن کے صدر اخلاق تبسم اورجنرل سیکریٹری بشارت عظیم نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوے کہا کہ کافی عرصہ سے گوجر بکروال طبقہ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، کبھی جنگل کی زمین کے قبضہ کو لیکر اور کبھی ناجائز مکانوں کی تعمیر کو لیکر اس طبقہ کو خلاف منظم سازش کے تحت نشانہ بنایا جا تا ہے۔انہوں نے کہا کہ اسی کڑی کے سلسلہ میں اس بار بے قصور خانہ بدوشوں کو نشانہ بنایا گیا جو کہ ہر سال گرمیوں میں وادی کی جانب نقل مکانی کرتے ہیں۔اخلاق تبسم اور بشارت عظیم نے کہا کہ افسوس اس بات کا ہے کہ اتنا ظلم ہو رہا ہے لیکن حکومت خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔انہوںنے کہا کہ اگر کوئی قانون کی خلاف ورزی

اساتذہ کی غیر حاضری کے خلاف طلباء اور والدین کا احتجاج

پونچھ//ہائی اسکول نونا بانڈی میں تعینات چار اساتذہ کے غیر حاضر رہنے پر اسکولی طلبہ و طالبات اور ان کے والدین کی جانب سے ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ اس دوران مظاہرین نے سڑک پر مختلف قسم کی رکاوٹیں کھڑی کر کے گاڑیوں کی آمدورفت باکل بند کر دی جس کی وجہ سے زیارت عالیہ سائیں میراں بخش ؒ پر  جانے والے ذائرین اور دیگر لوگوں کو کئی گھنٹے تک پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا۔اس دوران ان طلبہ کے والدین نے الزام لگایا کہ اسکول میں تعینات اساتذہ اکثر اسکول سے گائب رہتے ہیں جس کی وجہ سے ان کے بچوں کا تعلیمی نقصان ہو رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اسکول میں تعینات اساتذہ کا معمول بن گیا ہے کہ وہ  باری باری  اسکول سے غائب ہو جاتے ہیں جو کہ ان کے بچوں کے مستقبل کے لئے خطرناک ثابت ہو رہا ہے۔ مظاہرین نے سی ای او پونچھ چوہدری لعل حسین سے اپیل کی کہ وہ اسکول میں تعینات تمام اساتذہ کو ہدایت کریں ک